ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

دہلی میں آخر اتنی تیزی سے کیوں بڑھ رہے ہیں کورونا کے معاملے

گزشتہ ایک ہفتہ سے دہلی میں کورونا وائرس کے معاملے مسلسل رفتارپکڑ رہے ہیں، جس سے راجدھانی میں کورونا مہاماری کو لےکر فکرمندی اور تشویش کا بڑھنا لازمی ہے۔ دیکھا جائے تو گزشتہ 24 گھنٹوں میں 4321 معاملے سامنے آئے ہیں اور 28 لوگوں کی موت ہوئی۔

  • Share this:
دہلی میں آخر اتنی تیزی سے کیوں بڑھ رہے ہیں کورونا کے معاملے
دہلی میں آخر اتنی تیزی سے کیوں بڑھ رہے ہیں کورونا کے معاملے۔ فائل فوٹو

نئی دہلی: گزشتہ ایک ہفتہ سے دہلی میں کورونا وائرس کے معاملے مسلسل رفتار پکڑ رہے ہیں، جس سے راجدھانی میں کورونا مہاماری کو لےکر فکرمندی اور تشویش کا بڑھنا لازمی ہے۔ دیکھا جائے تو گزشتہ 24 گھنٹوں میں 4321 معاملے سامنے آئے ہیں اور 28 لوگوں کی موت ہوئی۔تاہم ریکوری کی شرح کم ہوکر 84.68 ہوگئی ہے۔ حالانکہ دیکھا جائے تو 60 ہزارسے زیادہ ٹسٹ بھی کئے گئے ہیں اور 3141 مریص صحت مند بھی ہوئے ہیں، لیکن فکرمندی کی بات یہ ہے کہ 4 دنوں سے کورونا کے چار ہزار سے زیادہ معاملے سامنے آرہے ہیں۔ 10 ستمبر کو جہاں 4308 معاملے سامنے آئے تھے تو اس سے قبل 4039 معاملے سامنے آئے تھے۔


کم ہوتی ریکوری کی شرح


راجدھانی میں ایک وقت تھا جب ریکوری کی شرح 90 فیصد تک پہنچ گئی تھی۔ تاہم اب اس میں تیزی سے گراوٹ آرہی ہے۔ آج کے اعداد وشمار کے مطابق ریکوری کی شرح 84.86 ہے۔ حالانکہ دو دن قبل ریکوری کی شرح 85.36 تھی۔ اسی طرح سے ایکٹیو مریض کی شرح میں اضافہ ہو رہا ہے۔ آج ایکٹیو مریضوں کی شرح 13.1 ہوگئی ہے، جو دو دن قبل 12.36 ہی تھی۔ اگر اسی طرح سے ایکٹیو مریضوں کی تعداد میں اضافہ ہوتا رہا تو دہلی میں بستروں کی کمی کا خدشہ پیدا ہوسکتا ہے اور دوبارہ سے ایمرجنسی اقدامات شروع کرنے پڑسکتے ہیں۔


قومی سطح پر کرونا معاملوں میں اچھال

کورونا کے تازہ اعدادو شمار اس بات کی جانب اشارہ کر رہے ہیں کہ قومی سطح جس طرح سے کورونا کے معاملے رفتار پکڑر ہے ہیں، اسی تناسب میں دہلی میں بھی تیزی دیکھی جارہی ہے۔ قومی سطح پرگزشتہ 24 گھنٹوں میں ریکارڈ 97570 معاملے سامنے آرہے ہیں جبکہ 1201 افراد کی موت ہوئی ہے۔ قومی سطح پر ریکوری کی شرح میں بھی مسلسل گراوٹ آرہی ہے جبکہ 77472 افراد کی اب تک موت ہوچکی ہے۔ دیکھا جائے تو اب ہندوستان میں کورونا معاملے 46 لاکھ سے زیادہ ہوگئے ہیں اور ہندوستان عالمی سطح پر دوسرے پائیدان پرکھڑا ہے۔

 کورونا کے تازہ اعدادو شمار اس بات کی جانب اشارہ کر رہے ہیں کہ قومی سطح جس طرح سے کورونا کے معاملے رفتار پکڑر ہے ہیں، اسی تناسب میں دہلی میں بھی تیزی دیکھی جارہی ہے۔

کورونا کے تازہ اعدادو شمار اس بات کی جانب اشارہ کر رہے ہیں کہ قومی سطح جس طرح سے کورونا کے معاملے رفتار پکڑر ہے ہیں، اسی تناسب میں دہلی میں بھی تیزی دیکھی جارہی ہے۔


کنٹینمنٹ زون کی تعداد 1300 کے پار

کورونا معاملوں میں تیزی کا اثر کنٹینمنٹ زون کی تعداد تیزی سے بڑھنے کی صورت میں سامنے آیا ہے۔ دہلی میں یہ تعداد 1200 سے زیادہ ہوگئی ہے۔ تازہ اعداد وشمار کے مطابق دہلی میں کنٹینمنٹ زون کی تعداد کل 1376 ہے، جن میں 1107 ایکٹیو کنٹینمنٹ زون ہیں۔ سب سے زیادہ کنٹینمنٹ زون جنوب مغربی دہلی میں 238 ہیں جبکہ شمال مشرقی دہلی میں محض 36 کنٹینمنٹ زون ہیں۔

ڈاکٹروں نے دیا احتیاط کا مشورہ

دہلی میں کورونا کے بڑھتے معاملوں پر مجیدیہ اسپتال کے ایم ایس ڈاکٹر سنیل کوہلی کہتے ہیں کہ دراصل لوگوں میں لاپروائی کافی زیادہ ہوئی ہے۔ بازاروں میں سڑکوں پرکافی بھیڑ ہے اور اس طرح لوگ اپنا خیال نہیں رکھ رہے ہیں، جیسا کہ پہلے رکھ رہے تھے۔ میٹرو وغیرہ بھی شروع ہوئی ہے۔ ڈاکٹر کوہلی کا کہنا ہےکہ لوگوں کو احتیاط برتنا چاہئیے اورماسک لگانا چاہئے۔ اس کے علاوہ کوئی دوسرا راستہ نہیں جب بھی کسی سے ملیں ماسک ضرور لگائیں۔ سنیل کوہلی کا کہنا ہے کہ وائرس میں کچھ تبدیلی آئی ہے، جس کی وجہ سے اموات کی شرح میں کمی ہوئی ہے۔ امید ہے کہ جو معاملے اتنے زیادہ بڑھ رہے ہیں، اس میں بھی دو سے تین ہفتوں بعد کمی آجائے گی۔ دہلی کی صحت خدمات کو بھی اس کا کریڈٹ جاتا ہے۔ تاہم دہلی کے تمام آئی سی یو بستر بھرے ہوئے ہیں۔ اس لئے لوگوں کو یہ نہیں سوچنا چاہئےکہ انھیں کورونا وائرس نہیں ہوگا۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Sep 12, 2020 11:59 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading