உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کووڈ 19: اروندکیجریوال نےکہا- ہم نہیں چاہتےامریکہ جیسا ہوحال، تیزہوگا آپریشن شیلڈ

    پلانی سوامی نےجماعتی کارکنان کے قیام سے متعلق پریشانیوں اور وقت پر کھانا نہیں ملنے کی شکایتوں کو اروند کیجریوال کے سامنے اٹھایا ہے۔

    پلانی سوامی نےجماعتی کارکنان کے قیام سے متعلق پریشانیوں اور وقت پر کھانا نہیں ملنے کی شکایتوں کو اروند کیجریوال کے سامنے اٹھایا ہے۔

    دہلی (Delhi) کے وزیراعلیٰ اروند کیجریوال (Arvind Kejriwal) نےاتوارکو بتایا کہ ’ہم دہلی میں کووڈ -19 (COVID-19) کے معاملوں کو تلاش کر رہے ہیں، جن علاقوں میں کورونا وائرس (Coronavirus) کےمعاملے ملتے ہیں، ان علاقوں کوکنٹینمنٹ زون اعلان کیا جا رہا ہے اور وہاں ’آپریشن شیلڈ’ کےتحت کام کر رہے ہیں’۔

    • Share this:
      نئی دہلی: دہلی (Delhi) کے وزیراعلیٰ اروندکیجریوال (Arvind Kejriwal) کورونا وائرس کے بڑھتےمعاملوں کو لےکرفکرمند ہیں۔ اروندکیجریوال نے اتوارکوکہا،’ہم نہیں چاہتےکہ دہلی کا امریکہ جیسا حال ہو، اس لئے’آپریشن شیلڈ’ چلایا جارہا ہے۔ ہم نے دہلی میں کووڈ -19 کےکئی اورکنٹینمنٹ زون کی پہچان کی ہے۔ ہم کووڈ -19 ’کنٹینمنٹ زون’ میں پیرسے بڑے پیمانے پرمہم چلائیں گے۔

      اروند کیجریوال نےکہا، ’ہم دہلی میں کووڈ -19 (COVID-19) کے معاملوں کو تلاش رہے ہیں، جن علاقوں میں کورونا وائرس (Coronavirus) کے معاملے ملتے ہیں۔ ان علاقوں کو کنٹینمنٹ زون قراردیا جارہا ہےاور وہاں ’آپریشن شیلڈ’ کےتحت کام کررہے ہیں’۔ اب تک دہلی میں کل 35-33 کنٹینمنٹ زون کی شناخت کی جاچکی ہے۔

      دہلی میں کووڈ -19 کے 166 اور معاملے

      دہلی میں ہفتہ کو 166 اور لوگوں میں کووڈ-19 کےانفیکشن کی تصدیق کی گئی ہے۔ اس سے دہلی میں کورونا وائرس سے انفیکشن کےمعاملے بڑھ کر 1069 ہوگئے ہیں۔ ساتھ ہی یہاں پانچ اور مریضوں کی موت بھی ہوگئی ہے۔ دہلی حکومت نے یہ تعداد بتائی ہے۔ ان کل معاملوں میں 712 مریضوں کو خصوصی مہم کےذریعہ اسپتالوں میں لایا گیا۔



      19 لوگوں کی ہوچکی ہے موت

      سرکاری افسران نےگزشتہ ماہ ان لوگوں کو کوارنٹائن میں بھیجنےکےقدم اٹھائے تھے، جن کا تعلق مارچ میں نظام الدین مرکز میں مذہبی پروگرام منعقدکیا تھا۔ جمعہ کو دہلی میں اس وائرس سے انفیکشن معاملے 903 ہوگئے اور 14 مریضوں کی جان چلی گئی۔ پانچ اورمریضوں کی جان جانےکےساتھ ہی دہلی میں اس بماری سےاب تک 19 لوگوں کی موت ہوچکی ہے۔ افسران کے مطابق کل معاملوں میں سے 26 مریضوں کو صحتمند ہونےکے بعد چھٹی دے دی گئی ہےجبکہ ایک ملک سےباہرچلا گیا۔

       
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: