ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

شرمک ٹرینوں کےلئے اب ضروری نہیں ہوگی ریاستوں کی رضامندی، وزارت داخلہ نے جاری کی نئی گائڈ لائن

مائیگرینٹ مزدوروں کے لئے جاری کئے گئے شرمک ٹرینوں کے نئے اسٹینڈرڈ آپریٹنگ پروسیزر (standard operating procedures-SOP) کے مطابق، اب ان ٹرینوں کے لئے ریاستوں کے اجازت والے پوائنٹ کو ہٹا دیا گیا ہے۔

  • Share this:
شرمک ٹرینوں کےلئے اب ضروری نہیں ہوگی ریاستوں کی رضامندی، وزارت داخلہ نے جاری کی نئی گائڈ لائن
شرمک ٹرینوں کےلئے اب ضروری نہیں ہوگی ریاستوں کی رضامندی

نئی دہلی: مائیگرینٹ مزدوروں کے لئے جاری کئے گئے شرمک ٹرینوں کے نئے اسٹینڈرڈ آپریٹنگ پروسیزر (standard operating procedures-SOP) کے مطابق، اب ان ٹرینوں کے لئے ریاستوں کی رضا مندی والے پوائنٹ کو ہٹا دیا گیا ہے۔ مختلف ریاستوں میں پھنسے دوسری ریاستوں کے مزدوروں کی آمدورفت کو لے کر جاری کی گئی نئی ایس او پی میں مرکزی وزارت داخلہ نے کہا، شرمک ٹرینوں (shramik trains) کی آمدورفت کی اجازت وزارت داخلہ سے بات چیت کی بنیاد پر وزارت ریلوے دے گا۔


وزارت ریل (Ministry of Railways) کی طرف سے دو مئی کو جاری گائڈ لائن، جس میں کہا گیا تھا کہ شرمک ٹرینیں (Shramik Trains) چلائے جانے کے لئے متعلقہ ریاستوں کی اجازت  طلب کی جائے گی، یہ قدم اس گائڈ لائن سے الگ ہے۔ پہلے ایس او پی میں کہا گیا تھا، ’اگر پھنسے ہوئے اشخاص کا ایک گروپ ایک ریاست / مرکز کے زیر انتظام والے ریاستوں سے دوسری ریاستوں سے جانا چاہتا ہے، تو جو ریاست انہیں بھیج رہا ہے اور جہاں سے وہ جارہے ہیں، دونوں ایک دوسرے سے تبادلہ خیال کر سکتے ہیں اور وزارت ریل کے ذریعہ نقل و حمل کے لئے اتفاق کرسکتے ہیں۔


مائیگرینٹ مزدوروں کے لئے جاری کئے گئے شرمک ٹرینوں کے نئے اسٹینڈرڈ آپریٹنگ پروسیزر کے مطابق، اب ان ٹرینوں کے لئے ریاستوں کی رضا مندی والے پوائنٹ کو ہٹا دیا گیا ہے۔
مائیگرینٹ مزدوروں کے لئے جاری کئے گئے شرمک ٹرینوں کے نئے اسٹینڈرڈ آپریٹنگ پروسیزر کے مطابق، اب ان ٹرینوں کے لئے ریاستوں کی رضا مندی والے پوائنٹ کو ہٹا دیا گیا ہے۔


پہلے ان ریاستوں کی رضامندی تھی ضروری

اس میں کہا گیا تھا، ’جس ریاست میں وہ (مائیگرینٹ مزدور) جا رہے ہیں، ان کی رضامندی، جو ریاست بھیج رہی ہے، اسے لینی چاہئے اور ٹرین سے روانہ ہونے سے پہلے ریلوے کو اس کی ایک کاپی دینی ہوگی۔ اب وزارت داخلہ کی طرف سے منگل کو جاری نئی گائڈ لائن کے کسی بھی پوائنٹ کو ہٹا دیا گیا ہے اور کہا گیا ہے کہ نوڈل افسر پھنسے ہوئے مزدوروں کو ریسیو کرنے اور بھیجنے کے لئے ضروری اقدامات کریں گے۔ ساتھ ہی یہ بھی کہا گیا کہ ریلوے اسٹاپیج (ٹرین ٹھہرنے کا مقام) اور آخری اسٹیشن سمیت ٹرین شیڈول کو حتمی شکل دے گا۔

ممتا بنرجی حکومت نے نہیں دی تھی منظوری

وزارت ریل کے افسران نے اس کی تصدیق کی ہے کہ مزدور جس ریاست میں جارہے ہیں، اس کی رضامندی اب ضروری نہیں ہے۔ وہ ریاست جہاں سے خصوصی ٹرینیں چلیں گی، ریلوے کو سفر کی فہرست دیں گی۔ اس سے قبل وزیر داخلہ امت شاہ نے مغربی بنگال کی وزیراعلیٰ ممتا بنرجی کو لکھا تھا کہ ریاست میں لوٹنے کے خواہشمند مزدور پھنسے ہوئے ہیں کیونکہ ممتا بنرجی کی حکومت نے مزدوروں کی واپسی کے لئے اپنی رضامندی نہیں دی تھی۔
First published: May 19, 2020 09:22 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading