ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

Covid-19: بہار میں حقیقی ہلاکتوں کی تعداد سرکاری اعداد و شمار سے ہوسکتی ہے 10گنازیادہ!

ریاست کے سول رجسٹریشن سسٹم (Civil Registration System) کے اعداد و شمار کے مطابق جنوری تا مئی 2019 میں بہار میں تقریبا 1.3 لاکھ اموات ہوئیں جبکہ 2021 میں اسی عرصے کے دوران یہ تعداد تقریبا 2.2 لاکھ تھی۔ تقریبا 82500 اموات کا فرق ریکارڈ کیا گیا۔ رواں سال مئی میں اس میں 62 فیصد اضافہ ہوا۔

  • Share this:
Covid-19: بہار میں حقیقی ہلاکتوں کی تعداد سرکاری اعداد و شمار سے ہوسکتی ہے 10گنازیادہ!
علامتی تصویر

بہار کے سیول رجسٹریشن سسٹم کے اعداد و شمار کے مطابق 2021 کے پہلے پانچ مہینوں میں بہار میں کم از کم 75000 افراد ہلاک ہوگئے۔ ان اموات کے پیچھے کی وجہ نامعلوم ہے، لیکن وقت کی مدت ملک میں کورونا وائرس کی دوسری لہر کے ساتھ مطابقت رکھتی ہے۔ این ڈی ٹی وی کے مطابق اس تعداد کے بالکل برعکس بہار کے سرکاری کووڈ۔19 میں جنوری تا مئی 2021 میں ہلاکتوں کی ہلاکتوں کی تعداد 7717 ہے۔


ریاست کے سیول رجسٹریشن سسٹم (Civil Registration System) کے اعداد و شمار کے مطابق جنوری تا مئی 2019 میں بہار میں تقریبا 1.3 لاکھ اموات ہوئیں جبکہ 2021 میں اسی عرصے کے دوران یہ تعداد تقریبا 2.2 لاکھ تھی۔ تقریبا 82500 اموات کا فرق ریکارڈ کیا گیا۔ رواں سال مئی میں اس میں 62 فیصد اضافہ ہوا۔


(علامتی تصویر:Shutterstock)-
(علامتی تصویر:Shutterstock)-


تاہم جنوری سے مئی 2021 تک بہار کے سرکاری کووڈ اموات کی ہلاکتوں کی تعداد 7717 تھی ، جو اس ماہ کے شروع میں اعلان کیا گیا تھا جب ریاست میں مجموعی طور پر 3951 کا اضافہ ہوا۔ اس حقیقت کے باوجود حکام نے یہ نہیں بتایا ہے کہ یہ اموات کب ہوئیں، جیسا کہ تازہ ترین پیش رفت میں اشارہ کیا گیا ہے، امکان ہے کہ انہوں نے 2021 میں ایسا کیا تھا۔

اس کے باوجود ریاست میں تصدیق شدہ کووڈ اموات کی کل تعداد ریاست کے سول رجسٹریشن سسٹم کے ذریعہ دستاویزی شدہ اضافی اموات کے برعکس 74،808 ہے۔

بہار میں اموات کی ناقابل تلافی ہونے کی اطلاعات کے درمیان پٹنہ ہائی کورٹ (Patna High Court) نے جمعہ کو مشاہدہ کیا کہ بہار حکومت کی ریاست میں رہائشی ہلاکتوں کی تعداد کو عوام میں شامل کرنے سے گریزاں ہے۔غیر حتمی گنتی کے شبہ میں مبتلا ہونے والی یہ ایک حالیہ ریاست ہے۔ مدھیہ پردیش ، آندھرا پردیش ، تمل ناڈو ، کرناٹک اور دہلی میں ایک جیسے رجحانات دیکھنے کو ملے ہیں ۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: Jun 20, 2021 10:52 AM IST