ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

راجدھانی بھوپال میں بھی کورونا کرفیو کا نفاذ، 19 اپریل تک نافذ رہیں گی پابندیاں

مدھیہ پردیش میں کورونا کے بڑھتے قہر کے بیچ راجدھانی بھوپال میں بھی کورونا کرفیو کا نفاذ کردیاگیا ہے۔ کورونا کا کرفیو کا نفاذ 12 اپریل کی شب 9 بجے سے 19 اپریل کی صبح 6 بجے تک جاری رہے گا۔

  • Share this:
راجدھانی بھوپال میں بھی کورونا کرفیو کا نفاذ، 19 اپریل تک نافذ رہیں گی پابندیاں
راجدھانی بھوپال میں بھی کورونا کرفیو کا نفاذ، 19 اپریل تک نافذ رہیں گی پابندیاں

بھوپال: مدھیہ پردیش میں کورونا کے بڑھتے قہر کے بیچ راجدھانی بھوپال میں بھی کورونا کرفیو کا نفاذ کردیاگیا ہے۔ کورونا کا کرفیو کا نفاذ 12 اپریل کی شب 9 بجے سے 19 اپریل کی صبح 6  بجے تک جاری رہے گا۔ واضح رہے کہ مدھیہ پردیش کی راجدھانی بھوپال کے کولار علاقہ کے سات وارڈوں میں پہلے سے جمعہ کی شام 6 بجے سے 19 اپریل کی صبح 6 بجے تک کے لئے لاک ڈاؤن کا نفاذ جاری ہے۔ اس کے علاوہ مدھیہ پردیش کے اندور، اجین، رتلام، جبل پور سمیت 17 شہروں میں حکومت کے ذریعہ لاک ڈاؤن کا نفاد پہلے ہی کیا جا چکا ہے۔


مدھیہ پردیش کے وزیر برائے میڈیکل ایجوکیشن وشواس سارنگ جہاں کورونا کی چین کو توڑنے کے لئے کورونا کرفیو کو ضروری قرار دیتے ہیں۔ وہیں مدھیہ پردیش نے حکومت کے فیصلہ کو لاک ڈاؤن اور کورنا کرفیو کے بیچ عوام کو گمراہ کرنے والا قار دیا ہے۔ مدھیہ پردیش میں کورونا کے ایکٹو معاملوں کی تعداد جہاں 38 ہزارکو تجاوز کرگئی ہے۔ وہیں 24 گھنٹے میں کورونا 6 ہزار 489 نئے معاملے درج کئے گئے ہیں۔ راجدھانی میں کورونا کے بڑھتے معاملوں کو لیکر وزیر اعلی شیوراج سنگھ کی صدارت میں کرائسس مینجمنٹ کمیٹی کی میٹنگ کا انعقاد کیا گیا۔ میٹنگ کے بعد راجدھانی بھوپال میں بھی آج سے 19 اپریل کی صبح 6 بجے تک کورونا کرفیو کے نفاذ کا فیصلہ کیا گیا۔



مدھیہ پردیش کے وزیر برائے میڈیکل ایجوکیشن وشواس سارنگ کہتے ہیں کہ کرائسس مینجمنٹ کمیٹی، سماجی تنظیموں اور مذہبی رہنماؤں سے میٹنگ کرنے کے بعد راجدھانی میں کورونا کرفیو کے نفاذ کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ کورونا کرفیو میں دفاتر میں آنے جانے والوں کی چھوٹ رہے گی، اسپتال، نرسنگ ہوم، میڈیکل انشورنس کمنیز نیز طبی سہولیات کے دیگر ادارے، کیرانہ دکان، ہوم ڈیلوریپیٹرول، پمپ، بینک، اے ٹی ایم، صنعتی ادارے، مال درآمد و برآمد،ملازمین کی آمدورفت، ٹیلی کمیونی کیشن، بجلی سپلائی، رسوئی گیس، دودھ سپلائی، سرکاری دفاتر، زراعتتی ادارے، امتحان مراکز، امتحان کے لئے طلبا آمدو رفت،کورونا ٹیکہ میں شریک کرنے والے لوگ، بس اسٹینڈ، ریلوے اسٹیشن اور ایرپورٹ میں آنے جانے کی چھوٹ رہے گی۔ یہ لاک ڈاؤن نہیں بلکہ کورونا کرفیو ہے اور ہمارا یقین ہے کہ ہم اس کے ذریعہ ہم کورونا کی چین کو توڑنے میں کامیاب ہوں گے۔
وہیں کانگریس نے حکومت کے فیصلہ کو گھبراہٹ کے فیصلے سے تعبیر کیا ہے۔ مدھیہ پردیش کانگریس میڈیا سیل کے نائب صدر بھوپندر گپتاکہتے ہیں کہ حکومت کہیں پر لاک ڈاؤن کی بات کرتی ہے تو کہیں پر کورونا کرفیو کی بات کرتی ہے اور اپنی ناکامی کو چھپانے کے لئے ناموں سے عوام کو گمراہ کررہی ہے۔ سچ یہ ہے کہ ایک سال میں حکومت کورونا کے نام پر صرف عیش کرتی رہی ہے اور اس کی سزا عوام کو مل رہی ہے۔ اسپتالوں میں دواؤں اور آکسیجن کا فقدان ہے،اسپتالوں میں بیڈ نہیں اور شمشان گھاٹ و قربستان میں آخری رسومات کے لئے جگہ نہیں ہے اور خود بی جے پی کے سینئر لیڈر اجے وشنوئی بھری میٹنگ میں کہا ہے کہ سرکار موت کے آنکڑی چھپا رہی ہے اور شیوراج سنگھ بیان پر بیان دے رہے ہیں۔ حکومت کو چاہئے کہ ٹیسٹنگ کو بڑھانے کے ساتھ مریضوں کے ٹریٹمنٹ پر فوکس کرے، تبھی ہم کورونا کی چین توڑنے میں کامیاب ہوں گے اور مدھیہ پردیش کی عوام کو وبائی بیماری سے بچا سکیں گے۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Apr 12, 2021 11:08 PM IST