نوٹ کی منسوخی سے قبل بی جے پی نے بہار سمیت کئی ریاستوں میں خریدی کروڑوں کی زمین: کانگریس کا سنگین الزام

نئی دہلی۔ کانگریس نے آج الزام لگایا کہ وزیر اعظم نریندر مودی کے نوٹوں کی منسوخی کے اعلان سے کچھ دن پہلے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے کروڑوں روپے بینکوں میں جمع کرائے اور کروڑوں روپے نقد دے کر زمین کی خریداری کی۔

Nov 25, 2016 03:35 PM IST | Updated on: Nov 25, 2016 03:39 PM IST
نوٹ کی منسوخی سے قبل بی جے پی نے بہار سمیت کئی ریاستوں میں خریدی کروڑوں کی زمین: کانگریس کا سنگین الزام

فائل فوٹو

نئی دہلی۔ کانگریس نے آج الزام لگایا کہ وزیر اعظم نریندر مودی کے نوٹوں کی منسوخی کے اعلان سے کچھ دن پہلے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے کروڑوں روپے بینکوں میں جمع کرائے اور کروڑوں روپے نقد دے کر زمین کی خریداری کی، جس سے واضح ہوتا ہے کہ کرنسی کی منسوخی کا منصوبہ لیک کیا گیا تھا۔ کانگریس مواصلات محکمہ کے سربراہ رنديپ سنگھ سرجےوالا، پارٹی رہنما سشمیتا دیو اور راجیو گوڑا نے یہاں پارلیمنٹ ہاؤس کے احاطے میں مشترکہ پریس کانفرنس میں بی جے پی کو بدعنوان پارٹی قرار دیا اور کہا کہ آٹھ نومبر کو نوٹ بندی کے اعلان سے کچھ وقت پہلے پارٹی نے کولکاتہ میں تین کروڑ80 لاکھ روپے بینک میں جمع کرائے۔ اس سے پہلے بہار سمیت کئی ریاستوں میں بی جے پی نے نقد میں کروڑوں روپے کی زمین خریدی۔ کانگریس لیڈروں نے کہا کہ بی جے پی بھلے ہی پروپیگنڈے کر رہی ہے کہ نوٹوں کی منسوخی کی اطلاع وزیر خزانہ تک کو نہیں دی گئی تھی، لیکن انہوں نے جس طرح سے زمین، زیورات اور بینک اکاؤنٹس میں نقد رقم کا استعمال کیا اس سے واضح ہے کہ منصوبہ بندی پہلے پارٹی صدر کو لیک کر دی گئی تھی۔

کانگریس رہنماؤں نے الزام لگایا کہ بی جے پی نے بہار کے لکھی سرائے، مهادےپورا، کٹیہار، کشن گنج، مدھوبنی وغیرہ مقامات پر کروڑوں روپے کی زمین پارٹی کے نام پر خریدی ہے۔ انہوں نے زمین کی خرید فروخت سے منسلک دستاویزات نامہ نگاروں کو دیتے ہوئے کہا کہ کٹیہار کے دالان میں 41.48 لاکھ روپے کی زمین 16 ستمبر کو خریدی گئی۔ اسی طرح سے مدھوبنی میں 74 لاکھ روپے اور کشن گنج میں 39 لاکھ روپے کی قیمت کی زمین خریدی گئی۔

کانگریس کے ترجمان نے سوال کیا کہ بی جے پی کے پاس یہ پیسہ کہاں سے آیا۔ انہوں نے کہا کہ پارٹی کے مرکزی اور ریاستی دفاتر کے اکاؤنٹ سے گزشتہ چھ ماہ کے دوران پیسے کا جو لین دین ہوا ہے اس کو عام کیا جانا چاہئے۔ انہوں نے اپوزیشن پر طنز کر رہے وزیر اعظم سے کہا کہ کالے دھن کے معاملے میں انہیں اپنی پارٹی کے اندر پھیلی بدعنوانی کو دیکھنا چاہئے۔

Loading...

Loading...