کانگریس کی کرناٹک یونٹ تحلیل، صدر اور کارگزار صدر کو رکھا گیا برقرار

کانگریس نے اپنی کرناٹک ریاستی یونٹ تحلیل کردی ہے۔ حالانکہ کانگریس کی جانب سے اس کی وجہ نہیں بتائی گئی ہے، لیکن اسے لوک سبھا الیکشن میں ملنے والی زبردست شکست سے جوڑکردیکھا جارہا ہے۔

Jun 19, 2019 03:56 PM IST | Updated on: Jun 19, 2019 04:15 PM IST
کانگریس کی کرناٹک یونٹ تحلیل، صدر اور کارگزار صدر کو رکھا گیا برقرار

کانگریس نے کرناٹک کی ریاستی یونٹ کو تحلیل کردیا ہے۔

لوک سبھا الیکشن میں کرناٹک میں مایوس کن کارکردگی کے بعد کانگریس نے بدھ کو پردیش کانگریس کمیٹی (پی سی سی) کو تحلیل کردیا۔ حالانکہ صدراورکارگزارصدر اپنے عہدے پر برقرار رہیں گے۔ پارٹی کے تنظیمی جنرل سکریٹری کے سی وینو گوپال کی طرف سے جاری بیان کے مطابق آل انڈیا کانگریس کمیٹی نے کرناٹک پردیش کانگریس کمیٹی کو تحلیل کردیا ہے اورصدراورکارگزارصدرکو برقرار رکھا گیا ہے۔

کانگریس نے اس قدم کی وجہ نہیں بتائی ہے، لیکن اسے لوک سبھا الیکشن میں پارٹی کی خراب کارکردگی سے جوڑکردیکھا جارہا ہے۔ واضح رہے کہ ریاست میں جے ڈی ایس کے ساتھ اتحاد میں ہونے کے باوجود کانگریس کرناٹک میں صرف ایک سیٹ جیت پائی ہے۔ دراصل کرناٹک میں حال کے دنوں میں تیزی سے الٹ پھیردیکھنے کو مل رہا ہے۔ اس سے قبل کانگریس لیڈراوررکن اسمبلی آرروشن بیگ کو پارٹی مخالف سرگرمیوں میں شامل ہونے کے الزام میں پارٹی سے معطل کردیا گیا تھا۔

Loading...

لوک سبھا الیکشن 2019 میں کانگریس کو زبردست شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا۔ شکست کے بعد روشن بیگ نے اپنی ہی پارٹی پرسوالیہ نشان کھڑے کردیئے تھے۔ انہوں نے کہا کہ الیکشن کے دوران کانگریس نے مسلمانوں کوووٹ بینک کے طورپراستعمال کیا۔ اس کے ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ مسلمانوں کے دل میں خوف پیدا کیا گیا اوراس خوف کی وجہ سے مسلمان ایک خاص نظریے پرکام کرتے ہیں۔

اس سے قبل روشن بیگ نے وینوگوپال کومسخرہ اورسدا رامیا کومتکبرقراردیا تھا۔ جس پرانہیں وجہ بتاؤ نوٹس جاری کی گئی تھی۔ تاہم روشن بیگ نے وجہ بتاونوٹس کونظرانداز کرتے ہوئے اس کاجواب نہ دینے کا فیصلہ کیا۔ انہوں نے کانگریس کے لیڈران اپنی نکتہ چینی تیزکرتے ہوئے دیگر لیڈران کوبھی نشانہ بنا رہے تھے۔ روشن بیگ نے صدرپردیش کانگریس دنیش گنڈوراؤکو بھی فلاپ ہیروقراردیا تھا۔

Loading...