உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ED Action:سستے گھر کا جھانسہ دے کر پیسے لیے پھرIPLٹیموں اور فلم پروڈکشن پر کردیا خرچ، اب ای ڈی نے ضبط کی 137 کروڑ کی جائیداد

    ای ڈی نے بنگلورو میں کی بڑی کارروائی۔

    ای ڈی نے بنگلورو میں کی بڑی کارروائی۔

    ای ڈی کے مطابق، ملزمین نے یہ پیسے سرمایہ کاروں کو جانکاری دئیے بغیر بالی ووڈ فلمیں بنانے، آئی پی ایل ٹیموں مین سرمایہ کاری کرنے، شاہانہ پارٹیوں، مہنگی شادیوں، گفٹ دینے اور میوچول فنڈز میں سرمایہ کاری پر خرچ کیے۔

    • Share this:
      نئی دہلی:ED Action:ای ڈی نے پیر کو منی لانڈرنگ سے متعلق ایک معاملے میں بنگلورو میں بڑی کارروائی کی ہے۔ بتایا جا رہا ہے کہ سستے گھر کے بہانے سرمایہ کاروں کو دھوکہ دینے کے الزام پر کارروائی کرتے ہوئے تقریباً 137 کروڑ روپے کی جائیداد ضبط کر لی گئی ہے۔ ضبط کیے گئے اثاثوں میں زمین اور رہائشی مکانات شامل ہیں۔

      ای ڈی ذرائع سے ملی جانکاری کے مطابق، یہ سبھی جائیداد ڈریمس انڈیا لمیٹیڈ، اس کی منیجنگ ڈائریکٹر دشا چودھری، ٹی جی ایس کنسٹرکشن پرائیوٹ لمیٹیڈ اور اس کی ایم ڈی مندیپ کور و دیگر کے نام پر ہے۔

      ای ڈی (انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ) کے جاری کردہ ایک بیان کے مطابق، پی ایم ایل اے ایکٹ کے تحت 27 جون کو 16 جائیدادوں کو قرق کرنے کے احکامات جاری کیے گئے تھے۔ ای ڈی نے یہ بھی بتایا ہے کہ ان جائیدادوں کی کل قیمت تقریباً 137.6 کروڑ روپے ہے۔

      اس معاملے میں ایجنسی نے ملزم کے ساتھ ساتھ اس کی کمپنی گرو کلیان اور سچن نائک عرف یوگیش کے خلاف 125 ایف آئی آر کا نوٹس لیتے ہوئے منی لانڈرنگ کا معاملہ درج کیا ہے۔

      ای ڈی نے بتایا کہ سال 2011-12 سے 2016-17 کے درمیان ملزم نے تقریباً 10299 صارفین سے تقریباً 722 کروڑ روپے لئے تھے۔ اس رقم کو اس نے اپنے ذاتی مفاد کے لیے استعمال کیا۔ ای ڈی کا کہنا ہے کہ یہ رقم صارفین کو سستا مکان دلانے کا خواب دکھا کر اکٹھی کی گئی تھی، لیکن انہیں نہ تو مکان ملا اور نہ ہی ان کی رقم واپس ہوئی۔

      یہ بھی پڑھیں:
      ریسٹورنٹ میں اب نہیں دینا ہوگا جبراً سروس چارج، CCPAنے جاری کی گائیڈ لائنس

      یہ بھی پڑھیں:
      سماجوادی پارٹی کے ریاستی صدر ابو عاصم اعظمی کو جان سے مارنے کی دھمکی

      ای ڈی کے مطابق، ملزمین نے یہ پیسے سرمایہ کاروں کو جانکاری دئیے بغیر بالی ووڈ فلمیں بنانے، آئی پی ایل ٹیموں مین سرمایہ کاری کرنے، شاہانہ پارٹیوں، مہنگی شادیوں، گفٹ دینے اور میوچول فنڈز میں سرمایہ کاری پر خرچ کیے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: