مدھیہ پردیش کے ہردا میں ایک ساتھ پٹری سے اتریں دو ٹرینیں، 27 ہلاک

ہردا۔ مدھیہ پردیش کے ہردا کے پاس واقع ماچک ندی پر بنے پل کو پار کرتے ہوئے دو ایکسپریس ٹرینیں آج رات پٹری سے اتر گئیں۔

Aug 05, 2015 08:55 AM IST | Updated on: Aug 05, 2015 01:43 PM IST
مدھیہ پردیش کے ہردا میں ایک ساتھ پٹری سے اتریں دو ٹرینیں، 27 ہلاک

ہردا۔ مدھیہ پردیش کے ہردا میں گزشتہ رات ایک بھیانک ریل حادثہ ہوا ہے۔ یہاں دو ٹرینیں حادثہ کی شکار ہو گئی ہیں، جس میں کئی لوگوں کے مرنے کا خدشہ ہے۔ اب تک 27 لاشیں نکالی جا چکی ہیں اور ابھی ہلاکتوں کی تعداد مزید بڑھ سکتی ہے۔ امدادی کام میں مصروف ٹیموں نے اب تک دو سو سے زیادہ لوگوں کو بچایا ہے۔

عینی شاہدین کے مطابق، پہلا حادثہ رات کے قریب 11 بجے ممبئی سے وارانسی جا رہی كاماينی ایکسپریس کے ساتھ ہوا۔ یہ حادثہ ہردا سے 21 کلومیٹر دور كھركيا اور بھرنگي اسٹیشن کے درمیان ہوا۔ كاماينی ایکسپریس جب پل سے گزر رہی تھی اسی دوران اس کی 6 بوگياں پٹری سے اتر گئیں۔ اس کے بعد ٹھیک اسی جگہ پر ایک اور ٹرین حادثے کی شکار ہو گئی۔ اپ لائن سے گزر رہی راجیندرنگر سے ممبئی جا رہی جنتا ایکسپریس کا انجن اور اس کے 4 ڈبے پٹری سے اتر گئے۔

Loading...

مقامی لوگوں کی مدد سے ریل انتظامیہ اور مدھیہ پردیش حکومت کی ٹیمیں راحت اور بچاو کے کاموں میں مصروف ہیں۔ راحت اور بچاؤ کے کام میں این ڈی آر ایف، فوج اور بحریہ کی مدد لی جا رہی ہے۔

ریلوے کے وزیرمملکت منوج سنہا نے کہا کہ بھاری بارش اور پانی کے بہاو کی وجہ سے ریلوے ٹریک کے نیچے کی مٹی کھسک گئی تھی، جس کی وجہ سے یہ حادثہ ہوا۔ یہ انسانی بھول نہیں بلکہ ایک قدرتی آفت ہے۔ حکومت نے مرنے والوں کو 2 لاکھ، شدید طور پر زخمیوں کو 50 ہزار روپے اور معمولی طور پر زخمیوں کو 25 ہزار روپے کی مالی مدد کا اعلان کیا ہے۔

ریلوے انتظامیہ نے ہیلپ لائن نمبر جاری کر دئیے ہیں۔

بھوپال 09752460088

بھوپال 4061609۔07755

ہردا 2222052-0780

اٹارسي 22411920-0757

وارانسي2504221-0542

ممبئی 5280005-022

كاماينی ٹرین میں تقریبا 697 مسافر سوار تھے۔ جائے حادثہ پر امدادی کام جاری ہے۔ اگرچہ اندھیرا ہونے کی وجہ سے امدادی کام میں مشکلیں آئیں۔ واقعہ کے فورا بعد اٹارسی، بھوپال اور بھساول سے امدادی ٹیمیں روانہ ہو گئیں۔ ریلوے نے ہردا، بینا اور بھوپال میں ہیلپ لائن جاری کر دی ہے۔ بھوپال سے این ڈی آر ایف کی ٹیم اور مئو سے فوج کی ٹکڑی جائے واقعہ پر روانہ کر دی گئی۔

ریلوے کے ترجمان انل سکسینہ کے مطابق، پٹریوں پر پانی تھا اور پل ڈوبا ہوا تھا۔ اس وجہ سے كاماينی ایکسپریس کے آخری ڈبے پٹری سے اتر گئے۔ تقریباً اسی وقت دوسری پٹری پر جنتا ایکسپریس کا انجن اور ڈبے بھی پٹری سے اتر گئے۔

ہردا کے کلکٹر رجنیش شریواستو نے بتایا کہ كھركيا اور ہردا اسٹیشن کے قریب ماچک ندی پر واقعہ پیش آیا۔ انہوں نے کہا کہ دونوں ٹرینوں کے کچھ ڈبے اور انجن پانی میں ہیں۔ راجیندر نگر سے ممبئی جا رہی جنتا ایکسپریس بھی اسی جگہ پٹری سے اتری گئی۔

ریلوے کے وزیر سریش پربھو نے ٹویٹ کیا، ہنگامی طبی ٹیمیں اور دیگر راحتی عملہ جائے حادثہ پر پہنچ رہے ہیں۔ اندھیرا اور پانی سے رکاوٹ آ رہی ہے، لیکن ہر ممکن مدد کا حکم دیا ہے۔ ہم بھرپور کوشش کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بوگيوں کو باہر نکالنے کی کوشش جاری ہے۔

ریلوے کے وزیر نے اپنے ٹویٹ میں کہا کہ ہم معلومات کی بنیاد پر ہر ممکن مدد کے لئے تیاری کر رہے ہیں، کوئی کوشش نہیں چھوڑیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ریلوے انتظامیہ اور مدھیہ پردیش حکومت كاماینی ایکسپریس حادثے کے بعد مسافروں کو بچانے کے لئے مل کر کام کر رہی ہیں۔ جی ایم، ڈی آر ایم، آر پی ایف اور میڈیکل اسٹاف کو پہنچنے کا حکم دیا ہے۔ ریلوے افسران دو ٹرینوں کے پٹری سے اترجانے کی وجہ کا پتہ لگانے کی کوشش کر رہے ہیں۔

Loading...