உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    عتیق احمد سے خالی کرائی گئی زمین پر وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ نے کیا بھومی پوجن

    عتیق احمد اور مختار انصاری کے گڑھ سمجھے جانے والے مشرقی یو پی میں مافیاؤں کے خلاف جارحانہ رخ اپنا کر یوگی حکومت ایک تیر سے دو نشانہ سادھنے کی کوشش کر رہی ہے۔ الہ آباد میں عتیق احمد سے منسوب عمارتوں کو منہدم کرانے کے بعد وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ نے خالی کرائی گئی زمینوں پر بھومی پوجن کے ذریعہ غریبوں کے لئے مکانات تعمیر کرنے کا اعلان کیا ہے۔

    عتیق احمد اور مختار انصاری کے گڑھ سمجھے جانے والے مشرقی یو پی میں مافیاؤں کے خلاف جارحانہ رخ اپنا کر یوگی حکومت ایک تیر سے دو نشانہ سادھنے کی کوشش کر رہی ہے۔ الہ آباد میں عتیق احمد سے منسوب عمارتوں کو منہدم کرانے کے بعد وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ نے خالی کرائی گئی زمینوں پر بھومی پوجن کے ذریعہ غریبوں کے لئے مکانات تعمیر کرنے کا اعلان کیا ہے۔

    عتیق احمد اور مختار انصاری کے گڑھ سمجھے جانے والے مشرقی یو پی میں مافیاؤں کے خلاف جارحانہ رخ اپنا کر یوگی حکومت ایک تیر سے دو نشانہ سادھنے کی کوشش کر رہی ہے۔ الہ آباد میں عتیق احمد سے منسوب عمارتوں کو منہدم کرانے کے بعد وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ نے خالی کرائی گئی زمینوں پر بھومی پوجن کے ذریعہ غریبوں کے لئے مکانات تعمیر کرنے کا اعلان کیا ہے۔

    • Share this:
    الہ آباد: عتیق احمد اور مختار انصاری کے گڑھ سمجھے جانے والے مشرقی یو پی میں مافیاؤں کے خلاف جارحانہ رخ اپنا کر یوگی حکومت ایک تیر سے دو نشانہ سادھنے کی کوشش کر رہی ہے۔ الہ آباد میں عتیق احمد سے منسوب عمارتوں کو منہدم کرانے کے بعد وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ نے خالی کرائی گئی زمینوں پر بھومی پوجن کے ذریعہ غریبوں کے لئے مکانات تعمیر کرنے کا اعلان کیا ہے۔ مافیاؤں کے خلاف چلائی جا رہی یہ مہم اب ہندوتوا کی تشہیر کی شکل اختیار کرتی جا رہی ہے۔ سابق رکن پارلیمنٹ عتیق احمد کا گڑھ سجھے جانے والے شہر کے مغربی اسمبلی حلقے چکیہ اور لوکر گنج میں بی جے پی نے اپنے چھنڈے لہرا دیئے ہیں۔

     عتیق احمد شہر مغربی حلقے سے چار بار ایم ایل اے رہ چکے ہیں۔ اسی حلقے سے ان کے چھوٹے بھائی خالد عظیم اشرف بھی یوپی اسمبلی میں علاقے کی نمائندگی کر چکے ہیں۔

    عتیق احمد شہر مغربی حلقے سے چار بار ایم ایل اے رہ چکے ہیں۔ اسی حلقے سے ان کے چھوٹے بھائی خالد عظیم اشرف بھی یوپی اسمبلی میں علاقے کی نمائندگی کر چکے ہیں۔


    عتیق احمد شہر مغربی حلقے سے چار بار ایم ایل اے رہ چکے ہیں۔ اسی حلقے سے ان کے چھوٹے بھائی خالد عظیم اشرف بھی یوپی اسمبلی میں علاقے کی نمائندگی کر چکے ہیں۔ خالد اشرف پر بہوجن سماج پارٹی کے ایم ایل اے راجو پال کے قتل کا الزام ہے۔ ایک زمانے میں چکیہ علاقے میں صرف عتیق احمد کا سیاسی سکہ چلتا تھا، لیکن آج حالات بالکل بدل چکے ہیں۔ عتیق احمد کے منہدم شدہ مکانات کی دیواروں پر بی جے پے نے اپنے انتخابی نعرے لکھ دیئے ہیں اور گلیوں میں ہر طرف سی ایم یوگی آدتیہ ناتھ کے بینر پوسٹر نظر آ رہے ہیں۔ عتیق احمد کے خلاف سینئر وزیر سدھارتھ ناتھ سنگھ نے کمان سنبھال رکھی ہے۔ شہر مغربی کے چکیہ اور لوکر گنج محلے میں واقع عتیق احمد اور ان کے بھائی خالد اشرف کی جائیدادوں کو پوری طرح سے منہدم کرا دیا گیا ہے۔ منہدم شدہ زمینوں کو صاف کرانے کے بعد حکومت نے اسے اپنے قبضے میں لے لیا ہے۔ عتیق احمد سے خالی کرائی گئی ١۷۳١، مربع میٹر اراضی پر اب یوگی حکومت غریبوں کے لیے ۷٦ مکانات تعمیر کرانے جا رہی ہے۔

     وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ نے خود الہ آباد پہنچ کر بھومی پوجن کے ذریعہ اس منصوبے کا سنگ بنیاد رکھا۔

    وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ نے خود الہ آباد پہنچ کر بھومی پوجن کے ذریعہ اس منصوبے کا سنگ بنیاد رکھا۔


    وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ نے خود الہ آباد پہنچ کر بھومی پوجن کے ذریعہ اس منصوبے کا سنگ بنیاد رکھا۔ بی جے پی کے اس جارحانہ انتخابی تشہیر سے مسلم سیاسی پارٹیاں اپنے محتاط رد عمل کا اظہار کر رہی ہیں۔ مجلس اتحاد المسلمین کے ضلع صدر شاہ عالم کا کہنا ہے کہ بی جے پی مسلم مخالف ماحول پیدا کرکے اسمبلی انتخابات جیتنا چاہتی ہے۔ یوگی حکومت کے ترجمان سدھارتھ ناتھ سنگھ اس وقت شہر مغربی حلقے سے رکن اسمبلی ہیں۔ سدھارتھ ناتھ سنگھ عتیق احمد کے خلاف کارروائی کو رام راج سے تعبیر کر رہے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ جس عتیق احمد پر گزشتہ تیس برسوں سے کسی سیاسی پارٹی نے ہاتھ ڈالنے کی ہمت نہیں کی تھی، اس کو یوگی حکومت نے اپنے دم پر کر دکھایا ہے۔

    واضح رہے کہ عتیق احمد اور ان کے بھائی خالد اشرف کئی سنگین مقدمات کے تحت جیل میں بند ہیں۔ چکیہ اور لوکرگنج میں واقع ان کے دفاتر اورمکانات کو منہدم کرادیا گیا ہے۔ بی جے پی اس صورت حال کو اپنی بڑی سیاسی حصولیابی کے طور پر عوام کے سامنے پیش کر رہی ہے۔
    Published by:Nisar Ahmad
    First published: