ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

ٹیم انڈیا کا 'دسہرہ ' کے موقع پر 3۔ 0 سے جیت کا تحفہ، نیوزی لینڈ کا سوپڑا صاف

اندور۔ اسپن گیندباز آر اشون کی کرشمائی بولنگ کی بدولت ہندوستان نے نیوزی لینڈ کو اندور ٹیسٹ میں 321 رنز سے کراری شکست دی۔

  • UNI
  • Last Updated: Oct 11, 2016 06:45 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
ٹیم انڈیا کا 'دسہرہ ' کے موقع پر 3۔ 0 سے جیت کا تحفہ، نیوزی لینڈ کا سوپڑا صاف
گیٹی امیجیز

اندور۔ وراٹ کوہلی کی نوجوان ٹیم نے ہولکر اسٹیڈیم میں تیسرے اور آخری کرکٹ ٹیسٹ کے چوتھے ہی دن منگل کوہندوستانی ٹیم کے سب سے زیادہ خطرناک ہتھیار روی چندرن اشون (59 رن پر سات وکٹ) کی ایک اور شاندار کارکردگی کی بدولت 321 رن سے ریکارڈ کامیابی حاصل کر کے سیریز 3۔0 سے کلین سویپ کرلی۔ ہندوستان نے 3۔0 کے کلین سویپ کے ساتھ ہی آئی سی سی ٹیسٹ رینکنگ میں نمبر ایک پوزیشن پر اپنی بادشاہت بھی مزید مضبوط کر لی۔ ہندوستان کی رن کے اعتبار سے نیوزی لینڈ کے خلاف یہ سب سے بڑی جیت اور اپنی ٹیسٹ تاریخ میں دوسری سب سے بڑی جیت ہے۔ ہندوستان نے اس سے پہلے مارچ 1968 میں نیوزی لینڈ کو آکلینڈ میں 272 رن سے شکست دی تھی۔ اندور کے ہولکر اسٹیڈیم میں یہ پہلا ٹیسٹ تھا اور ہندوستان نے اس میدان پر اپنا مضبوط ریکارڈ برقرار رکھا۔ ہندوستان نے اس سے پہلے ہولکر اسٹیڈیم میں چاروں ون ڈے جیتے تھے۔ ہندوستان نے اپنی دوسری اننگز چتیشور پجارا (ناٹ آوٹ 101) کی شاندار سنچری کی بدولت تین وکٹ پر 216 رن پر ڈکلیئر کی اور نیوزی لینڈ کے سامنے 475 رن کا مشکل ہدف رکھ دیا۔


نیوزی لینڈ کی ٹیم ایک بار پھر اشون کے مایا جال میں پھنس گئی اور 44.5 اوور میں 153 رن پر گھٹنے ٹیک دیے۔ پہلی اننگز میں 81 رن پر چھ وکٹ لینے والے اشون نے دوسری اننگز میں بھی نیوزی لینڈ کو گھیرتے ہوئے 13.5 اوور میں 59 رن پر اس کے سات کھلاڑیوں کو آوٹ کیا۔ اس طرح اشون نے اپنے کیریئر میں چھٹی بار ایک ٹیسٹ میں 10 وکٹ حاصل کئے۔انہوں نے اس میچ میں مجموعی طورپر 13 وکٹ لئے۔ اشون نے اس طرح ایک اننگز اور ایک ٹیسٹ میں اپنے کیریئر کی بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔ انہوں نے اس سے پہلے ایک اننگز میں 66 رن پر سات وکٹ اور میچ میں 85 رن پر 12 وکٹ لئے تھے۔ انہوں نے نیوزی لینڈ کی دوسری اننگز میں 59 رن پر سات وکٹ اور میچ میں 140 رن پر 13 وکٹ لئے۔ اشون اس کے ساتھ ہی سیریز میں دو بار 10 وکٹ لینے والے دوسرے ہندوستانی گیند باز بن گئے۔ اس سے پہلے آف اسپنر ہربھجن سنگھ نے 2000-01 میں آسٹریلیا کے خلاف سیریز میں دو بار 10 وکٹ حاصل کئے تھے۔اشون نے اس سیریز میں تیسری بار اننگز میں پانچ وکٹ حاصل کئے اور مجموعی طورپر27 وکٹ اپنے نام کئے۔ 30 سالہ اشون کو لیفٹ آرم اسپنر رویندر جڈیجہ کا مکمل ساتھ ملا جنہوں نے 16 اوور میں 45 رن پر دو وکٹ لئے۔ تیز گیند باز امیش یادو نے آٹھ اوور میں 13 رن پر ایک وکٹ لیا۔


نیوزی لینڈ کی ٹیم نے ایک بار پھر اشون کے سامنے گھٹنے ٹیک دیے۔نیوزی لینڈ کی ٹیم نے ہدف کا تعاقب کرتے ہوئے چائے کے وقفہ تک ایک وکٹ پر 38 رن بنائے تھے لیکن اس نے آخری سیشن میں اپنے باقی نو وکٹ گنوا دیے۔ ہندوستان نے اس طرح نیوزی لینڈ کے خلاف پہلی بار تین میچوں کی سیریز 3۔0 سے کلین سویپ کی۔ وراٹ کی کپتانی میں ہندوستان کی یہ مسلسل چوتھی سیریز جیت ہے۔ وراٹ کی کپتانی میں ہندوستان نے سری لنکا کو اسی کی زمین پر 2۔1 سے، جنوبی افریقہ کو گھریلو زمین پر 3۔0 سے اور ویسٹ انڈیز کو اسی کے گھر میں 2۔0 سے شکست دی ہے۔ وراٹ نے اس طرح اپنی کپتانی میں 10 ٹیسٹ میچ جیت لئے ہیں۔

اشون نے دوسری اننگز میں بھی اپنا جادو برقرار رکھتے ہوئے کپتان کین ولیمسن (27)، راس ٹیلر (32)، لیوک رونچی (15)، مشیل سیٹنر (14)، جیتن پٹیل (0)، میٹ ہنری (0) اور ٹرینٹ بولٹ (4) کے وکٹ لئے۔ بی جے واٹلنگ 23 رن پر ناٹ آؤٹ رہے۔ اشون نے نیوزی لینڈ کے کپتان کو سیریز میں چوتھی بار اپنا شکار بنایا۔ جڈیجہ نے سلامی بلے باز پارٹن گپٹل (29) اور جیمز نیشم (0) کے وکٹ لئے۔امیش یادو نے ٹام لاتھم (6) کو آؤٹ کیا۔ نیوزی لینڈ کا نواں وکٹ 35 ویں اوور میں 138 کے اسکور پر گر گیا تھا لیکن بی جے واٹلنگ اور ٹرینٹ بولٹ نے آخری وکٹ کے لئے 10.1 اوور تک ٹکے رہ کر ہندوستان کا انتظار بڑھا دیا۔


دن کا آخری اوور باقی تھا اور ایسا لگ رہا تھا کہ کہیں میچ کو آخری دن نہ لے جانا پڑے  لیکن اشون نے اس اوور کی پانچویں گیند پر بولٹ کو خود ہی لپک کر ملک کو دسہرہ کو جشن منانے کا موقع دے دیا۔ اس طرح وراٹ سیریز کلین سویپ کرنے والے تیسرے ہندوستانی کپتان بن گئے۔ اس سے پہلے یہ کامیابی محمد اظہر الدین اور مہندر سنگھ دھونی کے نام تھی۔ اس سے پہلے پجارا کی آٹھویں سنچری کی بدولت ہندوستان نے اپنی دوسری اننگز تین وکٹ پر 216 رن بنا کر ڈکلئر کی۔ پجارا نے 148 گیندوں پر ناٹ آؤٹ 101 رن میں نو چوکے لگائے۔ کل زخمی ہوئے سلامی بلے باز گوتم گمبھیر مرلی وجے (19) کے رن آؤٹ ہونے کے بعد کریز پر آئے اور انہوں نے اپنی نصف سنچری مکمل کی۔ گمبھیر نے 56 گیندوں پر چھ چوکوں کی مدد سے 50 رن بنائے۔دو سال بعد ٹیم میں واپس آئے گمبھیر نے نصف سنچری مکمل کرنے کے بعد آسمان کی طرف دیکھ کر بھگوان کا شکریہ ادا کیا۔ کپتان وراٹ کوہلی 17 رن بنا کر آؤٹ ہوئے جبکہ اجنکیا رہانے 23 رن پر ناٹ آؤٹ رہے۔ وراٹ نے پجارا کی سنچری مکمل ہوتے ہی ہندوستان کی دوسری اننگز ڈکلئر کر دی اور ہندوستانی گیند بازوں نے باقی دن میں نیوزی لینڈ کی دوسری اننگز کو سمیٹ دیا۔

First published: Oct 11, 2016 05:00 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading