உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ’Election Offer ختم ہونے سے پہلے پٹرول ٹینک کروالو فل‘ راہل گاندھی نے آخر کیوں کہی یہ بات؟

    Rahul Gandhi Tweet on Petrol-Diesel price: کانگریس ہمیشہ سے بی جے پی پر الزام لگاتی رہی ہے کہ وہ انتخابی فائدے کے لیے الیکشن کے دوران پیٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں اضافے کے فیصلے کو ٹال دیتی ہے اور الیکشن ختم ہونے کے بعد دوبارہ مہنگائی بڑھانے کا عمل شروع کر دیتی ہے۔

    Rahul Gandhi Tweet on Petrol-Diesel price: کانگریس ہمیشہ سے بی جے پی پر الزام لگاتی رہی ہے کہ وہ انتخابی فائدے کے لیے الیکشن کے دوران پیٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں اضافے کے فیصلے کو ٹال دیتی ہے اور الیکشن ختم ہونے کے بعد دوبارہ مہنگائی بڑھانے کا عمل شروع کر دیتی ہے۔

    Rahul Gandhi Tweet on Petrol-Diesel price: کانگریس ہمیشہ سے بی جے پی پر الزام لگاتی رہی ہے کہ وہ انتخابی فائدے کے لیے الیکشن کے دوران پیٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں اضافے کے فیصلے کو ٹال دیتی ہے اور الیکشن ختم ہونے کے بعد دوبارہ مہنگائی بڑھانے کا عمل شروع کر دیتی ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی:کانگریس کے رکن پارلیمنٹ راہول گاندھی(Rahul Gandhi) مودی حکومت پر حملہ کرنے کا کوئی موقع نہیں چھوڑتے ہیں۔ انہوں نے ہفتہ کو ایک ٹویٹ کرتے ہوئے پٹرول-ڈیزل کی قیمتوں(Petrol-Diesel Price) پر طنز کیا۔ جس میں راہل گاندھی نے ملک کے عوام سے اپیل کی ہے کہ وہ اپنی گاڑیوں کے پٹرول ٹینکوں کو بھر لیں کیونکہ انتخابات ختم ہونے والے ہیں اور مرکزی حکومت(Central Government) پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں اضافہ کرنے جا رہی ہے۔


      کانگریس کے رکن پارلیمنٹ راہول گاندھی نے ٹوئٹ کیا اور لکھا کہ فوری طور پر پٹرول ٹینک بھرو۔ مودی حکومت کی انتخابی پیشکش ختم ہونے جارہی ہے۔ دراصل، کانگریس ہمیشہ سے بی جے پی پر الزام لگاتی رہی ہے کہ وہ انتخابی فائدے کے لیے الیکشن کے دوران پیٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں اضافے کے فیصلے کو ٹال دیتی ہے اور الیکشن ختم ہونے کے بعد دوبارہ مہنگائی بڑھانے کا عمل شروع کر دیتی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Russia-Ukraine Crisis:جنگ کی وجہ سے مہنگی ہوں گی دوائیں!فارماسیکٹراورانڈسٹری بحران کاشکار

      اترپردیش میں اسمبلی انتخابات کے آخری مرحلے کے لیے مہم ہفتہ کو ختم ہوگئی۔ شام 5 بجے کے قریب راہل گاندھی نے ٹویٹ کرکے مرکزی حکومت پر حملہ کیا۔ یوپی میں آخری مرحلے کے لیے ووٹنگ 7 مارچ کو ہوگی اور اتر پردیش، پنجاب، اتراکھنڈ، گوا اور منی پور کے انتخابات کے نتائج 10 مارچ کو سامنے آئیں گے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Milk Price Hike: امول کے بعد اب مدر ڈیری نے بھی بڑھائے دودھ کے دام، جانئے نئی قیمت

      دراصل روس اور یوکرین کے درمیان جنگ کی وجہ سے خام تیل کی قیمتوں میں زبردست اضافہ ہوا ہے۔ عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمت 117 ڈالر فی بیرل تک پہنچ گئی ہے۔ جس کی وجہ سے تیل کمپنیوں پر پیٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں اضافے کا دباؤ بڑھتا جا رہا ہے۔ ایسے میں اس بات کا امکان ہے کہ اسمبلی انتخابات کے بعد پٹرول اور ڈیزل کی قیمتیں بڑھ سکتی ہیں۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: