ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

میرٹھ : کورونا وائرس کے خوف کا معمولات زندگی پر اثر ، پبلک ٹرانسپورٹ اور روزگار بھی متاثر

کورونا کے خطرے کو پیش نظر رکھتے ہوئے انتظامیہ کی جانب سے ایڈوائزری جاری کی گئی ہے اور احتیاطی اقدامات بھی کیے جا رہے ہیں ۔ شہر کے بس اڈوں پر آنے اور جانے والی بسوں کو سیںیٹائز بھی کیا جا رہا ہے ۔

  • Share this:
میرٹھ : کورونا وائرس کے خوف کا معمولات زندگی پر اثر ، پبلک ٹرانسپورٹ اور روزگار بھی متاثر
میرٹھ : کورونا وائرس کے خوف کا معمولات زندگی پر اثر ، پبلک ٹرانسپورٹ اور روزگار بھی متاثر

کورونا وائرس کے بڑھتے خطرے نے دہلی این سی آر علاقہ میں بھی معمولات زندگی کی رفتار کو کم کر دیا ہے ۔ میرٹھ میں بھی پبلک ٹرانسپورٹ میں بس اڈوں سے لیکر ریلوے اسٹیشن تک پر مسافروں کی تعداد بہت کم نظر آرہی ہے ۔ اسٹیشن اور بس اڈوں پر پھیری والوں اور دکانداروں کاروزگار بھی بری طرح متاثر ہو رہا ہے ۔


لوکل ٹرانسپورٹ کے اسٹیشن روٹ پر عام دنوں میں مسافروں سے بھری رہنی والی بسیں ان دنوں خالی نظرآرہی ہیں ۔ ٹرین سے سفر کرنے والوں کی تعداد میں آئی کمی کا اثر پبلک ٹرانسپورٹ سے لے کر ریلوے اسٹیشن پر پھیری اور دکان لگانے والوں تک پر نظر آرہا ہے ۔ بس کنڈیکٹر کے مطابق اسٹیشن روٹ کی بسوں میں ان دنوں مسافروں کی تعداد کافی کم ہو گئی ہے وہیں اسٹیشن پر سامان فروخت کرنے والوں کے مطابق آج کل ان کا روزگار بھی کورونا کی وجہ سے بری طرح متاثر ہو رہا ہے ۔ مسافروں کی آمد و رفت میں کمی سے پھیری والوں اور دکانداروں کی آمدنی پر کافی فرق پڑ گیا ہے ۔


بس اور ریلوے اسٹیشنوں پر مسافروں کی تعداد کافی کم ہے ۔ خاص طور پر دہلی روٹ کی بسوں میں مسافروں کی تعداد میں غیر معمولی کمی آئی ہے اور یہی نظارہ ان دنوں ریلوے اسٹیشنوں کا بھی ہے ۔ ایک مقامی مسافر کا کہنا ہے کہ پہلے ٹرین میں سیٹ کیلئے مارا ماری ہوتی تھی ، لیکن اب ٹرین میں سیٹیں خالی نظر آتی ہیں ۔


کورونا کے خطرے کو پیش نظر رکھتے ہوئے انتظامیہ کی جانب سے ایڈوائزری جاری کی گئی ہے اور احتیاطی اقدامات بھی کیے جا رہے ہیں ۔ شہر کے بس اڈوں پر آنے اور جانے والی بسوں کو سیںیٹائز بھی کیا جا رہا ہے ۔
First published: Mar 17, 2020 10:45 PM IST