உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    OMG: ایک ہی دن شادی کے بندھن میں بندھیں لیو ان میں رہنے والی 1320 جوڑیاں، جانئے کیوں

    OMG: ایک ہی دن شادی کے بندھن میں بندھیں لیو ان میں رہنے والی 1320 جوڑیاں، جانئے کیوں

    OMG: ایک ہی دن شادی کے بندھن میں بندھیں لیو ان میں رہنے والی 1320 جوڑیاں، جانئے کیوں

    Khunti Group Marriage: ہفتہ کو جھارکھنڈ میں ایک انوکھی شادی ہوئی ۔ یہاں کے کھونٹی میں لیو ان ریلیشن شپ میں رہ رہے 1320 جوڑے شادی کے بندھن میں بندھ گئے ۔ سبھی غربت کی وجہ سے شادی نہیں کر پارہے تھے ۔

    • Share this:
      کھونٹی : ہفتہ کو جھارکھنڈ میں ایک انوکھی شادی ہوئی ۔ یہاں کے کھونٹی میں لیو ان ریلیشن شپ میں رہ رہے 1320 جوڑے شادی کے بندھن میں بندھ گئے ۔ سبھی غربت کی وجہ سے شادی نہیں کر پارہے تھے ۔ ساتھ ہی وہ شادی کرنے اور گاوں والوں کو شادی کی دعوت کھلانے سے قاصر تھے ۔ سماج میں ان لوگوں کا ڈھوکو کے نام سے استحصال کیا جاتا تھا ۔ وہیں اب ان لوگوں کو سماجی سطح پر انصاف ملا ہے ۔

       

      یہ بھی پڑھئے : 53 سال کی ماں نے اپنے Love سے کی دوبارہ شادی، بیٹے نے لکھی جذباتی پوسٹ، کہی یہ بات



      کھونٹی کے برسا کالج میں واقع فٹ بال میدان میں شادی پروگرام کا انعقاد کیا گیا ، جہاں کئی سالوں سے ساتھ رہ رہی ڈھوکو جوڑیاں شادی کے بندھن میں بندھ گئیں ۔ بتادیں کہ سیکڑوں جوڑیاں اپنے بچوں کو ساتھ لے کر شادی پروگرام میں شامل ہوئی تھیں ۔ شادی کے بعد یہ جوڑیاں خوش اور پرجوش نظر آئیں ۔ دراصل سماج میں ڈھوکو کو عزت نہیں ملتی ہے اور نہ ہی ان کے بچوں کو قانون میں کوئی حق ملتا ہے ۔

       

      یہ بھی پڑھئے : اچانک ہی زندہ ہوگیا مرا ہوا شخص ، موت کا اعلان کر چکے ڈاکٹر رہ گئے دنگ!


      کئی مرتبہ یہاں عاشق جوڑے شادی تو کر لیتے ہیں ، لیکن جب عاشق جوڑے سماج میں لوگوں کو شادی کی دعوت کھلانے سے قاصر رہتے ہیں تو انہیں شادی کے بغیر ہی لیو ان میں رہنے کیلئے مجبور ہونا پڑتا ہے ۔ اس کی وجہ سے ان کی مجبوری کو سماجی برائیوں کی ایسی مار پڑتی ہے کہ انہیں سماج میں ڈھوکو کے نام سے بلایا جاتا ہے ۔ سماجی پروگرام میں شامل ہونے کا حق چھین لیا جاتا ہے اور لوگوں کے طعنے سننے پڑتے ہیں ۔

      اس انعقاد میں گورنر نے بطور چیف گیسٹ ورچوئل طریقہ سے نو شادی شدہ جوڑوں کو آشیرواد دیا ۔ ساتھ ہی ساتھ ان کو سرکار کی اسکیموں کا فائدہ دلانے کی یقین دہانی کرائی ۔ شادی کی تقریب سرنا مذہب کے مطابق اختتام پذیر ہوئی ، جس میں ضلع کے ڈی سی ، ایس پی سمیت سبھی افسران نے دولہا اور دلہن کو آشیرواد دیا ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: