ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

مدھیہ پردیش میں اردو اساتذہ کو پھر نظر انداز کئے جانے کے خلاف آرتی شرما کی قیادت میں تحریک شروع

آرتی شرما کی قیادت میں شروع کی گئی اس تحریک کی خاص بات یہ ہے کہ اس تحریک میں یونیورسٹیوں،کالجوں اور اسکولوں میں اردو اساتذہ کی تقرری کا مطالبہ اردو والوں کے ذریعہ نہیں کیا جا رہا ہے بلکہ اردو سے محبت کرنے والی آرتی شرما کے ذریعہ کیا جا رہا ہے ۔

  • Share this:
مدھیہ پردیش میں اردو اساتذہ کو پھر نظر انداز کئے جانے کے خلاف آرتی شرما کی قیادت میں تحریک شروع
مدھیہ پردیش میں اردو اساتذہ ایک بار پھر کئے گئے نظر انداز

بھوپال۔ مدھیہ پردیش کی یونیورسٹیوں، کالجوں اور اسکولوں میں اردو اساتذہ کی تقرری کا مطالبہ کوئی نیا نہیں ہے۔ اردو اساتذۃ کی تقرری کو لیکر مدھیہ پردیش میں سب سے بڑا احتجاج دوہزار دو اور تین میں کیا گیا تھا۔ اس وقت دوہزار تین میں سابق وزیراعلی  دگ وجے سنگھ نے اردو والوں کے مطالبے پر صوبہ میں بائیس سو اردو اساتذہ کی تقرری کا اعلان کیا تھا۔ اعلان کے بعد اردو اساتذہ کی تقرری کا عمل بھی شروع ہوا لیکن صوبہ میں کل 660 اردو اساتذہ کی ہی اردو اسکولوں میں تقرری ہو سکی ۔ 2003 کے بعد مدھیہ پردیش کی یونیورسٹیوں،کالجوں اور اسکولوں میں اردو اساتذہ کی تقرری کا مستقل مطالبہ کیا جا رہا ہے۔ حکومتیں تبدیل ہوتی رہیں مگر کسی بھی حکومت نے اس جانب توجہ نہیں دی۔ اب کورونا قہر میں ایم پی اسمبلی کی اٹھائیس سیٹوں پر ضمنی انتخابات ہونے والے ہیں اور شیوراج حکومت نے مختلف شعبوں میں تیس ہزار سرکاری اسامیوں کا اعلان کرنے کے ساتھ افسران کو تقرری عمل شروع کرنے کی بھی ہدایت دیدی ہے مگر یہاں پر بھی اردو والوں کے مطالبات کو ایک بار پھر نظر انداز کردیا گیا ہے۔


مدھیہ پردیش میں کورونا قہر میں بڑی تعداد میں نوجوانوں کو ملازمت سے ہاتھ دھونا پڑا ہے۔ ایسے میں مدھیہ پردیش کے نوجوانوں نے یوتھ مومنٹ اگینسٹ ان امپلائمنٹ کمیٹی کے تحت مدھیہ پردیش میں تحریک شروع کی ہے۔ آرتی شرما کی قیادت میں شروع کی گئی اس تحریک کی خاص بات یہ ہے کہ اس تحریک میں یونیورسٹیوں،کالجوں اور اسکولوں میں اردو اساتذہ کی تقرری کا مطالبہ اردو والوں کے ذریعہ نہیں کیا جا رہا ہے بلکہ اردو سے محبت کرنے والی آرتی شرما کے ذریعہ کیا جا رہا ہے ۔ آرتی شرما کی قیادت میں بھوپال کے اقبال میدان میں یوتھ مومنٹ اگینسٹ ان امپلائمنٹ کمیٹی کے تحت انسانی زنجیر بناکر احتجاج کیا گیا اور حکومت سے اردو کے ساتھ مدھیہ پردیش کی دوسری علاقائی زبانوں کے لوگوں کو بھی ملازمت دینے کا مطالبہ کیاگیا۔


آرتی شرما کی قیادت میں بھوپال کے اقبال میدان میں یوتھ مومنٹ اگینسٹ ان امپلائمنٹ کمیٹی کے تحت انسانی زنجیر بناکر احتجاج کیا گیا اور حکومت سے اردو کے ساتھ مدھیہ پردیش کی دوسری علاقائی زبانوں کے لوگوں کو بھی ملازمت دینے کا مطالبہ کیاگیا۔


یوتھ اگینسٹ ان امپلائمنٹ کمیٹی کی سربراہ آرتی شرما کہتی ہیں کہ بڑے افسوس کی بات ہے کہ کورونا قہر میں حکومت نے ملازمتوں کے دروازے بندے کر دیئے ہیں ۔حالانکہ اسی حکومت نے پارلیمانی انتخابات میں دو کروڑ نوجوانوں کو روزگار دینے کا وعدہ کیا تھا۔ کورونا قہر میں صرف پڑھے لکھے نوجوان ہی بے روزگار نہیں ہوئے ہیں بلکہ ناخواندہ لوگ بھی ملازمت سے محروم ہوئے ہیں ۔ ہمارے مطالبے کے بعد شیوراج سرکار نے مختلف شعبوں میں صرف تیس ہزار اسامیوں پر تقرری کا اعلان کیا ہے حالانکہ یہ بہت کم ہے کیونکہ صرف محکمہ تعلیم میں ہی پچھلے دس سال سے باون لاکھ اسامیاں خالی ہیں ۔ شیوراج سرکار نے تقرریوں کو لیکر جو اعلان کیا ہے اس میں اردو اساتذہ کو لیکر پھر اپنی سرد مہری کا رویہ پیش کیا گیا ہے۔ ہماری سرکار سے مانگ ہے کہ صوبہ کی یونیورسٹیوں،کالجوں اور اسکولوں میں اردو اساتذہ کی جو ساڑھے آٹھ ہزار اسامیاں خالی ہیں ان پر تقرری کی جائے اور ہندستان کی بیٹی اردو کی حفاظت کی جائے۔

آرتی شرما کے ذریعہ جب اقبال میدان پر روزگار اور اردو اساتذہ کی تقرری کو لیکر احتجاج شروع کیا گیا تو اس وقت نہ کوئی  اردو کی انجمن کا نمائندہ ان کے ساتھ تھا اور نہ ہی اردو کا دم بھرنے والے نام نہاد علمبردار۔ نیوز ایٹین اردو کی خبر کے بعد محبان اردو اور دوسری تنظیموں کے نمائندے اقبال میدان پہنچے اور انہوں نے آرتی شرما کے ساتھ مل کر اردو کے ساتھ دوسری زبانوں اور مضامین میں ملازمتوں کو لیکرحکومت سے مطالبہ کیا۔

محبان اردو کے رکن شاہ ویز سکندر کہتے ہیں کہ اردو کے نام پر یونیورسٹی کی سطح پر اٹھارہ  اساتذہ کی تقرری کا جو اعلان سرکار کے ذریعہ کیاگیا ہے ہم اس کا خیر مقدم کرتے ہیں اور اسی کے ساتھ حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ جس طرح سے حکومت نے یونیورسٹی کی سطح پر اردو کی خالی اسامیوں کو پر کرنے کے لئے قدم اٹھایا ہے اسی طرح سے مدھیہ پردیش کے کالجوں اور اسکولوں میں اردو اساتذہ کی تقرری کے لئے قدم اٹھائے۔ کیونکہ دوہزار تین کے بعد سے صوبہ میں اردو اساتدہ کی تقرری نہیں کی گئی ہے۔ ہم آرتی شرما کے شکرگزار ہیں کہ انہوں نے اردو زبان کی محبت میں یہ بڑا قدم اٹھایا ہے ۔ ہم ان کے ساتھ مل کر اردو اور دوسری زبانوں کے تحفظ کے لئے اپنی تحریک کو جاری رکھیں گے ۔
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Sep 26, 2020 04:23 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading