رنجیت سنہا کی ڈائری سے کھلا راز، کولگیٹ کے ملزموں سے ملتے تھے سابق سی بی آئی چیف

نئی دہلی : سی بی آئی کے سابق ڈائریکٹر رنجیت سنہا کی مشکلیں بڑھ سکتی ہیں۔ سپریم کورٹ کی کمیٹی نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ بادی النظر یہ لگتا ہے کہ رنجیت سنہا بطور سی بی آئی ڈائریکٹر کوئلہ گھوٹالے کے متعدد ملزموں سے ملے۔

Jul 12, 2016 07:15 PM IST | Updated on: Jul 12, 2016 07:16 PM IST
رنجیت سنہا کی ڈائری سے کھلا راز، کولگیٹ کے ملزموں سے ملتے تھے سابق سی بی آئی چیف

نئی دہلی : سی بی آئی کے سابق ڈائریکٹر رنجیت سنہا کی مشکلیں بڑھ سکتی ہیں۔ سپریم کورٹ کی کمیٹی نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ بادی النظر یہ لگتا ہے کہ رنجیت سنہا بطور سی بی آئی ڈائریکٹر کوئلہ گھوٹالے کے متعدد ملزموں سے ملے۔ ہو سکتا ہے کہ انہوں نے جانچ کو بھی متاثر کیا ہو۔ اب سپریم کورٹ فیصلہ کرے گا کہ اس رپورٹ کی بنیاد پر رنجیت سنہا کے خلاف کوئی مقدمہ درج ہوگا یا نہیں۔

سی بی آئی کے سابق ڈائریکٹر رنجیت سنہا کے دور میں سی بی آئی کے ذمہ دو اہم معاملات آئے۔ پہلا ٹیلی کام گھوٹالہ اور دوسرا کوئلہ گھوٹالہ۔ دونوں جانچ پر انگلیاں اٹھیں۔ الزام لگا کہ رنجیت سنہا جانچ کو متاثر کر رہے ہیں، جس کے بعد ناراض ہوکر سپریم کورٹ نے رنجیت سنہا کو ٹیلی گھوٹالے کی جانچ سے الگ کر دیا۔ اب پونے دو لاکھ کروڑ روپے کے کوئلہ گھوٹالے میں بھی ان پر شکنجہ کستا نظر آ رہا ہے۔ اس وقت ڈائریکٹر رنجیت سنہا کے گھر پر ایک ڈائری تھی، جس میں ہر آنے جانے والے کی انٹری کی جاتی تھی۔

سپریم کورٹ کی طرف سے مقرر ایم ایل شرما کمیٹی نے اس ڈائری کی جانچ کی اور اپنی رپورٹ سپریم کورٹ کو سونپ دی ہے۔ تاہم اس رپورٹ کو ابھی عام نہیں کیا گیا ہے، لیکن منگل کو اٹارنی جنرل مکل روہتگی نے سپریم کورٹ کو اس رپورٹ کے بارے میں آگاہ کیا۔

اٹارنی جنرل مکل روہتگی نے کورٹ کو بتایا کہ رنجیت سنہا کے گھر پر رکھی ڈائری جس کی جانچ کی گئی، وہ صحیح ہے۔ اس میں رنجیت سنہا سے ملنے والوں کا نام درج ہے۔ رنجیت سنہا نے کوئلہ کان گھوٹالے کے متعدد ملزموں سے ملاقات کی۔ ایسا لگتا ہے کہ کچھ معاملات میں رنجیت سنہا نے جانچ کو متاثر کیا ہوگا۔ تاہم اٹارنی جنرل مکل روہتگی نے رنجیت سنہا کا دفاع بھی کیا۔ روہتگی کا کہنا ہے کہ اس رپورٹ میں جو ہیں ، وہ ناکافی ہیں۔ صرف شرما کمیٹی کی رپورٹ کی بنیاد پر رنجیت سنہا کے خلاف مقدمہ درج نہیں کیا جا سکتا۔

Loading...

رنجیت سنہا کے وکیل کا کہنا تھا کہ انہوں نے جن ملزموں سے ملاقات کی، وہ ان کے کام کا حصہ تھا۔ لیکن شکایت کنندہ پرشانت بھوشن کا کہنا ہے کہ کم سے کم مقدمہ درج کر کے اس بات کی جانچ ہونی چاہئے کہ اس وقت سی بی آئی ڈائریکٹر نے گھوٹالے کے ملزموں کی مدد کی یا نہیں۔ اب سپریم کورٹ یہ طے کرے گا کہ رنجیت سنہا پر مقدمہ درج ہوگا یا نہیں۔ رنجیت سنہا 2014 میں سی بی آئی کے ڈائریکٹر کے عہدے سے ریٹائر ہو چکے ہیں۔

Loading...