உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    CWC: پارٹی کو مضبوط کرنے کیلئے کوئی جادو کی چھری نہیں، سبھی کو کام کرنا ہے: سونیا گاندھی

    CWC: پارٹی کو مضبوط کرنے کیلئے کوئی جادو کی چھری نہیں، سبھی کو کام کرنا ہے: سونیا گاندھی ۔ فائل فوٹو ۔

    CWC: پارٹی کو مضبوط کرنے کیلئے کوئی جادو کی چھری نہیں، سبھی کو کام کرنا ہے: سونیا گاندھی ۔ فائل فوٹو ۔

    کانگریس صدر سونیا گاندھی نے پیر کو پارٹی لیڈروں سے اپیل کی کہ پارٹی کا قرض چکانے کا وقت آگیا ہے اور ایسی صورتحال میں انہیں پارٹی کو دوبارہ مضبوط کرنے کے لیے بے لوث اور ڈسپلن کے ساتھ کام کرنا ہوگا۔

    • Share this:
      نئی دہلی: کانگریس صدر سونیا گاندھی نے پیر کو پارٹی لیڈروں سے اپیل کی کہ پارٹی کا قرض چکانے کا وقت آگیا ہے اور ایسی صورتحال میں انہیں پارٹی کو دوبارہ مضبوط کرنے کے لیے بے لوث اور ڈسپلن کے ساتھ کام کرنا ہوگا۔ کیونکہ پارٹی کو مضبوط کرنے کیلئے جادو کی کوئی چھڑی نہیں ہے ۔ کانگریس ورکنگ کمیٹی (سی ڈبلیو سی) کی میٹنگ میں انہوں نے یہ بھی کہا کہ ادے پور میں 13-15 مئی کو ہونے والا 'نوسنکلپ چنتن شیور' محض رسم کی ادائیگی نہیں ہونا چاہیے، بلکہ یہ پارٹی کی تنظیم نو کا عکاس ہونا چاہئے۔

      انہوں نے کہا کہ اس شیور میں تقریباً 400 لوگ شامل ہو رہے ہیں، جن میں سے زیادہ تر تنظیم میں کسی نہ کسی عہدے پر ہیں یا پھر تنظیم یا حکومت میں عہدوں پر فائز رہ چکے ہیں ۔ ہم نے کوشش کی ہے کہ اس شیور میں متوازن نمائندگی ہو، ہر پہلو سے توازن ہو ۔

       

      یہ بھی پڑھئے : سری لنکا کے PM مہندا راج پکشے کا استعفی، ملک بھر میں کرفیو، پرتشدد جھڑپ میں ایک ممبر پارلیمنٹ کی موت


      سونیا گاندھی نے اس بات کا بھی تذکرہ کیا کہ سیاست، سماجی انصاف اور بااختیار بنانے، معیشت، تنظیم، کسان اور زراعت اور نوجوانوں سے متعلق امور پر 6 گروپوں میں تبادلہ خیال کیا جائے گا ۔

      انہوں نے کہا کہ کوئی جادو کی چھڑی نہیں ہے۔ بے لوث کام، ڈسپلن اور مستقل اجتماعی مقصد کے جذبے سے ہم استقامت اور لچک کا مظاہرہ کر سکتے ہیں۔ پارٹی نے ہمیشہ ہم سب کا بھلا کیا ہے، اب وقت آگیا ہے کہ قرض کو پوری طرح سے چکایا جائے ۔

       

      یہ بھی پڑھئے : شاہین باغ میں بلڈوزر روکنے سے متعلق CPI (M) کی عرضی خارج، سپریم کورٹ نے کہا- ہم صرف متاثرین کی بات سنیں گے، ہائی کورٹ جاو


      سونیا گاندھی نے یہ بھی کہا کہ ہماری پارٹی کے فورم پر خود کی تنقید کی یقینی طور پر ضرورت ہے۔ لیکن اسے اس طرح نہیں کی جانی چاہئے کہ اس سے اعتماد اور حوصلے ٹوٹ جائیں اور مایوسی کی فضا پیدا ہو ۔

      انہوں نے زور دے کر کہا کہ چنتن شیور کو صرف ایک رسم کی ادائیگی نہیں ہونا چاہیے۔ میں اس کو لے کر پرعزم ہوں کہ اس میں تنظیم کی تنظیم نو کی عکاسی ہونی چاہئے تاکہ نظریاتی، انتخابی اور انتظامی چیلنجوں کا مقابلہ کیا جا سکے۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: