உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Gurugram Namaz: منوہر لال کھٹرکا نماز سے متعلق بڑا بیان- طاقت دکھانے کے لئےکھلے میں نماز پڑھنا غلط

    ہریانہ کے وزیراعلیٰ منوہر لال کھٹر (Manohar Lal Khattar) نے اسمبلی میں کہا کہ کسی بھی برادری کے کے کسی بھی رکن کو عوامی مقام پر مذہبی عبادت نہیں کرنی چاہئے۔ ان کا یہ بیان گروگرام (Gurugram) میں کھلے میں جمعہ کی نماز کو لے کر کچھ ہندو وادی تنظیموں کی مخالفت کے پس منظر میں آیا ہے۔

    ہریانہ کے وزیراعلیٰ منوہر لال کھٹر (Manohar Lal Khattar) نے اسمبلی میں کہا کہ کسی بھی برادری کے کے کسی بھی رکن کو عوامی مقام پر مذہبی عبادت نہیں کرنی چاہئے۔ ان کا یہ بیان گروگرام (Gurugram) میں کھلے میں جمعہ کی نماز کو لے کر کچھ ہندو وادی تنظیموں کی مخالفت کے پس منظر میں آیا ہے۔

    ہریانہ کے وزیراعلیٰ منوہر لال کھٹر (Manohar Lal Khattar) نے اسمبلی میں کہا کہ کسی بھی برادری کے کے کسی بھی رکن کو عوامی مقام پر مذہبی عبادت نہیں کرنی چاہئے۔ ان کا یہ بیان گروگرام (Gurugram) میں کھلے میں جمعہ کی نماز کو لے کر کچھ ہندو وادی تنظیموں کی مخالفت کے پس منظر میں آیا ہے۔

    • Share this:
      چندی گڑھ: ہریانہ کے وزیراعلیٰ منوہر لال کھٹر (Manohar Lal Khattar) نے اسمبلی میں کہا کہ کسی بھی برادری کے کے کسی بھی رکن کو عوامی مقام پر مذہبی عبادت نہیں کرنی چاہئے۔ ان کا یہ بیان گروگرام (Gurugram) میں کھلے میں جمعہ کی نماز کو لے کر کچھ ہندو وادی تنظیموں کی مخالفت کے پس منظر میں آیا ہے۔ اسمبلی میں وقفہ صفر کے دوران نوح سے کانگریس رکن اسمبلی آفتاب احمد نے ہندو تنظیموں کے ذریعہ کئے جا رہے اعتراض کا معاملہ اٹھایا تھا۔

      اس کا جواب دیتے ہوئے وزیر اعلیٰ منوہر لال کھٹرنے کہا کہ سبھی مذاہب کے لوگ مقررہ مذہبی مقامات جیسے مندر، مسجد، گرودوارہ اور چرچ میں عبادت کرتے ہیں اور سبھی بڑے تہواروں اور پروگرام کے لئے کھلے میں اجازت دی جاتی ہے۔ آفتاب احمد کے ذریعہ اٹھائے گئے موضوعات پر منوہر لال کھٹر نے کہا، ’لیکن طاقت دکھانا، جس سے دوسرے طبقے کے جذبات مجروح ہوتے ہیں، وہ مناسب نہیں ہیں‘۔

      واضح رہے کہ جمعہ سے ہریانہ اسمبلی کا سرمائی اجلاس شروع ہوا ہے اور یہ دوسری بار ہے، جب اس موضوع اٹھایا گیا ہے۔ اہم اپوزیشن پارٹی کے رکن نے یہ موضوع اٹھاتے ہوئے کہا، ’کچھ عناصر جمعہ کی نماز میں رخنہ اندازی کر رہے ہیں۔ آئین نے سبھی کو اپنے مذاہب پر عمل کرنے کی اجازت دی ہے۔ کسی کو بھی عبادت میں رخنہ اندازی کرنے کا حق نہیں ہے۔ اگر کوئی اپنی مرضی سے عبادت نہیں کرپائے گا تو کیا پیغام جائے گا‘؟

      اس پر مداخلت کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ منوہر لال کھٹر نے کہا، ’کسی بھی برادری کے رکن کو کھلے مقام پر ایسے پروگرام نہیں کرنے چاہئے۔ اگر وہ کرنا چاہتے ہیں تو مندر، مسجد، گرودوارہ اور چرچ میں کرسکتے ہیں۔ یہ سبھی کی ذمہ داری ہے کہ پُرامن ماحول قائم رہے اور معاشرے میں کوئی ٹکراو نہ ہو‘۔


      قومی، بین الااقوامی، جموں و کشمیر کی تازہ ترین خبروں کے علاوہ  تعلیم و روزگار اور بزنس  کی خبروں کے لیے  نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں۔

      Published by:Nisar Ahmad
      First published: