جموں وکشمیر: کانگریس کےترجمان اورریاستی صدرکوپولیس نے حراست میں لیا، کانگریس نے مودی حکومت پرکی تنقید

کہا جارہا ہےکہ کشمیرمیں حالات بہتر ہورہے ہیں اورپیرسے اسکول اورکالج کھولے جائیں گے۔ جب اس بارے میں کانگریس ترجمان ابھیشیک منوسنگھوی سے پوچھا گیا توانہوں نےکہا کہ یہ جملہ ملک ایک ہفتے سے سن رہا ہے۔

Aug 16, 2019 08:40 PM IST | Updated on: Aug 16, 2019 11:49 PM IST
جموں وکشمیر: کانگریس کےترجمان اورریاستی صدرکوپولیس نے حراست میں لیا، کانگریس نے مودی حکومت پرکی تنقید

جموں وکشمیرمیں میڈیا سے بات چیت کے دوران حراست میں لئے گئےکانگریس کے چیف ترجمان۔

جموں وکشمیر کانگریس کے چیف ترجمان رویندرشرما اورریاستی انچارج غلام احمد میر کوپولیس نے حراست میں لیا ہے۔ کانگریس ترجمان کواس وقت حراست میں لیا گیا، جب وہ میڈیا سے بات کررہے تھے۔ واضح رہے کہ جموں وکشمیرمیں دفعہ 370 ہٹائے جانے کے بعد کرفیونافذ کیا گیا ہےاوراپوزیشن کے کئی بڑے لیڈروں کوحراست میں رکھا گیا ہے۔ اس کے ساتھ ہی کشمیرمیں ٹیلیفون اورانٹرنیٹ جیسی خدمات بھی بند ہیں۔ حکومت کی طرف سے وادی میں امن وامان کی صورتحال کوبہتر بنائے رکھنےکے لئےاقدامات کئےگئے ہیں۔

جموں وکشمیرکی اس صورتحال کو لے کرکانگریس مسلسل مودی حکومت پرحملہ بول رہی ہے۔ وہیں کہا جارہا ہے کہ کشمیرمیں حالات بہتر ہورہے ہیں اورپیرسے اسکول اورکالج کھولے جائیں گے۔ جب اس بارے میں کانگریس ترجمان ابھیشیک منوسنگھوی سے پوچھا گیا توانہوں نے کہا کہ یہ جملہ ملک ایک ہفتے سے سن رہا ہے۔ آج چیف سکریٹری نے کہا 'جب ہوگا تب بات کریں گے'۔

Loading...

کانگریس نے ریاستی صدرغلام احمد میر اورترجمان رویندر شرما کو حراست میں لئے جانے پر کانگریس نے سخت تنقید کی ہے۔ کانگریس نے اس کا ویڈیو ٹوئٹرپراپلوڈ کیا ہے۔ اس پرراہل گاندھی نے بھی ردعمل ظاہرکرتےہوئے کہا کہ میں اس گرفتاری کی مذمت کرتا ہوں۔ حکومت نے جمہوریت کا گلا گھونٹ دیا ہے، یہ پاگل پن کب ختم ہوگا۔

نیوکلیئرپالیسی کے بارے میں ملک کو بتانا چاہئے

وزیردفاع راجناتھ سنگھ نے جمعہ کو بڑا بیان دیتے ہوئے کہا کہ ہندوستان حالات کو دیکھتے ہوئے اپنے جوہری ہتھیاروں کی پالیسی تبدیل کرسکتا ہے۔ اس پرکانگریس ترجمان نے کہا کہ پالیسی یا قومی تحفظ کے سوال پر اگرپالیسی تبدیل ہوئی ہے توملک کوبتانا چاہئے کہ کیا پالیسی ہے۔ جوبھی ہوگا ہم حکومت کےساتھ کھڑے ہیں، اس کا استقبال کریں گے۔

Loading...