عشرت جہاں معاملے میں سونیا - راہل نے پی چدمبرم کو ہدایات نہیں دیں: کانگریس

نئی دہلی۔ کانگریس نے عشرت جہاں معاملے میں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ پارٹی صدر سونیا گاندھی اور نائب صدر راہل گاندھی نے اس ضمن میں اس وقت کے وزیر داخلہ پی چدمبرم کو نہ تو کوئی ہدایت دی تھی اور نہ ہی مداخلت کی تھی۔

Apr 21, 2016 07:55 AM IST | Updated on: Apr 21, 2016 07:55 AM IST
عشرت جہاں معاملے میں سونیا - راہل نے پی چدمبرم کو ہدایات نہیں دیں: کانگریس

نئی دہلی۔  کانگریس نے عشرت جہاں معاملے میں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے  کہا کہ پارٹی صدر سونیا گاندھی اور نائب صدر راہل گاندھی نے اس ضمن میں اس وقت کے وزیر داخلہ پی چدمبرم کو نہ تو کوئی ہدایت دی تھی اور نہ ہی مداخلت کی تھی۔ کانگریس کے مواصلات کے سربراہ رنديپ سرجےوالا نے یہاں پارٹی کی باقاعدہ پریس بریفنگ میں کہا کہ بی جے پی کے صدر امت شاہ اور وزیر اعظم نریندر مودی عشرت جہاں فرضی تصادم کے معاملے کی احمد آباد میں جاری عدالتی عمل کو پٹري سے اتارنا چاہتے ہیں اس لئے بی جے پی کے لیڈر بے تکے ، بے بنیاد اور بدنیتی پر مبنی الزام لگا رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ محترمہ گاندھی اور مسٹر گاندھی نے عشرت جہاں کیس سمیت کسی انتظامی معاملے میں کبھی بھی کسی سرکاری افسر یا اس وقت کے وزیر داخلہ پی چدمبرم کو کوئی ہدایت یا مشورہ نہیں دیا تھا اور نہ ہی کبھی کسی معاملے میں مداخلت کی تھی۔ مسٹر سرجےوالا نے کہا کہ اس طرح کی کوشش سے حقیقت نہیں دبائی جا سکتی۔ بی جے پی کو ملک کے سامنے عشرت جہاں فرضی تصادم معاملے کی احمد آباد میں جاری عدالتی عمل کے بارے میں بتانا چاہئے۔ مرکزی وزیر اور بی جے پی کی سینئر رہنما نرملا سیتا رمن اور ترجمان سنبت پاترا نے کل کہا تھا کہ عشرت جہاں معاملے میں مسز گاندھی اور مسٹر گاندھی کے اشارے پر حلف نامہ بدلہ گیا تھا۔

Loading...

Loading...