گڑگاوں میں مسلم نوجوان سے کہا گیا : اس علاقہ میں ٹوپی پہن کر آنا منع ہے ، جے شری رام نہیں کہنے پر مار پیٹ

May 27, 2019 08:25 AM IST | Updated on: May 27, 2019 08:27 AM IST
گڑگاوں میں مسلم نوجوان سے کہا گیا : اس علاقہ میں ٹوپی پہن کر آنا منع ہے ، جے شری رام نہیں کہنے پر مار پیٹ

گروگرام میں ٹوپی پہنے پر مسلم نوجوان کے ساتھ بدسلوکی ، مار پیٹ ، کیس درج

رمضان میں دیررات مسجدوں میں تراویح کی نماز پڑھی جاتی ہے ۔ بہار کے بیگوسرائے کا رہنے والا برکت عالم بھی اتوار کی رات صدر بازار گروگرام کی جامع مسجد سے تراویح کی نماز پڑھ کر لوٹ رہا تھا ۔ برکت کا کہنا ہے کہ اسی دوران ایک بائیک پر آئے چار نوجوان اور وہاں سے پیدل گزر رہے دو دیگر نوجوانوں نے اس کو روک لیا ۔

اس کے پہناوے اور سر پر لگی ٹوپی پر تبصرہ کرنے لگے ۔ ساتھ ہی کہا کہ اس علاقہ میں ٹوپی پہن کر آنا منع ہے ۔ جب برکت نے اس کی مخافلت کی تو اس کے ساتھ مار پیٹ کی گئی ۔ جے شری رام کے نعرے لگانے کیلئے کہا گیا ۔ بیچ سڑک پر کہا سنی ہوتے ہوئے دیکھ کر دیگر لوگ بھی رک گئے ۔

انہوں نے ملزموں کو روکنے کی کوشش کی ۔ بھیڑ جمع ہوتی دیکھ کر ملزمین جائے واقعہ سے فرار ہوگئے ۔ اطلاع ملتے ہی پولیس بھی جائے واقع پر پہنچ گئی ۔ پولیس علاقہ میں نصب سی سی ٹی وی کیمروں کی مدد سے ملزمین کی شناخت کرنے میں مصروف ہے ۔ سٹی تھانہ پولیس نے دیر رات متاثرہ کا بیان درج کرکے نامعلوم افراد کے خلاف معاملہ درج کرلیا ۔

لوگوں سے بات چیت کی بنیاد پر پولیس کا کہنا ہے کہ ملزمین شراب کے نشے میں تھے ۔ متاثرہ لڑکا کا علاج کرانے کے بعد اس کو گھر بھیج دیا گیا ہے ۔ جس وقت یہ واقعہ پیش آیا بازار پوری طرح سے بند ہوچکا تھا ۔ جائے واقعہ کے پاس میں ہی شراب کا ٹھیکہ بھی ہے ۔ متاثرہ کا کہنا ہے کہ وہ یہاں سلائی کا کام سیکھ رہا ہے ۔

Loading...