ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

کسان آندولن پر ٹویٹ کررہے بین الاقوامی سلیبریٹیز کو وزارت خارجہ نے دیا سخت جواب ، کہی یہ بات

Farmers protest: اس سلسلہ میں وزارت خارجہ نے کہا کہ اس طرح کے معاملات پر تبصرہ کرنے سے پہلے ہم اپیل کرتے ہیں کہ حقائق کا پتہ لگایا جائے اور معاملات کی مناسب سمجھ حاصل کی جائے ۔

  • Share this:
کسان آندولن پر ٹویٹ کررہے بین الاقوامی سلیبریٹیز کو وزارت خارجہ نے دیا سخت جواب ، کہی یہ بات
کسان دہلی کی سرحدوں پر گزشتہ تقریبا ڈھائی ماہ سے آندولن کررہے ہیں ۔ (Pic- AP)

مرکزی حکومت کے ذریعہ بنائے گئے تین زرعی قوانین کے خلاف کسان دہلی کی سرحدوں پر گزشتہ تقریبا ڈھائی ماہ سے آندولن کررہے ہیں ۔ ان کا مطالبہ ہے کہ سرکار ان قوانین کو واپس لے ۔ کچھ اپوزیشن پارٹیاں بھی کسانوں کی حمایت میں اترچکی ہیں ۔ وہیں اب ان کے اس آندولن کی حمایت میں کچھ بین الاقوامی شخصیات بھی آگئی ہیں ۔ امریکی پاپ سنگر ریحانہ نے کسان آندولن کی حمایت میں ٹویٹ کرکے ان چیزوں کو مزید بڑھادیا ہے ۔ وہیں اب ہندوستانی وزارت خارجہ نے اس سلسلہ میں اپنا بیان جاری کیا ہے ۔


اس معاملہ میں وزارت خارجہ نے بدھ کو ایک بیان جاری کرکے کہا کہ سنسنی خیز سوشل میڈیا ہیش ٹیگ اور کمنٹس سے لبھانے کا طریقہ ، خاص کر جب مشہور ہستیوں اور دیگر لوگوں کے ذریعہ کیا گیا ہو تو یہ نہ تو صحیح ہے اور نہ ہی ذمہ دارانہ ہے ۔ وزارت خارجہ کا یہ جواب اس وقت آیا ہے جب پاپ سنگر ریحانہ ، ماحولیات کیلئے کام کرنے والی سماجی کارکن گریٹا تھنبرگ اور امریکی نائب صدر کملا ہیرس کی رشتہ دار مینا ہیرس نے کسان آندولن کو لے کر ٹویٹ کئے ہیں ۔




وزارت خارجہ نے کہا کہ ان احتجاج پر اپنا ایجنڈہ لاگو کرنے اور انہیں پٹری سے اتارنے کی کوشش کررہے مفاد پرست گروپوں کو دیکھنا بدقسمتی ہے ۔ جیسا کہ 26 جنوری کو دیکھا گیا تھا ۔

اس سلسلہ میں وزارت خارجہ نے کہا کہ اس طرح کے معاملات پر تبصرہ کرنے سے پہلے ہم اپیل کرتے ہیں کہ حقائق کا پتہ لگایا جائے اور معاملات کی مناسب سمجھ حاصل کی جائے ۔ ہندوستان کی پارلیمنٹ نے مکمل اکثریت اور بحث کے بعد زراعت کے شعبہ سے متعلق اصلاحاتی قوانین پاس کئے ہیں ۔

وزارت خارجہ نے کہا کہ ان مفاد پرست گروپوں میں سے کچھ نے ہندوستان کے خلاف بین الاقومی حمایت حاصل کرنے کی کوشش کی ہے ۔ ایسے باہری عناصر سے ترغیب پاکر دنیا کے کئی حصوں میں مہاتما گاندھی کے مجسموں کو نقصان پہنچایا جارہا ہے ۔ یہ ہندوستان کیلئے اور ہر جگہ مہذب سماج کیلئے کافی پریشان کرنے والی بات ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Feb 03, 2021 03:23 PM IST