உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پارلیمانی سرمائی اجلاس کے آغازمیں ترمیم شدہ کرپٹو کرنسی بل پربحث کاامکان، درمیانی راہ نکالنےکا تیقن

    حکومت نے کرپٹو کرنسی کو ریگولیٹ کرنے کی بات کی ہے، اس نے کہا کہ وہ مختلف اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ مل کر کام کر رہی ہے۔

    حکومت نے کرپٹو کرنسی کو ریگولیٹ کرنے کی بات کی ہے، اس نے کہا کہ وہ مختلف اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ مل کر کام کر رہی ہے۔

    وزارت خزانہ کے حکام ترمیم شدہ کریپٹو کرنسی بل (modified cryptocurrency bill) پر جلد بحث و مباحثہ کی کوشش کر رہے ہیں۔ پارلیمنٹ کا سرمائی اجلاس 29 نومبر سے 23 دسمبر 2021 تک طئے ہے۔ اس دوران مذکورہ بل پر قانون سازی کا امکان ہے۔

    • Share this:
      ۔CNBC TV-18 نے 8 نومبر 2021 کو رپورٹ پیش کی ہے کہ مرکز کی جانب سے پارلیمنٹ کے سرمائی اجلاس کے آغاز پر کریپٹو کرنسی پر ایک ترمیم شدہ بل پیش کرنے کا امکان ہے۔ ذرائع نے نیوز چینل کو بتایا کہ وزارت خزانہ کے حکام مجوزہ کرپٹو کرنسی قانون سازی میں ترمیم کرنے کی سمت کام کر رہے ہیں۔ بل کے پہلے مسودے میں ہندوستان میں ڈیجیٹل کرنسی کے استعمال پر پابندی کی تجویز پیش کی گئی تھی۔

      رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ وزارت خزانہ کے حکام ترمیم شدہ کریپٹو کرنسی بل پر جلد بحث و مباحثہ کی کوشش کر رہے ہیں۔ پارلیمنٹ کا سرمائی اجلاس 29 نومبر سے 23 دسمبر 2021 تک طئے ہے۔ اس دوران کریپٹو کرنسی پر ایک ترمیم شدہ بل (modified cryptocurrency bill) پر قانون سازی کا امکان ہے۔

      علامتی تصویر۔Shutterstock
      علامتی تصویر۔Shutterstock


      اکنامک ٹائمز کی ایک رپورٹ کے مطابق پہلے دن میں حکومت کرپٹو بل پر ’’درمیانی راہ‘‘ اپنائے گی۔ رپورٹ میں ایک شخص کا حوالہ دیتے ہوئے کہا گیا ہے کہ ایک توازن تلاش کرنا ہوگا۔ انہوں نے مزید کہا کہ مجوزہ قانون کی تفصیلات پر جلد ہی حتمی فیصلہ کیا جائے گا۔ یہ ایک درمیانی راستہ ہوگا، جو تمام اسٹیک ہولڈرز کے خدشات کو دور کرے گا‘‘۔

      انھوں نے مزید کہا کہ یہ بل ڈیجیٹل اثاثہ کی جگہ میں تکنیکی ترقی کو مدنظر رکھے گا، جس کا پہلے ڈرافٹ میں فقدان تھا۔ قابل ذکر بات یہ ہے کہ ریزرو بینک آف انڈیا (Reserve Bank of India) نے کرپٹو کرنسیوں پر پابندی لگا دی تھی لیکن سپریم کورٹ نے مارچ 2020 میں اس حکم کو منسوخ کر دیا تھا۔

      حکومت نے کرپٹو کرنسی کو ریگولیٹ کرنے کی بات کی ہے، اس نے کہا کہ وہ مختلف اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ مل کر کام کر رہی ہے۔ وزیر خزانہ نرملا سیتارام Nirmala Sitharam نے اکنامک ٹائمز کو بتایا تھا کہ ’’حکومت کریپٹو کرنسی کے خلاف نہیں ہے اور اس کے بجائے وہ ایسے طریقوں پر غور کرے گی جن سے یہ ملک کے فنٹیک سیکٹر کی مدد کر سکتی ہے‘‘۔

      یہ رپورٹ مارکیٹ ریگولیٹر سیبی کے انویسٹمنٹ ایڈوائزرز کو غیر ریگولیٹڈ انسٹرومنٹس میں کریپٹو کرنسیز، ڈیجیٹل گولڈ اور اس طرح کی دیگر مصنوعات شامل ہیں، اس کے بارے میں مشورہ دینے کے چند دن بعد سامنے آئی ہے۔ سیبی نے 21 اکتوبر کو کہا کہ ’’یہ SEBI کے نوٹس میں آیا ہے کہ کچھ رجسٹرڈ سرمایہ کاری کے مشیر ڈیجیٹل گولڈ سمیت غیر منظم مصنوعات کی خرید/فروخت/ڈیل کرنے کے لیے پلیٹ فارم فراہم کر کے غیر منظم سرگرمیوں میں مصروف ہیں‘‘۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: