اپنا ضلع منتخب کریں۔

    دھرم سنسد میں متنازع، شرانگیز اور اشتعال انگیز تقاریر،اب ہریدوار میں درج ہوئی FIR

    مسلم طبقے کو لے کر نفرت انگیز اعلانات اور اشتعال انگیز تقریروں کے بعد اب وسیم رضوی عرف جتیندر نارائن تیاگی کے خلاف کیس درج کیا گیا ہے۔ اُن کے ساتھ ہی دیگر لوگوں پر بھی الزام لگائے گئے ہیں۔ یہ کیس ہریدوار کوتوالی میں گل بہار نامی نوجوان نے درج کروایا ہے۔ اب پورے معاملے کی جانچ پولیس کررہی ہے۔

    مسلم طبقے کو لے کر نفرت انگیز اعلانات اور اشتعال انگیز تقریروں کے بعد اب وسیم رضوی عرف جتیندر نارائن تیاگی کے خلاف کیس درج کیا گیا ہے۔ اُن کے ساتھ ہی دیگر لوگوں پر بھی الزام لگائے گئے ہیں۔ یہ کیس ہریدوار کوتوالی میں گل بہار نامی نوجوان نے درج کروایا ہے۔ اب پورے معاملے کی جانچ پولیس کررہی ہے۔

    مسلم طبقے کو لے کر نفرت انگیز اعلانات اور اشتعال انگیز تقریروں کے بعد اب وسیم رضوی عرف جتیندر نارائن تیاگی کے خلاف کیس درج کیا گیا ہے۔ اُن کے ساتھ ہی دیگر لوگوں پر بھی الزام لگائے گئے ہیں۔ یہ کیس ہریدوار کوتوالی میں گل بہار نامی نوجوان نے درج کروایا ہے۔ اب پورے معاملے کی جانچ پولیس کررہی ہے۔

    • Share this:
      ہریدوار: اُتراکھنڈ میں تین دن تک چلی دھرم سنسد کا معاملہ اب طول پکڑتا جارہا ہے۔ مسلم طبقے کو لے کر نفرت انگیز اعلانات اور اشتعال انگیز تقاریر کے بعد اب وسیم رضوی عرف جتیندر نارائن تیاگی کے خلاف کیس درج کیا گیا ہے۔ اُن کے ساتھ ہی دیگر لوگوں پر بھی الزام لگائے گئے ہیں۔ یہ کیس ہریدوار کوتوالی میں گل بہار نامی نوجوان نے درج کروایا ہے۔ اب پورے معاملے کی جانچ پولیس کررہی ہے۔

      دراصل 17 سے 19 دسمبر کو ہریدوار میں دھرم سنسد نامی اجلاس کا انعقاد کیا گیا تھا۔ اس میں مبینہ طور پر مسلمانوں کو لے کر متنازع تقاریر کرنے کا معاملہ اُٹھ رہا ہے۔ اس اجلاس میں کئی سنتوں کے علاوہ بی جے پی لیڈر اشونی اُپادھیائے بھی شامل ہوئے تھے۔ اس اجلاس کا ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہونے کے بعد آر ٹی آئی کارکن اور ترنمول کانگریس کے ساکیت گوکھلنے کی احتجاج درج کرایا ہے۔

      وہیں دوسری طرف اس معاملے کو لے کر ساکیت گوکھلے نے ٹوئٹ کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے جوالاپور پولیس اسٹیشن میں ایس ایچ او کو شکایت دی ہے۔ انہوں نے لکھا کہ 24 گھنٹے میں آرگنائزرس اور مقررین کے خلاف ایف آئی آر درج نہ کرنے پر مقدمہ جوڈیشل مجسٹریٹ کے سامنے دائر کیا جائے گا۔


      بتادیں کہ اس اجلاس کا انعقاد یتی نرسمہانند نے کروایا تھا۔ ہندو رکشھا سینا کے صدر سوامی پرمودانند گیری، سوامی آنند سوروپ، سادھوی اناپورنا و دیگر اس اجلاس میں اشتعال انگیز تقریریں کرنے والوں کے طور پر شامل ہوئے تھے۔ اجلاس میں شامل ہوئے بی جے پی لیڈر اشونی اُپادھیائے پر بھی الزام لگائے جارہے ہیں حالانکہ اشونی کا کہنا ہے کہ وہ صرف تیس منٹ پروگرام میں رُکے تھے۔

      کانگریس کے قومی ترجمان ڈاکٹر شمع محمد نے بھی اس پر اپنی ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے لکھا، منور فاروقی کو لگاتار اُن کے جوکس کے لئے سزا دی گئی، جو انہوں نے سنائے بھی نہیں تھے، لیکن دھرم سنسند کے اُن ارکان کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی گئی، جنہوں نے متنازع تقریریں دیں۔

      سورا بھاسکر نے آئی پی ایس اشوک کمار کو گڈ مارننگ کہتے ہوئے لکھا ہریدوار ہیٹ اسمبلی۔ اسی کے ساتھ ٹینس اسٹار مارٹینا نوراتیلووا نے بھی اس ویڈیو پر اپنا ری ایکشن دیا ہے۔ انہوں نے لکھا، ’یہ کیا ہورہا ہے؟’

      قومی، بین الاقوامی اور جموں وکشمیر کی تازہ ترین خبروں کےعلاوہ تعلیم و روزگار اور بزنس کی خبروں کے لیے نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں ۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: