உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    لالو پرساد کو 30 اگست کو کرنی ہو گی خودسپردگی، ہائی کورٹ کا ضمانت کی مدت بڑھانے سے انکار

    لالو پرساد یادو ۔ فائل فوٹو

    لالو پرساد یادو ۔ فائل فوٹو

    سپریم کورٹ کے وکیل ابھیشیک منو سنگھوی نے لالو یادو کی جانب سے موقف رکھا اور طبی بنیاد پر چار مہینے ضمانت کی مدت کو بڑھانے کی درخواست کی جسے کورٹ نے ٹھکرا دیا۔

    • Share this:
      بہار کے سابق وزیر اعلی اور آر جے  ڈی سربراہ لالو پرساد یادو کوہائی کورٹ سے بڑا جھٹکا لگا ہے۔ ہائی کورٹ نے ان کی ضمانت عرضی کو خارج کر دیا۔ ساتھ ہی 30اگست کو سرینڈر کرنے کا حکم دیا ہے۔ جسٹس اپریش کمار سنگھ کی کورٹ میں عرضی پر سماعت ہوئی۔

      اس دوران سپریم کورٹ کے وکیل ابھیشیک منو سنگھوی نے لالو یادو کی جانب سے موقف رکھا اور طبی بنیاد پر چار مہینے ضمانت کی مدت کو بڑھانے کی درخواست کی جسے کورٹ نے ٹھکرا دیا۔

      اس سے پہلے ہائی کورٹ نے ان کی ضمانت کی مدت کو 6 ہفتے کیلئے بڑھا دیا تھا۔ یہ مدت 15 اگست کو ختم ہو گئی تھی۔ 6 ہفتے ضمانت ملنے کے بعد وہ 16 مئی کو رانچی سے پٹنہ گئے تھے۔
      First published: