ہوم » نیوز » وطن نامہ

اپوزیشن اتحاد میں دراڑ، بڑے لیڈران نے حلف برداری تقریب سے بنائی دوری

اتحاد کے کئی قدآور لیڈران کا حلف تقریب میں شامل نہ ہونا اپنے آپ میں کسی سیاسی تبدیلی کی سگبگاہٹ ہو سکتی ہے۔

  • Share this:
اپوزیشن اتحاد میں دراڑ، بڑے لیڈران نے حلف برداری تقریب سے بنائی دوری
اتحاد کے کئی قدآور لیڈران کا حلف تقریب میں شامل نہ ہونا اپنے آپ میں کسی سیاسی تبدیلی کی سگبگاہٹ ہو سکتی ہے۔

وزیر اعلیٰ کے عہدے کی تاجپوشی سے پہلے کانگریس میں کم گھمسان نہیں مچا۔ تین ریاستوں میں اسمبلی انتخابات جیتنے کے بعد کانگریس صدر راہل گاندھی کو سی ایم کے عہدے کا اعلان کرنے میں وقت لگ گیا۔ تینوں ریاستوں میں پیر کو وزرائے اعلیٰ نے حلف لیا۔


مدھیہ پردیش  کی کمان جہاں کمل ناتھ کو ملی، وہیں، راجستھان کی کمان سنبھالی اشوک گہلوت نے۔ چھتیس گڑھ کے وزیر اعلی بھوپیش بگھیل بنائے گئے۔ ان  کی حلف برداری تقریب میں آندھرا پردیش کے سی ایم چندر بابو نائیڈو اورلوک تانترک ( ایل جے ڈی ) لیڈر شرد یادو بھی موجود رہے۔


لیکن اتحاد کے کئی قدآور لیڈران کا حلف تقریب میں شامل نہ رہنا اپنے آپ میں کسی سیاسی تبدیلی کی سگبگاہٹ ہو سکتی ہے۔ بی ایس پی کی سربراہ مایاوتی ، سماجوادی پارٹی کے سربراہ اکھلیش یادو ، مغربی بنگال کی سی ایم ممتا بنرجی اور دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال کا شامل نہ ہونا سیاسی پنڈتوں کو راس نہیں آیا۔ ایسا ہونا ایکسپرٹ کی نظر میں بی جے پی کے خلاف اتحاد میں دراڑ کی نیو ہے۔

First published: Dec 18, 2018 07:43 AM IST