உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Chinaکے دبدبے روکنے کے لئے اس پلان پر کام کررہے ہیں ہندوستان اور ویتنام

    ویتنام دورے پر وزیردفاع راج ناتھ سنگھ۔ (ANI)

    ویتنام دورے پر وزیردفاع راج ناتھ سنگھ۔ (ANI)

    راجناتھ سنگھ نے جیانگ سے ملاقات کے بعد کہا، "ویتنام کے ساتھ ہندوستان کے قریبی سیکورٹی تعلقات سے ہند-بحرالکاہل میں استحکام آئے گا۔" وزیر دفاع راجناتھ سنگھ تین روزہ دورے پر منگل کو ہنوئی پہنچے اور صدر نیوین شوان فوک سے بھی ملاقات کی۔

    • Share this:
      ہنوئی: ہندوستان کو گھیرنے کی چین کی کوششوں کے جواب میں ہندوستان نے جارحانہ خارجہ پالیسی کا مظاہرہ کرتے ہوئے ویتنام کے ساتھ ایک اہم معاہدہ کیا ہے۔ وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ اور جنرل جیانگ کے درمیان ملاقات میں 2030 تک دوطرفہ دفاعی شراکت داری کے لیے مشترکہ ویژن دستاویز پر بھی دستخط کیے گئے۔ چین کی ہند-بحرالکاہل میں بڑھتی ہوئے دبدبہ کو دیکھتے ہوئے، اس سے دونوں ممالک کے درمیان بحری ڈومین میں دفاعی اور سیکورٹی تعاون کو مزید بڑھانے میں مدد ملے گی۔

      ویتنام ان ممالک میں سے ایک ہے جن کے ساتھ جنوبی بحیرہ چین کو لے کر چین کا تنازع جاری ہے۔ اس کے ساتھ ہی لداخ اور اروناچل پردیش کے حوالے سے بھی چین کے ہندوستان کے ساتھ تعلقات کشیدہ ہیں۔ دونوں وزراء نے ہندوستان سے ویتنام کو 500 ملین ڈالر کے دفاعی قرض کو جلد حتمی شکل دینے پر اتفاق کیا۔ اس کے علاوہ دفاعی شراکت داری کو مزید تقویت دینے کے لیے مزید راستے تلاش کرنے پر بھی اتفاق کیا گیا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      مہاراشٹر: BMC الیکشن سے متعلق رشہ کشی جاری، حکومت میں شامل پارٹیاں ہی لگا رہی ہیں الزام

      ویتنام کے ساتھ لاجسٹک معاہدے کے تحت دونوں ممالک ایک دوسرے کے فوجی اڈے استعمال کر سکیں گے۔ یعنی ان کے جنگی جہاز، ہوائی جہاز وغیرہ ایک دوسرے کے اڈے پر رک کر ایندھن بھرنے جیسی سہولیات لے سکیں گے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      سونیا گاندھی کی کورونا رپورٹ پھر پازیٹیو، ED سے پوچھ گچھ کے لئے مانگا تین ہفتے کا وقت

      انڈو پیسفک میں آئے گا استحکام : راجناتھ سنگھ
      راجناتھ سنگھ نے جیانگ سے ملاقات کے بعد کہا، "ویتنام کے ساتھ ہندوستان کے قریبی سیکورٹی تعلقات سے ہند-بحرالکاہل میں استحکام آئے گا۔" وزیر دفاع راجناتھ سنگھ تین روزہ دورے پر منگل کو ہنوئی پہنچے اور صدر نیوین شوان فوک سے بھی ملاقات کی۔ دونوں رہنماؤں کے درمیان مجموعی اسٹریٹجک تعلقات کے بارے میں تفصیلی بات چیت ہوئی۔

      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: