உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Bilkis Bano case: بلقیس بانو معاملے کے مجرموں کو سزا دلوانے تک جاری رہے گی تحریک

    2002 Bilkis Bano case: کانگریس اقلیتی سیل کے زیر اہتمام بھوپال میں کانگریس لیڈران نے گورنر ہاؤس میں دیا میمورنڈم

    2002 Bilkis Bano case: کانگریس اقلیتی سیل کے زیر اہتمام بھوپال میں کانگریس لیڈران نے گورنر ہاؤس میں دیا میمورنڈم

    بھوپال وارڈ پینتس سے کانگریس کی کونسلر شیریں انور نے نیوز ایٹین اردو سے بات کرتے ہوئے کہا کہ اس سے زیادہ شرمناک اور کیا ہوسکتا ہے کہ پندرہ اگست کے دن وزیر آعظم نریندر مودی جی عورت کی عصمت اور وقار کی بات کرتے رہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Madhya Pradesh | Gujarat
    • Share this:
    2002 Bilkis Bano case: بلقیس بانو معاملے سے تعلق رکھنے والے مجرموں کی رہائی کے خلاف بھوپال میں کانگریس اقلیتی سیل کے زیر اہتمام مسلم لیڈران بھوپال گورنر ہاؤس میں میمورنڈم دیکر بلقیس بانو کو انصاف دلانے کا مطالبہ کیا۔ گورنر ہاؤس میں دیئے گئے پانچ نکاتی میمورنڈم میں جہاں بلقیس بانو معاملے کے لوگوں کی رہائی کو انتہائی شرمناک قرار دیتے ہوئے انہیں دوبارہ سزا دینے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔ وہیں مجرموں کی رہائی پر عوامی طور پر جشن منانے اور میٹھائی تقسیم کرنے والوں کے خلاف بھی کاروائی کا مطالبہ کیا گیا ہے۔
    بھوپال وارڈ پینتس سے کانگریس کی کونسلر شیریں انور نے نیوز ایٹین اردو سے بات کرتے ہوئے کہا کہ اس سے زیادہ شرمناک اور کیا ہوسکتا ہے کہ پندرہ اگست کے دن وزیر آعظم نریندر مودی جی عورت کی عصمت اور وقار کی بات کرتے رہے۔وہیں دوسری جانب ان لوگوں کو رہا کیا گیا جنہوں نے عورت کی عصمت کو تار تار کرنے کے ساتھ قتل کا بھی جرم کیا ہے۔ ہم جاننا چاہتے ہیں کہ اگر بلقیس کی جگہ کوئی بندیا ہوتی تو کیا اس کے ساتھ عصمت دری کرنے والوں کو بھی اس طرح سے رہا کیا جاتا۔

    ہم حکومت سے مانگ کرتے ہیں بلقیس بانو کے مجرموں کو دوبارہ گرفتار کیا جائے ساتھ ہی ان لوگوں کے خلاف بھی کاروائی کی جائے جنہوں نے عوامی طور پر ان کا استقبال کیا اور انہیں مٹھائیاں تقسیم کرکے بلقیس بانو کے زخموں پر نمک پاشی کا کام کیا ہے۔ جب تک بلقیس بانو کے مجرموں کو کیفر کردار تک نہیں پہنچایا جاتا ہے ہماری عورت کے تحفظ کو لیکر تحریک جاری رہے گی۔

    Maulana Syed Jalaluddin Umri کا سانحہ ارتحال، مسلم دنیا کا نا قابل تلافی نقصان



    مدھیہ پردیش کانگریس کمیٹی کے سکریٹری عبدالنفیس کہتے ہیں کہ سرکار کے ذریعہ عورت کے تحفظ اور وقار کی بات تو بہت کی جاتی ہے لیکن یہاں عورت کی عصمت کے لٹیرے کو ہی ہیرو بناکر پیش کیا جارہا ہے ۔جو لوگ بلقیس بانو کیس میں گنہگار تھے جنہیں سی بی آئی عدالت اور دوسری عدالتوں کے ذریعہ مجرم مانا گیاتھا انہیں آزادی کا امرت مہوتسو کے موقعہ پر رہا کرنے ہندستانی تہذیب کے ساتھ آئین کی بھی توہین ہے ۔ہم نے گورنر صاحب کے نام سے راج بھون میں میمورنڈم پیش کرکے بلقیس بانو کو انصاف دلوانے کا مطالبہ کیا ہے۔
    Published by:Sana Naeem
    First published: