ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

مدھیہ پردیش حکومت کا اہم فیصلہ : کورونا ویکسی نیشن کے لیے اسپاٹ رجسٹریشن کی سہولت

کورونا ٹیکہ کاری کےلئے اب کسی آن لائن اپوائنٹمنٹ کی نہیں ہوگی ضرورت

  • Share this:
مدھیہ پردیش حکومت کا اہم فیصلہ : کورونا ویکسی نیشن کے لیے اسپاٹ رجسٹریشن کی سہولت
علامتی تصویر

مدھیہ پردیش حکومت نے18 سال سے زائد عمر کے نوجوانوں کی کورونا ٹیکہ کاری کے ضابطہ میں بڑی تبدیلی کی ہے ۔ نئے ضابطے کے تحت اب نوجوانوں کو کورونا ٹیکہ کاری کے لئے آن لائن ایپ پر کسی قسم کی پیشگی اپوائنٹمنٹ کے رجسٹریشن کی ضرورت نہیں ہوگی بلکہ وہ راست طور پر کسی بھی ویکسی نشن سینٹر پر جاکروہیں رجسٹریشن کرواکر ٹیکہ کاری کرواسکیں گے۔ حکومت نے یہ بڑا فیصلہ کورونا ویکسین کو ضائع ہونےسے بچانے کے لئے کیا ہے۔ حکومت کو ایسی شکایتیں مل رہی تھیں کہ نوجوان آن لائن ایپ پر سلاٹ بک کروانے کے بعد بھی کورونا ٹیکہ کاری سینٹر نہیں پہنچ رہے ہیں جس کے سبب بڑی مقدار میں کورونا ویکسین خراب ہو رہی تھی ۔



واضح رہے کہ مدھیہ پردیش حکومت نے1مئی سے ریاست میں18 سال سے اوپر کے لوگوں کی ٹیکہ کاری کا اعلان تو کیاتھا مگر ویکسین کی قلت کی سبب یکم مئی سے کورونا ٹیکہ کاری شروع نہ ہوکر پانچ مئی سے شروع کی گئی تھی۔5 مئی سے کورونا ٹیکہ کاری شروع تو کئی گئی لیکن ویکسین کی کمی کے سبب ریاست کے بیشتر مراکز پر نوجوانوں کی ٹیکہ کاری کے لئے لمبی لمبی قطاریں دیکھی گئیں اور پھر ایسا بھی دیکھا گیا کہ دن بھر انتظار کے بعد جب نوجوانوں کی ٹیکہ کاری نہیں ہو سکی تو انہیں مایوس گھر لوٹنا پڑا۔ حکومت کے ناقص انتظام کا نوجوانوں پر یہ منفی اثر پڑا کہ بعد کے عہد میں آن لائن ایپ پر سلاٹ بک کروانے کے بعد ریاست کے بیشتر مقامات پر18 سال سے اوپر کے نوجوان ٹیکہ کاری سینٹر نہیں پہنچے جس کے سبب بھوپال سے لیکر گوالیار تک کے بہت سے ٹیکہ کاری مرکز پر ویکسین خراب ہونے کی شکایتیں ملنے لگی ۔ ویکسین کو ضائع ہونے سے بچانے کے لئے حکومت نے آن لائن ایپ پر رجسٹریشن کی لازمیت کو ختم کر کے راست طور پر ٹیکہ کاری کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

بھوپال کے رئیس آعظم کہتے ہیں کہ ٹیکہ کاری کو لیکر کتنی بار آن لائن پر ٹرائی کیا کبھی سرور ڈاؤن تو کبھی سرور کھلا ہے لیکن سلاٹ میں جگہ نہیں ملتی تھی۔ اب حکومت نے آن لائن رجسٹریشن کی لازمیت کو ختم کرنے کا بڑا فیصلہ کیا ہے ۔ جس کو جہاں بھی موقعہ ملے گا وہ اپنے نزدیکی سینٹر پر جاکر راست رجسٹریشن کرواکر ٹیکہ کاری کر واسکے گا۔دیر سے ہی سہی ایک اچھا فیصلہ ہے ۔ اس وقت بھی بچے گا اور بغیر کسی مشکل کے ٹیکہ کاری بھی آسانی سے ہو جائے گی۔



وہیں مدھیہ پردیش کے وزیر برائے میڈیکل ایجوکیشن وشواس سارنگ کہتے ہیں کہ ویکسین کے ضائع ہونے کی شکایتیں بڑے پیمانے پر مل رہی تھیں ۔ اس لئے حکومت نے نوجوانوں کی ٹیکہ کاری کی راہ کو آسان بنانے اور ویکسین کو خراب ہونے سے بچانے کے لئے ضابطہ میں تبدیلی کی ہے۔ چھبیس مئی سے نئے ضابطہ کے مطابق18 سال سے اوپر کے نوجوان کسی بھی ٹیکہ کاری سینٹر پر راست طور پر جاکر رجسٹریشن وہیں ٹیکہ کاری کرواسکیں گے ۔اب انہیں ٹیکہ کاری کے لئے کسی پیشگی اپوائنمنٹ کی ضرورت نہیں ہوگی۔ حکومت کاہر قدم کورونا کا خاتمہ کرنا اور ریاست کے باشندوں کو بہترین طبی سہولیات فراہم کرنا ہے ۔
Published by: Mirzaghani Baig
First published: May 25, 2021 05:02 PM IST