عصمت دری کے فرار ملزم نتیانند نے بنایا اپنا ملک، نام رکھا ’کیلاسا‘، قرار دیا سب سے بڑا ہندو راشٹر

میڈیا ذرائع کے مطابق، نتیانند نے جنوبی امریکہ میں ایکواڈور میں ایک جزیرہ خریدا ہے اور اسے ایک آزاد اور ’ نیا ملک‘ کہنا شروع کیا ہے۔

Dec 04, 2019 01:24 PM IST | Updated on: Dec 04, 2019 01:35 PM IST
عصمت دری کے فرار ملزم نتیانند نے بنایا اپنا ملک، نام رکھا ’کیلاسا‘، قرار دیا سب سے بڑا ہندو راشٹر

بابا نتیانند: فائل فوٹو

بنگلورو۔ متنازعہ تانترک نتیانند بھلے ہی اپنے خلاف کرناٹک میں درج عصمت دری کے ایک معاملہ سے خود کو بچانے کے لئے بغیر پاسپورٹ کے ہندوستان سے فرار ہوا ہو، لیکن اس نے اب ایک ناقابل یقین کارنامہ انجام دے دیا ہے۔ اس نے خود کا ایک پورا ملک آباد کر لیا ہے۔ اس نے اس کا نام رکھا ہے ’ کیلاسا‘۔ اب اس کے پاس اس کا خود کا ’ پاسپورٹ‘ بھی ہے۔

نتیانند نے اپنے نئے ’ ملک‘ کی ایک ویب سائٹ بھی لانچ کی ہے۔ اس میں اسے روئے زمین پر ہندوؤں کا عظیم ملک بتایا گیا ہے۔ میڈیا ذرائع کے مطابق، نتیانند نے جنوبی امریکہ میں ایکواڈور میں ایک جزیرہ خریدا ہے اور اسے ایک آزاد اور ’ نیا ملک‘ کہنا شروع کیا ہے۔

Loading...

اس کی ویب سائٹ پر دعویٰ کیا گیا ہے ’’ کیلاسا بغیر سرحدوں کا ایک ملک ہے جسے دنیا بھر سے بے دخل کئے گئے ہندوؤں نے بسایا ہے۔ جنہوں نے اپنے ہی ملکوں میں مستند طور پر ہندو مذہب کی پریکٹس کرنے کا حق کھو دیا ہے‘‘۔ اس ملک کا اپنا ایک ’ پاسپورٹ‘ ہے اور نتیانند نے پہلے ہی اس کا ایک آن لائن نمونہ بھی ڈالا ہے۔ اس کے علاوہ ویب سائٹ پر اس ملک (کیلاسا) میں ملنے والی سہولیات کے ساتھ ساتھ  اس کی خاصیتوں کے بارے میں بھی تفصیل دی گئی ہے۔

نتیانند اب لوگوں کو اپنے ’ ملک‘ کا شہری بننے کے لئے مدعو کر رہا ہے۔ ساتھ ہی اسے چلانے کے لئے وہ لوگوں سے عطیہ بھی مانگ رہا ہے۔

تمل ناڈو کا رہنے والا ہے نتیانند، عصمت دری کیس کا ہے ملزم

نتیانند جس کا اصلی نام راج شیکھرن ہے، وہ تمل ناڈو کا رہنے والا ہے۔ وہ سال 2000 میں بنگلورو کے پاس ایک آشرم بنانے کے بعد بااثر شخص ہو گیا تھا۔ 2010 میں نتیانند اس وقت خبروں میں آیا تھا جب اس کا ایک اداکارہ کے ساتھ قابل اعتراض حالت میں ویڈیو وائرل ہو گیا تھا۔ بعد میں اس پر عصمت دری کا الزام لگا تھا اور اسے گرفتار کر لیا گیا تھا۔ اس کیس کے علاوہ ریپ کے ایک دیگر کیس میں بھی اس پر فرد جرم داخل کی گئی تھی۔

ڈی پی ستیش کی رپورٹ

Loading...