ہریانہ میں ساتھ مل کر الیکشن لڑ سکتی ہیں کانگریس۔ بی ایس پی، مایاوتی سے ہڈا۔ شیلجہ نے کی ملاقات

ہریانہ میں بی ایس پی کا دشینت چوٹالہ کی جننائک جنتا پارٹی سے اتحاد تھا۔ حالانکہ کچھ ہی دن پہلے مایاوتی نے اپنا اتحاد جے جے پی سے ختم کر لیا۔

Sep 09, 2019 12:38 PM IST | Updated on: Sep 09, 2019 12:44 PM IST
ہریانہ میں ساتھ مل کر الیکشن لڑ سکتی ہیں کانگریس۔ بی ایس پی، مایاوتی سے ہڈا۔ شیلجہ نے کی ملاقات

بی ایس پی صدر مایاوتی: فائل فوٹو

چندی گڑھ ۔ ہریانہ اسمبلی انتخابات سے پہلے ایک بڑی خبر آ رہی ہے۔ ذرائع سے ملی جانکاری کے مطابق، آئندہ اسمبلی انتخابات میں کانگریس اور بہوجن سماج پارٹی ساتھ مل کر بی جے پی کو چیلنج دینے کی تیاری میں ہیں۔ اس کے لئے دونوں پارٹیوں کی بات چیت بھی شروع ہو گئی ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ ہریانہ ریاستی کانگریس کی نومنتخب صدر کماری شیلجہ نے بی ایس پی صدر مایاوتی سے ملاقات کی ہے۔ اس کے ساتھ ہی تشہیری کمیٹی کے صدر بھوپیندر سنگھ ہڈا بھی مایاوتی سے ملے ہیں۔

ہریانہ میں بی ایس پی کا دشینت چوٹالہ کی جننائک جنتا پارٹی سے اتحاد تھا۔ حالانکہ کچھ ہی دن پہلے مایاوتی نے اپنا اتحاد جے جے پی سے ختم کر لیا۔ 6 ستمبر کو ٹوئٹر پر اس کا اعلان کرتے ہوئے مایاوتی نے لکھا تھا کہ بی ایس پی ایک قومی پارٹی ہے اور سیٹوں کی تقسیم میں جے جے پی کا رویہ ٹھیک نہیں تھا ۔ اس لئے مقامی لیڈروں کے مشورے پر اتحاد ختم کیا جاتا ہے۔ یہ اتحاد ایک مہینہ بھی نہیں چلا تھا۔

Loading...

لوک سبھا الیکشن 2019 سے پہلے مایاوتی نے آئی این ایل ڈی سے اتحاد کیا تھا لیکن الیکشن سے ٹھیک پہلے انہوں نے اوم پرکاش چوٹالہ کی پارٹی سے اتحاد توڑ لیا۔ بعد میں بی جے پی سے الگ ہو کر نئی پارٹی بنانے والے راج کمار سینی سے بی ایس پی نے ہاتھ ملا لیا۔ لیکن الیکشن میں کوئی کامیابی نہیں ملنے پر یہ اتحاد بھی زیادہ دنوں تک نہیں چل سکا۔ اب چرچا ہے کہ مایاوتی کانگریس کے ساتھ مل کر اسمبلی الیکشن میں اپنی قسمت آزما سکتی ہیں۔

Loading...