ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

سوتیلے باپ نے 35 سال کے شخص سے کرادی 15 سال کی بیٹی کی شادی ، اب لڑکی نے اٹھایا یہ بڑا قدم

نابالغ لڑکی کی شادی سوتیلے باپ نے کرائی تھی ۔ اس کی شادی دو سال پہلے 15 سال کی عمر میں گنا کے مسوآ گاوں میں ایک 35 سالہ شخص سے کرائی گئی تھی ۔ وہ شادی کے بعد صرف سات دن ہی اپنے سسرال میں رہی اور پھر مائیکے آگئی ۔

  • Share this:
سوتیلے باپ نے 35 سال کے شخص سے کرادی 15 سال کی بیٹی کی شادی ، اب لڑکی نے اٹھایا یہ بڑا قدم
نابالغ لڑکی کی شادی سوتیلے باپ نے کرائی تھی ۔ اس کی شادی دو سال پہلے 15 سال کی عمر میں گنا کے مسوآ گاوں میں ایک 35 سالہ شخص سے کرائی گئی تھی ۔ وہ شادی کے بعد صرف سات دن ہی اپنے سسرال میں رہی اور پھر مائیکے آگئی ۔

مدھیہ پردیش میں چائلڈ میرج کا ایک معاملہ سامنے آیا ہے ۔ نابالغ لڑکی نے چائلڈ لائن میں فریاد کی ہے ۔ لڑکی کا الزام ہے کہ اس کے کنبہ نے زبردستی اس کی شادی کرائی ہے ۔ اب وہ آگے پڑھنا چاہتی ہے ، اس لئے شادی کے بندھن سے آزاد ہونا چاہتی ہے ۔ ممکنہ طور پر یہ مدھیہ پردیش میں اپنی نوعیت کا پہلا معاملہ ہے ، جب شادی کے بعد کسی نابالغ لڑکی نے شادی کے خلاف آواز اٹھاتے ہوئے شکایت درج کرائی ہے ۔ یہ معاملہ امریا ضلع میں پیش آیا ہے ۔ 17 سال کی نابالغ لڑکی نے چائلڈ لائن میں شکایت کی ہے کہ اس کی شادی اس کی مرضی کے خلاف کی گئی ہے ۔ وہ پڑھنا چاہتی تھی ، لیکن اس کو آگے پڑھنے نہیں دیا گیا ۔


نابالغ لڑکی کی شکایت کے مطابق اس کے سوتیلے باپ نے اس کی کم عمر میں شادی کرادی ۔ اس نے چائلڈ لائن سے یہ مطالبہ کیا ہے کہ اس کو اس رشتہ سے آزاد کرایا جائے ۔ یعنی شادی کو ختم کیا جائے ۔ وہ اس رشتہ سے آزاد ہونا چاہتی ہے ۔ لڑکی نے شکایت میں یہ بھی بتایا کہ وہ یہ سب اس لئے کررہی ہے ، کیونکہ اس کو آگے پڑھنا ہے ۔ چائلڈ لائن نے شکایت کو وومین چائلڈ ڈیولپمنٹ ڈیپارٹمنٹ اور چائلڈ ویلفیئر کمیٹی کو بھیج دیا ہے ۔ اب اس معاملہ میں فیصلہ عدالت کرے گی ۔


نابالغ لڑکی کی شکایت کے مطابق اس کے سوتیلے باپ نے اس کی کم عمر میں شادی کرادی ۔
نابالغ لڑکی کی شکایت کے مطابق اس کے سوتیلے باپ نے اس کی کم عمر میں شادی کرادی ۔


چائلڈ لائن بھوپال کی ڈائریکٹر ارچنا سہائے نے بتایا کہ نابالغ کی شادی سوتیلے باپ نے کرائی تھی ۔ اس کی شادی دو سال پہلے 15 سال کی عمر میں گنا کے مسوآ گاوں میں ایک 35 سالہ شخص سے کرائی گئی تھی ۔ وہ شادی کے بعد صرف سات دن ہی اپنے سسرال میں رہی اور پھر مائیکے آگئی ۔ کنبہ کے لوگوں نے اس کو دوبارہ سسرال بھیجنے کی کافی کوشش کی ، لیکن وہ اپنی تعلیم کی بات پر بضد ہوگئی اور پھر سسرال نہیں گئی ۔ اس کے بعد نابالغ لڑکی اپنی ماں اور بھائی کے ساتھ بھوپال میں رہنے لگی ۔

سوتیلے باپ نے تو بیٹی کی شادی کرکے اس سے اپنا پیچھا چھڑا لیا تھا ، لیکن اس ماں نے بیٹی کا ساتھ دیا جس نے اس کو پیدا کیا تھا ۔ ماں کی ہمت کی وجہ سے لڑکی بھوپال میں رہنے لگی اور اپنے بھائی کے ساتھ پڑھائی کو آگے جاری رکھا ۔ لڑکی نے اس سال دسویں میں اچھے نمبرات سے کامیابی حاصل کی ہے اور اب وہ آگے پڑھنا چاہتی ہے ۔ یہی وجہ ہے کہ اس نے اپنی شکایت میں اس رشتہ کو ختم کرنے کا مطالبہ کیا ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Sep 13, 2020 09:13 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading