ہوم » نیوز » عالمی منظر

سرحد تنازعہ پر بات چیت سے پہلے چین نے اٹھایا یہ بڑا قدم

سرحد پر کشیدگی ختم کرنے کے مقصد سے ہفتہ کو سینئر ہندوستانی اور چینی فوجی افسران کے درمیان ہونے والی کلیدی مذاکرات سے قبل یہ قدم اٹھایا گیا ہے۔

  • Share this:
سرحد تنازعہ پر بات چیت سے پہلے چین نے اٹھایا یہ بڑا قدم
سرحد تنازعہ پر آج ہوگی بات چیت، اس سے پہلے چین نے اٹھایا یہ بڑا قدم

بیجنگ: چین - ہندوستان - سرحد (India - China) پر نگرانی کرنے کے  لئے اپنے ویسٹرن تھیئیٹر کمانڈ اہلکاروں کے لئے چین نے نئے فوجی کمانڈر کی تقرری کی ہے۔ سرحد پر تنازعہ ختم کرنے کے مقصد سے ہفتہ کو سینئر ہندوستانی اور چینی افسران کے درمیان ہونے والی اہم میٹنگ سے پہلے یہ قدم اٹھایا گیا ہے۔


پیپلز لبریشن آرمی (پی ایل اے) کی ویسٹرن تھیئیٹر کمانڈ نے اپنی آفیشیل ویب سائٹ پر اعلان کیا ہے کہ لیفٹننٹ جنرل شوکلنگ کو اس کے سرحدی اہلکاروں کا نیا کمانڈر نامزد کیا گیا ہے۔ خبروں کے مطابق اس سے پہلے کلنگ ایسٹرن تھیئٹر کمانڈ میں خدمات دے چکے ہیں۔ پی ایل اے کی ویسٹرن تھیئٹر کمانڈ ہندوستان کے ساتھ کلو میٹر لمبی اصلی کنٹرول بارڈر (ایل اے سی) پر نگرانی رکھتی ہے۔ اس میں فوج، فضائیہ اور راکٹ فورس کے جوان شامل ہیں۔ اس کے سربراہ جنرل جھاوو جونکی ہیں۔ نئی تقرری ایسے وقت میں کی گئی ہے، جب چینی اور ہندوستانی اہلکاروں کے درمیان گزشتہ ماہ کی شروعات سے سرحد پر تعطل کا ماحول بنا ہوا ہے۔


چین - ہندوستان - سرحد پر نگرانی کرنے والے اپنے ویسٹرن تھیئیٹر کمانڈ اہلکاروں کے لئے چین نے نئے فوجی کمانڈر کی تقرری کی ہے۔
چین - ہندوستان - سرحد پر نگرانی کرنے والے اپنے ویسٹرن تھیئیٹر کمانڈ اہلکاروں کے لئے چین نے نئے فوجی کمانڈر کی تقرری کی ہے۔


خبروں کے مطابق، دونوں فریق ہفتہ کو مشرقی لداخ میں پورے مہینے سے چل رہی رسہ کشی کو ختم کرنے کے مقصد سے خصوصی تجاویز پر غوروخوض کرسکتے ہیں۔ یہ ہندوستانی اور چینی فوج کے درمیان پہلی تفصیلی میٹنگ ہوگی، جس کی قیادت دونوں فوجیوں کے لیفٹیننٹ جنرل کریں گے۔ نئی دہلی میں سرکاری ذرائع نے کہا کہ ہندوستان کی طرف سے بات چیت میں لیہہ واقع 14 کور کے جنرل آفیسر کمانڈنگ لیفٹیننٹ جنرل ہریندر سنگھ حصہ لے سکتے ہیں۔

واضح رہے کہ لداخ میں واقع اس وقت کشیدگی ہوگئی تھی جب تقریباً 250 چینی اور ہندوستانی فوجیوں کے درمیان 5 مئی کو جھڑپ ہوگئی تھی۔ اس حادثہ میں ہندوستانی اور چینی فریق کے 100 فوجی زخمی ہوگئے تھے۔ 9 مئی کو شمالی سکم میں بھی ایسا ہی حادثہ ہوا تھا۔ اس کے بعد چین کی طرف سے ایل اے سی پر بڑی تعداد میں فوجی تعینات کئے جانے لگے تھے۔ ہندوستان میں منہ توڑ جواب دینے کے لئے فوجیوں کی تعداد میں اضافہ کیا گیا تھا۔ حالانکہ حال ہی میں چوطرفہ دباو کے سبب چین نے اپنے قدم پیچھے کھینچ کر ایل اے سی سے فوجیوں کو پیچھے ہٹانا شروع کیا ہے۔
First published: Jun 06, 2020 01:18 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading