مالیگاوں بم دھماکہ : "مودی سرکار چاہتی ہے کمزور ہو کیس"

مالیگاوں بم دھماکہ معاملہ سے وابستہ خصوصی سرکاری وکیل روہنی سالیان نے الزام لگایا ہے کہ جب سے مرکز میں نئی حکومت آئی ہے، تب سے ان پر ہندو ملزمان کے تئیں نرم رخ اختیار کرنے کا دباو ڈالا جا رہا ہے

Jun 25, 2015 02:25 PM IST | Updated on: Jun 25, 2015 02:25 PM IST
مالیگاوں بم دھماکہ :

مالیگاوں بم دھماکہ معاملہ سے وابستہ خصوصی سرکاری وکیل روہنی سالیان نے الزام لگایا ہے کہ جب سے مرکز میں نئی حکومت آئی ہے، تب سے ان پر ہندو ملزمان کے تئیں نرم رخ اختیار کرنے کا دباو ڈالا جا رہا ہے۔ مالیگاوں بم دھماکہ میں گرفتار کئے گئے ملزمان میں مدھیہ پردیش کی سادھوی پرگیہ شامل ہے۔

دوسری طرف مالیگاوں اور سمجھوتہ ایکسپریس سمیت کئی دھماکوں سے جڑے اندور کے رام جی کلسانگرا اور سندیپ ڈانگے اب تک فرار ہیں۔ ان کی گرفتاری پر قومی جانچ ایجنسی ، این آئی اے نے دس دس لاکھ روپئے کے انعام کا اعلان کیا ہے۔

روہنی سالیان نے ایک انٹرویو میں کہا کہ مرکز میں تبدیلی اقتدار کے بعد مالیگاوں بم دھماکہ معاملہ میں این آئی اے کا دباو ہے کہ وہ اس معاملہ میں " نرم" رویہ اپنائیں۔ وکیل روہنی نے کہا" این ڈی اے سرکار بننے کے بعد این آئی اے کے ایک افسر نے انہیں فون کیا۔ جب روہنی نے فون پر کیس کی بات کرنے سے انکار کر دیاتو افسر نے ان سے مل کر بتایا کہ انہیں ملزموں کے تئیں نرم رخ اپنانا چاہئے۔

سالیان نے بتایا کہ ۱۲ جون کو معاملہ کی سماعت سے ٹھیک پہلے اسی افسر نے مجھ سے کہا کہ " مکھیا" چاہتے کہ میری جگہ پر کوئی اور وکیل عدالت میں موجود ہوگا۔

Loading...

سالیان ایک معروف وکیل ہیں اور وہ جے جے شوٹ آوٹ، بوریولی ڈبل مرڈر، بھرت شاہ معاملہ اور ملنڈ دھماکہ جیسے کئی کیسوں کی پیروی کر چکی ہیں۔

Loading...