உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    چندی گڑھ واقعہ : پولیس نے کہا: طالبہ نے صرف خود کے ویڈیو بوائے فرینڈ کو بھیجے، کسی اور کے نہیں

    چندی گڑھ واقعہ : پولیس نے کہا: طالبہ نے صرف خود کے ویڈیو بوائے فرینڈ کو بھیجے، کسی اور کے نہیں  (Video Grab)

    چندی گڑھ واقعہ : پولیس نے کہا: طالبہ نے صرف خود کے ویڈیو بوائے فرینڈ کو بھیجے، کسی اور کے نہیں (Video Grab)

    Chandigarh Viral News: ملک میں ہنگامہ مچا رہے چندی گڑھ یونیورسٹی واقعہ کے سلسلہ میں پنجاب کے وزیر اعلی بھگونت مان نے اعلی سطحی جانچ کا حکم دیا ہے ۔ اس واقعہ میں افواہ پھیلی ہے کہ ایک لڑکی نے 60 طالبات کے نہاتے ہوئے ویڈیو ریکارڈ کرکے وائرل کردئے ہیں ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Haryana | Punjab | Chandigarh
    • Share this:
      چندی گڑھ : ملک میں ہنگامہ مچا رہے چندی گڑھ یونیورسٹی واقعہ کے سلسلہ میں پنجاب کے وزیر اعلی بھگونت مان نے اعلی سطحی جانچ کا حکم دیا ہے ۔ اس واقعہ میں افواہ پھیلی ہے کہ ایک لڑکی نے 60 طالبات کے نہاتے ہوئے ویڈیو ریکارڈ کرکے وائرل کردئے ہیں ۔ اس معاملہ کو لے کر پولیس نے کہا کہ طالبہ نے خود کے ویڈیو نوجوان کے ساتھ شیئر کیا ، کسی اور کے نہیں ۔ بتادیں کہ یہ واقعہ موہالی میں واقع یونیورسٹی میں ہفتہ دیر رات پیش آیا ، جس کے بعد وہاں ہنگامہ مچ گیا ۔

      مبینہ طور پر ویڈیو وائرل کرنے والی طالبہ پر الزام ہے کہ وہ لڑکیوں کا ویڈیو بناکر شملہ کے ایک نوجوان کو بھیجتی تھی ، پھر وہ اس کو سوشل میڈیا پر وائرل کرتا تھا ۔ نوجوان بھی اسی یونیورسٹی کا طالب علم بتایا جارہا ہے ۔ دونوں کو پولیس نے حراست میں لے لیا ہے ۔

       

      یہ بھی پڑھئے: لڑکیوں کے نہاتے ہوئے ویڈیو بنانے والی ملزم لڑکی کوطالبات نے رنگے ہاتھ پکڑا، کہی یہ بڑی بات


      ادھر معاملہ کو طول پکڑتا دیکھ کر وزیر اعلی بھگونت مان نے پنجابی میں ٹویٹ کیا : چندی گڑھ یونیورسٹی میں پیش آئے واقعہ کا سن کر دکھ ہوا ۔ ہماری بیٹیاں ہمارا وقار ہیں ، اس واقعہ میں اعلی سطحی جانچ کے حکم دے دئے ہیں، جو بھی قصوروار ہوگا اس کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی ۔

       

      یہ بھی پڑھئے: مودی حکومت نے بنایا ڈی بی ٹی کا ریکارڈ، ضرورت مندوں کے کھاتے میں اب تک ڈالے 25 کھرب روپے


      وزیر اعلی نے کہا کہ وہ اس معاملہ کو لے کر ضلع انتطامیہ کے ساتھ رابطے میں ہیں ۔ انہوں نے عوام سے بھی اپیل کی کہ کسی بھی طرح کی افواہ پر یقین نہ کریں ۔ اس درمیان دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے بھی کہا کہ جو بھی اس واقعہ میں شامل ہوں گے، انہیں سخت سزا دی جائے گی ۔

      وہیں موہالی کے سینئر ایس پی وویک شیل سونی نے کہا کہ ابتدائی جانچ میں پتہ چلا ہے کہ طالبہ نے اپنے ہی ویڈیو ہماچل کے کسی شخص کے ساتھ شیئر کئے ۔ اس شخص کے کردار کی بھی جانچ کی جارہی ہے ۔ اس معاملہ میں طالبہ کو حراست میں لیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس معاملہ میں آئی پی سی کی دفعہ 354 سی اور آئی ٹی ایکٹ کے تحت ایف آئی آر درج کی گئی ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: