ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

انلاک ون میں بھی مزدوروں اور مجبوروں کی خدمت کر خدا کی تلاش میں ہے یہ سماجی تنظیم

بھوپال کے ابراہیم پورا میں خدمت خلق کے نام سے ایک ایسی بھی کمیٹی کام کر رہی ہے جس کی خدمت کا سلسلہ ہنوز جاری ہے۔

  • Share this:
انلاک ون میں بھی مزدوروں اور مجبوروں کی خدمت کر خدا کی تلاش میں ہے یہ سماجی تنظیم
انلاک ون میں بھی مزدوروں اور مجبوروں کی خدمت کر خدا کی تلاش میں ہے یہ سماجی تنظیم

بھوپال۔ لاک ڈاؤن میں مزدور اور مجبور لوگوں کی خدمت کرنے کے لئے سبھی شہروں میں بڑی تعداد میں سماجی تنظیمیں نکل کر سامنے آئیں تھیں۔ ان سماجی تنظیموں نے نہ صرف شہر کے اندر بلکہ ہائی وے سے جانے والے تمام لوگوں کی بلا لحاظ قوم و ملت جس طرح سے خدمت کی ہے وہ ہندستان کی تاریخ میں سنہری لفظوں میں لکھی جائے گی ۔ پہلی جون سے جب ان لاک ون کا اعلان کیا گیا اور لاک ڈاؤن میں نرمی برتی گئی تو سبھی شہروں کی طرح راجدھانی بھوپال میں بھی سماجی تنظیموں نے اپنی خدمت کے دروازے بند کر دئے مگر بھوپال کے ابراہیم پورا میں خدمت خلق کے نام سے ایک ایسی بھی کمیٹی کام کر رہی ہے جس کی خدمت کا سلسلہ ہنوز جاری ہے۔


ابراہیم پورا خدمت خلق کمیٹی نے پچیس مارچ سے اپنی خدمت کا سلسلہ شروع کیا تھا۔ ابتداء میں کمیٹی کے اراکین نے کھانا بناکر جگہ جگہ پر تقسیم کرنے کے ساتھ لوگوں کو ٹینٹ لگا کر بھی کھانا کھلانے کا کام کیا اور جب ان لاک ون شروع ہوا اور دوسرے لوگوں نے خدمت سے اپنے ہاتھ کھینچ لئے تب بھی تنظیم کے لوگوں نے اپنی خدمت کے دروازے بند نہیں کئے بلکہ اسی انداز میں ان کی خدمت جاری ہے۔


ابراہیم پورا خدمت خلق کمیٹی نے پچیس مارچ سے اپنی خدمت کا سلسلہ شروع کیا تھا۔


ابراپیم پورا خدمت خلق کمیٹی کے اہم رکن نوید خان کہتے ہیں کہ ان لاک ون میں بھی مزدور اور مجبور لوگوں کی مشکلات کم نہیں ہوئی ہیں۔ بازار ضرور کھل گئے ہیں لیکن کورونا کے خوف سے لوگ کسی کو کام دینے میں ڈر رہے ہیں۔ ایسے میں سب سے زیادہ متاثر مزدور طبقہ ہوا ہے ۔مزدور طبقے کے لوگوں کے پاس جو کچھ بھی جمع پونچی تھی وہ انہوں نے لاک ڈاؤن میں ہی خرچ کردی ہے ۔ اب ان کی روٹی کے بھی لالے پڑگئے ہیں ۔ مزدور اور مجبور لوگوں کی مشکل سامنے ہو تو ہم لوگ کام کیسے بند کرسکتے ہیں ۔ ہمارا مقصد مزدور اور مجبور انسانوں کی مدد کرنا اور خدمت سے خدا کو تلاش کرنا ہے۔

کمیٹی کے رکن عارف علیا کہتے ہیں کہ ہمارے لئے تو یہ خوشی کی بات ہے کہ اللہ ہم سے خدمت کا کام لے رہا ہے ۔ورنہ ہماری کیا اوقات جو ہم کسی کو ایک وقت کی روٹی بھی کھلا سکیں ۔ پہلے محلے کے ساتھ باہر نکل کر بھی جہاں سے اطلاع آجاتی تھی کھانا پہنچانے کا کام کرتے تھے اور اب بھی روزانہ چار سے پانچ سو لوگوں کو کھانا مہیاکرانے کا کام کرتے ہیں ۔ لاک ڈاؤن میں کیسے کیسے لوگ سڑک پر آگئے ہیں آپ اس کا تصور بھی نہیں کر سکتے ہیں ۔مڈل کلاس اور لوور مڈل کلاس سب سے زیادہ متاثر ہوا ہے۔ اور اس میں کسی ایک قوم  کے لوگ نہیں بلکہ سبھی قوموں کے لوگ شامل ہیں اور خدمت ہم لوگ مذہب دیکھ کر نہیں انسان کی ضرورت دیکھ کر تے ہیں ۔ مزدور اور مجبور لوگوں کے گھروں میں کھانا پہنچاتے ہیں تاکہ سماج میں ان کا وقار بھی بنا رہے اور ہمارا کام بھی ہو جائے ۔کھانا سبھی سماج کے لوگوں کو دیا جاتا ہے اس لئے  ہم لوگوں نے کبھی نان ویج کا استعمال نہیں کیا۔

کمیٹی کے رکن  رفیق کہتے ہیں کہ تعاون کرنے والے ایسے بھی لوگ ہیں جنہیں نام ونمود سے کوئی تعلق نہیں بلکہ وہ چاہتے ہیں کہ ان کے لئے دعا کردی جائے ۔ ہم لوگ خدمت کررہے ہیں اور آپ سب سے بھی گزارش ہے کہ خدمت کرنے والے اور اس نیک کام میں تعاون کرنے والوں کے لئے دعا کریں۔
First published: Jun 20, 2020 08:59 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading