امت شاہ پرکانگریس کا پلٹ وار، ہمارے ممبران اسمبلی کو خریدنے کےلئے رکھےتھے 4000 کروڑ: آنند شرما

کانگریس لیڈر آنند شرما نے بی جے پی پر پلٹ وار کرتے ہوئے کہا کہ بی جے پی نے کرناٹک میں تقریباً 6500 کروڑ روپئے خرچ کئے۔ تشہیر کے لئے اپنے ہر امیدوار کو 20-20 کروڑ روپئے دیئے۔ وہیں دوسری پارٹیوں کے ممبران اسمبلی کو خریدنے کے لئے 4 ہزار کروڑ روپئے کی تجویز بھی تھی۔ یہ پیسے کہاں سے آئے؟

May 21, 2018 10:15 PM IST | Updated on: May 21, 2018 10:15 PM IST
امت شاہ پرکانگریس کا پلٹ وار، ہمارے ممبران اسمبلی کو خریدنے کےلئے رکھےتھے 4000 کروڑ: آنند شرما

نئی دہلی: کرناٹک میں وزیراعلیٰ بننے کے دو دن کے اندر بی ایس یدی یورپا کے استعفیٰ دینے اور کانگریس جے ڈی ایس اتحاد کو لے کر بی جے پی کے قومی صدر امت شاہ نے کانگریس پر جم کر تنقید کی، جس کے بعد کانگریس نے بھی امت شاہ پر پلٹ وار کیا ہے۔

کانگریس ترجمان آنند شرما نے ہارس ٹریڈنگ پر پلٹ وار کرتے ہوئے کہا کہ ان لوگوں کو جمہوریت میں کتنا یقین ہے، یہ کرناٹک میں واضح ہوگیا ہے۔ بی جے پی نے کرناٹک میں تقریباً 6500 کروڑ روپئے خرچ کئے۔ تشہیر کے لئے اپنے ہر امیدوار کو 20-20 کروڑ روپئے دیئے۔ وہیں دوسری پارٹیوں کے ممبران اسمبلی کو خریدنے کے لئے 4 ہزار کروڑ روپئے کی تجویز بھی تھی۔ یہ پیسے کہاں سے آئے ہیں، اس کی جانچ ہونی چاہئے۔

Loading...

 

 

کانگریس لیڈر نے کہا کہ امت شاہ کہہ رہے ہیں کہ اگر ممبران ریزارٹ میں نہیں ہوتے تو نتیجہ کچھ مختلف ہوتا۔ کس طرح سے نتیجہ مختلف ہوتا؟ میں صرف مثال کے طور پر کہہ رہا ہوں کہ "کھسیانی بلّی کھمبا نوچے"۔

آنند شرما نے کہا کہ ریاست میں اقتدار حاصل کرنے کے لئے طاقت اور پیسہ اور پھر سرکاری ایجنسیوں کا استعمال کرنے کے لئے وزیراعظم نریندر مودی اور امت شاہ کو ملک کی عوام سے معافی مانگنی چاہئے۔

آئین کی دھجیاں اڑانے کے لئے معافی مانگیں مودی

آنند شرما نے کہاکہ آئینی ضابطوں اور اصولوں کی دھجیاں اڑانے کے لئے وزیراعظم مودی اور بی جے پی کے قومی صدر امت شاہ کو معافی مانگنی چاہئے۔ شرما نے الزام لگایا کہ یہ وزیراعظم نہیں بلکہ ایسے تشہیری وزیر ہیں، جن سے تشہیر میں مقابلہ کرنا مشکل ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہاکہ بی جے پی کے صدر کس مینڈیٹ کی بات کررہے ہیں؟ کانگریس کے خلاف بول رہے ہیں تو کانگریس کی سیٹ کم آنے پر اقتدار سے ہٹے، لیکن مینڈیٹ اتحاد کے

لئے تھا۔ کانگریس اور جے ڈی ایس پہلے بھی ساتھ رہ چکے ہیں۔

گزشتہ الیکشن کے مقابلے کانگریس کے ووٹ فیصد میں اضافہ ہوا

آنند شرما نے کہا کہ کانگریس کا ووٹ فیصد 2013 کے مقابلے بڑھا ہے۔ کیا بی جے پی والے اس پاپولر ووٹ کو صحیح نہیں مانتے؟ یہ کس قسم پر پاپولر ووٹ کو ماننے سے انکار کررہے ہیں۔

امت شاہ نے کیا کہا تھا؟

امت شاہ نے پریس کانفرنس میں کہا تھا کہ کرناٹک میں سدارمیا کے دوراقتدار میں 3700 کسانوں نے خود کشی کی۔ یہ سدارمیا حکومت کی ناکامی ہے۔ کرناٹک کی عوام نے ہمیں سب سے بڑی پارٹی کے طور پر منتخب کیا تھا۔ کرناٹک میں سدارمیا حکومت کے خلاف ووٹ دیا تھا۔ کانگریس کے خلاف کرناٹک کی عوام نے ووٹنگ کی تھی۔

انہوں نے یہ بھی کہاکہ کرناٹک میں کانگریس کی 122 سیٹ سے گھٹ کر 78 ہوگئی ہیں، ان کے نصف سے زیادہ وزرا الیکشن ہار گئے، ان کے وزیراعلیٰ تک کو شکست کا سامنا کرنا پڑا پھر بھی وہ جشن منارہے ہیں۔ کانگریس کے لیڈروں کو بتانا چاہئے کہ وہ کرناٹک میں کس بات کا جشن منارہے ہیں۔

شاہ نے مزید کہا کہ کرناٹک الیکشن میں کانگریس نے حد کردی۔ جے ڈی ایس نے عوامی مینڈیٹ کے خلاف جاکر کانگریس کے ساتھ اتحاد کیا۔ یہ ناپاک اتحاد ہے۔ شاہ نے کانگریس پر الزام لگاتے ہوئے کہا کہ ہم نے کبھی ہارس ٹریڈنگ میں یقین نہیں کیا۔ کانگریس کو اس بات کا جواب دینا چاہئے کہ انہوں نے ممبران اسمبلی کو فائیو اسٹار ہوٹل میں بند کرکے ان کے ساتھ کیا کیا؟

 

Loading...