உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مجلس اتحاد المسلمین کے سربراہ اسدالدین اویسی کی سنبھل تقریب سے پہلے ہی ایک پوسٹر سے شروع ہوگیا تنازعہ؟

    مجلس اتحاد المسلمین کے سربراہ اسدالدین اویسی کی سنبھل تقریب سے پہلے ہی ایک پوسٹر سے شروع ہوگیا تنازعہ؟

    مجلس اتحاد المسلمین کے سربراہ اسدالدین اویسی کی سنبھل تقریب سے پہلے ہی ایک پوسٹر سے شروع ہوگیا تنازعہ؟

    اترپردیش کے سنبھل (Sambhal) ضلع میں آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین (AIMIM) کے سربراہ اور رکن پارلیمنٹ اسدالدین اویسی (Asaduddin Owaisi) کی عوامی تقریب کے لئے پوسٹر میں سنبھل کو ’غازیوں کی سرزمین‘ بتائے جانے پر تنازعہ کھڑا ہوگیا ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      سنبھل: اترپردیش کے سنبھل (Sambhal) ضلع میں آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین (AIMIM) کے سربراہ اور رکن پارلیمنٹ اسدالدین اویسی (Asaduddin Owaisi) کی عوامی تقریب کے لئے پوسٹر میں سنبھل کو ’غازیوں کی سرزمین‘ بتائے جانے پر تنازعہ کھڑا ہوگیا ہے۔ اس عوامی جلسے کے لئے جو پوسٹر لگائے گئے ہیں، ان میں سنبھل کو ’غازیوں کی سرزمین‘ لکھا گیا ہے۔ اس پر تنازعہ کھڑا ہوگیا ہے۔ بی جے پی نے ان پوسٹروں پر سخت اعتراض ظاہر کیا ہے، جس کے سبب وہ پوسٹر ہٹا دیئے گئے ہیں۔

      بی جے پی کے مغربی اترپردیش کے علاقائی نائب صدر راجیش سنگھل نے ان پوسٹروں پر کہا، ’سنبھل کبھی غازیوں کی سرزمین نہیں رہی۔ یہ اویسی کا انتخابی اسٹنٹ ہے۔ ہم ان کے منصوبوں کو کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔ ہندوستان کا کوئی بھی شہر غازیوں کا نہیں رہا ہے اور نہ ہی ہم ہونے دیں گے‘۔

       عوامی جلسے کے لئے جو پوسٹر لگائے گئے ہیں، ان میں سنبھل کو ’غازیوں کی سرزمین‘ لکھا گیا ہے۔ اس پر تنازعہ کھڑا ہوگیا ہے۔ بی جے پی نے ان پوسٹروں پر سخت اعتراض ظاہر کیا ہے، جس کے سبب وہ پوسٹر ہٹا دیئے گئے ہیں۔
      عوامی جلسے کے لئے جو پوسٹر لگائے گئے ہیں، ان میں سنبھل کو ’غازیوں کی سرزمین‘ لکھا گیا ہے۔ اس پر تنازعہ کھڑا ہوگیا ہے۔ بی جے پی نے ان پوسٹروں پر سخت اعتراض ظاہر کیا ہے، جس کے سبب وہ پوسٹر ہٹا دیئے گئے ہیں۔


      بی جے پی لیڈر راجیش سنگھل نے کہا، ’سنبھل ایک مشہور شہر ہے۔ پرانوں میں سنبھل کو لے کر کلک اوتار کا ذکر ہے، لیکن اگر قرآن میں سنبھل کو غازیوں کی سرزمین بتایا گیا ہو تو میں سیاست چھوڑ دوں گا‘۔

      واضح رہے کہ آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین (اے آئی ایم آئی ایم) پہلی بار اترپردیش کے اسمبلی انتخابات میں اترنے جا رہی ہے۔ پارٹی نے ریاست کی 100 سیٹوں پر الیکشن لڑنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس کے لئے پارٹی سربراہ اسدالدین اویسی انتہائی سرگرم ہیں اور ریاست میں جگہ جگہ عوامی جلسے کا انعقاد کر رہے ہیں۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: