ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

کورونا وائرس : بیرون ممالک سے وطن واپس آنے والے ہندوستانی حکومت کے اس قدم کی جم کر کررہے ہیں تعریف

ہندوستان میں کورونا وائرس کے متاثرین کی تعداد بڑھ کر 107 ہوگئی ہے ۔ ہیلتھ اینڈ فیملی ویلفیئر کی وزارت نے 15 مارچ دو پہر 12 بجے کووڈ 19 کے 19 نئے مریضوں کے سامنے آنے کی تصدیق کی ۔

  • Share this:
کورونا وائرس : بیرون ممالک سے وطن واپس آنے والے ہندوستانی حکومت کے اس قدم کی جم کر کررہے ہیں تعریف
تصویر : پی ٹی آئی ۔

ایسے وقت میں جب ہندوستان میں کورونا وائرس کے مصدقہ کیسوں کی تعداد 100 سے تجاوز کرگئی ہے ، وائرس کو پھیلنے سے رروکنے کیلئے اٹھائے گئے حکومت کے اقدامات کی سوشل میڈیا پر کافی سراہنا کی جارہی ہے ۔ خیال رہے کہ اتوار کو کچھ تازہ معاملات سامنے آنے کے بعد ہندوستان میں کووڈ 19 کے مصدقہ کیسوں کی تعداد 107 تک پہنچ گئی ہے ۔


اس عالمی وبا نے متعدد حکومتوں میں گھبراہٹ پیدا کردی ہے ، مگر ہندوستانی حکومت اس سے لڑنے اور اس کو پھیلنے سے روکنے میں کوئی کسر نہیں چھوڑنا چاہتی ہے ۔ اس سلسلہ میں حکومت نے ایک بڑا قدم اتھاتے ہوئے انٹرنیشنل ائیرپوٹ پر غیر ملکیوں اور بیرون ممالک سے لوٹنے والے ہندوستانیوں کیلئے اسکریننگ سسٹم قائم کیا ہے ۔


یہی نہیں ، سرکاری افسران ذاتی طور پر مشتبہ افراد کو فون کررہے ہیں اور اس بات کو یقینی بنانے کی کوشش کررہے ہیں کہ ان میں اس کی کوئی علامت تو نہیں ہے ۔ حکومت کی اس فعالیت نے بہت سارے لوگوں کو متاثر کیا ہے اور انہوں نے اپنی ایسی اسٹوریز سوشل میڈیا پر شیئر کی ہیں ۔


ایک صحافی نے ایسی ہی ایک اسٹوری شیئر کی ہے ، جو ان کو سوشل میڈیا پر موصول ہوئی ہے کہ کس طرح ہندوستانی حکومت مشتبہ مریضوں کے گھروں پر جاکر کورونا وائرس کی روک تھام کے لئے منظم طریقے سے کام کررہی ہے۔

جس خاتون کی کہانی شیئر کی گئی ہے ، اس کو نام وینا ہے ، جس کے بارے میں دعوی کیا گیا ہے کہ وہ ٹوکیو کے راستے سے امریکہ سے ہندوستان لوٹی ہے ۔ ہندوستان واپسی پر اس خاتون کی اسپتال میں جانچ بھی کی گئی تھی ۔ تاہم وینا کو دہلی کے رام منوہر لوہیا اسپتال کے ایکسپرٹس اور ائیر پورٹ اتھاریٹی کی جانب سے اس کی واپسی کے چار دنوں کے اندر ہی ایک کال موصول ہوئی ۔ اس کو بتایا گیا کہ اس میں تو کورونا وائرس کی کوئی علامت نہیں تھی ، مگر جس وقت وہ آئی تھی ، اس وقت اٹلی سے ایک فلائٹ آئی تھی اور حکومت اس بات کو یقینی بنانا چاہتی ہے کہ کوئی دوسرا شخص اس وائرس سے متاثر نہ ہو ۔ ساتھ ہی ساتھ اس خاتون کو اپنے گھر میں ہی دو ہفتوں تک کورنٹائن کا مشورہ دیا گیا ۔


علاوہ ازیں رجت گپتا نامی ایک اور فیس بک یوزر نے ہندوستان واپسی پر دہلی کے اندراگاندھی انٹرنیشنل ائیر پورٹ پر اپنے تجربہ کو شیئر کیا ہے ۔ اس نے بتایا کہ طیارہ کے گیٹ کے باہر ہر شخص کی محکمہ صحت اور ائیر پورٹ اہلکاروں کے ذریعہ اسکریننگ کی گئی ۔



سوشل میڈیا پر کئی لوگوں نے اس طرح کے اپنے اپنے تجربات بھی شیئر کئے ہیں ۔




جموں و کشمیر کے ایک پولیس افسر امیتاز حسین نے کووڈ 19 سے متاثر ممالک سے ہندوستانی شہریوں کو واپس لانے کیلئے حکومت کا شکریہ بھی ادا کیا ہے ۔


خیال رہے کہ ہندوستان میں کورونا وائرس کے متاثرین کی تعداد بڑھ کر 107 ہوگئی ہے ۔ ہیلتھ اینڈ فیملی ویلفیئر کی وزارت نے 15 مارچ دو پہر 12 بجے کووڈ 19 کے 19 نئے مریضوں کے سامنے آنے کی تصدیق کی ۔ وہیں اس بیماری سے اب تک ملک میں دو افراد کی موت ہوچکی ہے جبکہ ایک دیگر شہری کی موت کے پیچھے بھی کووڈ 19 کا ہی شک ظاہر کیا جارہا ہے ۔
First published: Mar 15, 2020 07:49 PM IST