உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    India-China: چین نےہندوستان کےPowergridایمرجنسی رپسانس سسٹم کوبنایانشانہ: انٹلی جنس رپورٹ

     لداخ کے قریب ہندوستان میں پاور سیکٹر کو نشانہ بنایا ہے

    لداخ کے قریب ہندوستان میں پاور سیکٹر کو نشانہ بنایا ہے

    رپورٹ کے مطابق، چینی ہیکرز نے لداخ کے قریب شمالی ہندوستان میں سات لوڈ ڈسپیچ مراکز کو نشانہ بنایا جو لداخ میں انڈیا۔چین سرحد کے قریب علاقوں میں گرڈ اور بجلی کی سپلائی کو کنٹرول کرتے ہیں۔ اس کے علاوہ، ہمیں یقین ہے کہ ہیکرز کے لیے درکار انفراسٹرکچر اور مستقبل کی سرگرمیوں کے لیے پیشگی پوزیشن کے بارے میں بھی معلومات اکٹھی کی گئی ہیں۔

    • Share this:
      بدھ کے روز، نجی انٹیلی جنس فرم ریکارڈڈ فیوچر(Recorded Future Inc) کی ایک رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ چینی ہیکرز نے حالیہ مہینوں میں سائبر جاسوسی مہم کے ایک حصے کے طور پر لداخ کے قریب ہندوستان میں پاور سیکٹر کو نشانہ بنایا ہے۔ رپورٹ کے مطابق، چینی ہیکرز نے لداخ کے قریب شمالی ہندوستان میں سات لوڈ ڈسپیچ مراکز کو نشانہ بنایا جو لداخ میں انڈیا۔چین سرحد کے قریب علاقوں میں گرڈ اور بجلی کی سپلائی کو کنٹرول کرتے ہیں۔ اس کے علاوہ، ہمیں یقین ہے کہ ہیکرز کے لیے درکار انفراسٹرکچر اور مستقبل کی سرگرمیوں کے لیے پیشگی پوزیشن کے بارے میں بھی معلومات اکٹھی کی گئی ہیں۔

      ہیکرز نے ملٹی نیشنل لاجسٹکس کمپنی کے ماتحت ادارے کے ساتھ ہاتھ ملا یا تھا۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ہیکرز نے معلومات حاصل کرنے کے لیے ایک ہندوستانی نیشنل ایمرجنسی رسپانس سسٹم اور ایک ملٹی نیشنل لاجسٹک کمپنی کے ذیلی ادارے سے سمجھوتہ کیا تھا۔ ساتھ ہی، ہیکنگ کے لیے، ہیکنگ گروپ نے شیڈو پیڈ نامی سافٹ ویئر استعمال کیا جو پہلے چین کی پیپلز لبریشن آرمی سے وابستہ تھا۔

      مزید پڑھیں: موہن بھاگوت نے کشمیری پنڈتوں سے کہا- آئندہ سال ایسے بسنا کہ پھر کوئی اجاڑ نہ سکے

      ریکارڈڈ فیوچر کے سینئر مینیجر جوناتھن کونڈرا کا کہنا ہے کہ انٹرنیٹ آف تھنگز ڈیوائسز اور کیمروں کا استعمال کرتے ہوئے دخل اندازی کافی عام ہے۔ ساتھ ہی یہ ڈیوائس تائیوان اور جنوبی کوریا میں دراندازی کے لیے بھی استعمال ہوتی رہی ہے۔

      ہندوستان کے وزیر توانائی آر کے سنگھ نے بھی اس بات کی تصدیق کی ہے ۔آر کے سنگھ کا کہناہے کہ چینی ہیکرز نے لداخ میں دو بار الیکٹرک ڈسٹری بیوشن سینٹرز کو نشانہ بنایا، لیکن وہ کوئی نقصان پہنچانے میں کامیاب نہیں ہوسکے۔انہوں نے کہا کہ ہندوستان نے اس طرح کے سائبر حملوں کو روکنے اور مناسب جواب دینے کے لیے اپنے دفاعی نظام کو مضبوط کیا ہے۔

      چین کی فوج اور وزارت دفاع نے ایک ہی سافٹ ویئر کیااستعمال

      رپورٹ کے مطابق یہ سافٹ ویئر اس سے قبل چین کی پیپلز لبریشن آرمی اور وزارت دفاع استعمال کر چکے ہیں۔ ریکارڈڈ فیوچر کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ہو سکتا ہے کہ اہم انفراسٹرکچر کے بارے میں معلومات ڈسپیچ سینٹرز کو نشانہ بنا کر اکٹھی کی گئی ہوں یا مستقبل کے لیے کوئی منصو بہ بنایاجارہاہو۔

      مزید پڑھیں: پاکستانی پارلیمنٹ میں امریکہ مردہ آباد کے نعروں کے درمیان اس طرح سے عمران خان کے خلاف خارج ہوا تحریک عدم اعتماد

      ریکارڈڈ فیوچر کے سینئر مینیجر جوناتھن کونڈرا نے کہا کہ ہیکرز کی جانب سے دراندازی کے لیے استعمال کیے گئے طریقے غیر معمولی تھے۔ ہیکرز کے زیر استعمال آلات جنوبی کوریا اور تائیوان سے کام کر رہے تھے۔

      ممبئی کے 2020 کے بلیک آؤٹ کا راز

      Recorded Future Inc نے زار کھولا ہے۔ اسی دن تلنگانہ کے 40 سب اسٹیشنوں کو بھی ان ہیکرز نے نشانہ بنایا۔ تاہم، کمپیوٹر ایمرجنسی رسپانس ٹیم (CERT-IN) کی جانب سے الرٹ موصول ہونے کے بعد اس کوشش کو ناکام بنا دیا گیا۔ چین کے اسپانسرڈ ہیکرز اب تک ہندوستان کے بجلی کی سپلائی کو نشانہ بنا رہے ہیں۔ سائبر حملوں کے ذریعے چین کا مقصد ہندوستان کے اندرونی نظام کو درہم برہم کر رہا ہے۔
      Published by:Mirzaghani Baig
      First published: