ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

میرٹھ : کورونا وائرس کی وجہ سے لاک ڈاؤن کا خوف اور ضروری اشیا کی خریداری

لوگوں کا کہنا ہے کہ کورونا انفیکشن کے بڑھتے خطرے کے پیش نظر حکومت لاک ڈاؤن کا فیصلہ بھی کر سکتی ہے اور ان حالات میں لوگوں کا نہ صرف گھروں سے باہر نکلنا مشکل ہوگا بلکہ بازار بھی بند ہوں گے ۔

  • Share this:
میرٹھ : کورونا وائرس کی وجہ سے لاک ڈاؤن کا خوف اور ضروری اشیا کی خریداری
میرٹھ : کورونا وائرس کی وجہ سے لاک ڈاؤن کا خوف اور ضروری اشیا کی خریداری

اتوار کے روز جنتا کرفیو کے وزیراعظم مودی کے اعلان کے بعد لوگ احتیاط کے طور پر ضروری اشیا کی خریداری کر رہے ہیں ۔ میرٹھ میں بھی لوگوں نے کھانے پینے کے سامان کا انتظام کرنا شروع کر دیا ہے ۔ سبزی منڈی میں بھی لوگوں نے عام دنوں سے زیادہ خریداری کی ۔  کورونا وائرس کے بڑھتے خطرے نے معمولات زندگی کو متاثر کرنے کے ساتھ ساتھ لوگوں کو خوف زدہ بھی کر دیا ہے ۔ خاص طور پر لاک ڈاؤن کے خطرے کو محسوس کرتے ہوئے اب عام افراد گھریلو ضرورت کا سامان اور کھانے پینے کی اشیا کا انتظام کر رہے ہیں ۔


سبزیوں میں خاص طور پر آلو ، پیاز ، لہسن ، ادرک اور ٹماٹر کی خریداری زیادہ کی جا رہی ہے ۔ ایک طرف عام افراد جہاں لاک ڈاؤن کا خطرہ محسوس کر رہے ہیں تو وہیں سبزی منڈی کمیٹی کے ذمہ داران کا کہنا ہے کہ سبزی اور پھل کی فراوانی میں کسی طرح کی نہ تو رکاوٹ ہے اور نہ کمی ، اسلئے لوگوں میں اشیا ضروریات کا ذخیرہ کرنے کی کوئی ضرورت نہیں ہے ۔


لوگوں کا کہنا ہے کہ کورونا انفیکشن کے بڑھتے خطرے کے پیش نظر حکومت لاک ڈاؤن کا فیصلہ بھی کر سکتی ہے  اور ان حالات میں لوگوں کا نہ صرف گھروں سے باہر نکلنا مشکل ہوگا بلکہ بازار بھی بند ہوں گے اور اسلئے پہلے سے تیار رہنے اور انتظامات کرنے کی ضرورت ہے ۔ وہیں کاروباری تنظیم اور منڈی سمیتی کے ذمہ داران کا ماننا ہے کہ لاک ڈاؤن کے دوران بھی اشیائے ضروریہ کی سپلائی میں کسی طرح کی رکاوٹ پیش نہیں آئے گی اور اس لئے لوگوں کو نہ گھبرانے کی ضرورت ہے اور نہ ہی ضروری سامان کا ذخیرہ کرنے کی ضرورت ہے ۔

First published: Mar 21, 2020 11:01 PM IST