ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

Corona Vaccination: کوروناویکسی نیشن کولیکرکئی ریاستیں فکرمند،فنڈزکی کمی پر ہے تشویش

راجستھان وزیر اعلی اشوک گہلوت (Ashok Gehlot) نے کہا کہ ’’یہ بہتر ہوتا اگر ریاستی حکومتوں کے مطالبے کے مطابق مرکز 18 تا 45 سال کی عمر کے لوگوں کے لیے ویکسین کے اخراجات برداشت کرتی جیسے اس نے 45 سے زائد عمر کے افراد کے لئے کی تھی۔ اس سے ریاستوں کو پریشان نہیں ہونا پڑے گا‘‘۔

  • Share this:
Corona Vaccination: کوروناویکسی نیشن کولیکرکئی ریاستیں فکرمند،فنڈزکی کمی پر ہے تشویش
فائل فوٹو

وزیراعظم نریندر مودی (Narendra Modi) کے سامنے تشویش ظاہر کرنے کے دو دن بعد حزب اختلاف کی حکومت والی متعدد ریاستوں کے وزرائے اعلیٰ نے 18 سال سے زائد عمر کی آبادی کے لیے کورونا ویکسین کی خریداری سے متعلق مختلف طرح کے احساسات کا اظہار کیا ہے۔


راجستھان


راجستھان نے اتوار کے روز اعلان کیا ہے کہ وہ اپنی پوری آبادی کو بلا معاوضہ ٹیکے لگائے گی۔ وزیر اعلی اشوک گہلوت (Ashok Gehlot) نے کہا کہ اس مشق کے لئے ریاست 3000 کروڑ روپئے خرچ کرے گی۔انھوں نے کہا کہ نے کہا کہ ’’یہ بہتر ہوتا اگر ریاستی حکومتوں کے مطالبے کے مطابق مرکز 18 تا 45 سال کی عمر کے لوگوں کے لیے ویکسین کے اخراجات برداشت کرتی جیسے اس نے 45 سے زائد عمر کے افراد کے لئے کی تھی۔ اس سے ریاستوں کو پریشان نہیں ہونا پڑے گا‘‘۔


مہاراشٹرا:

مہاراشٹرا میں ریاستی وزیر نواب ملک (Nawab Malik ) نے کہا کہ ’’ریاستی کابینہ کے ذریعہ سب کے لئے مفت ویکسین پلانے کے بارے میں جلد ہی کوئی فیصلہ کیا جائے گا‘‘۔ٹھاکرے نے اپنا سابقہ ​​ٹویٹ حذف کردیا جس میں کہا گیا تھا کہ ’’مہاراشٹرا حکومت نے اپنے شہریوں کو بلا معاوضہ ٹیکے لگانے کا فیصلہ کیا ہے کیونکہ یہ ایسی بات نہیں ہے جس کو ہم انتخاب کے طور پر سمجھتے ہیں بلکہ یہ ایک فرض ہے، جسے ہم بہ خوبی بنھائیں گے‘‘۔

علامتی تصویر
علامتی تصویر


مرکزی حکومت کے ایک سینئر عہدیدار نے نیوز 18 کو بتایا کہ ’’تمام ریاستوں پر عوامی دباؤ ہے کہ وہ اپنے سرکاری بجٹ سے یہ ویکسین مفت فراہم کریں۔ اگر ایک ریاست یہ پیش کش کرتی ہے تو عوامی مطالبہ کے سبب دوسری ریاستوں کو بھی ایسا ہی کرنا پڑے گا۔ مینوفیکچررز سے براہ راست ویکسین خریدنے کی آزادی وہ چیز ہے جس کے لئے ریاستی وزیراعلی مستقل طور پر مطالبہ کرتے رہے ہیں‘‘۔

عوامی دباؤ کی نشاندہی کرنے والے عہدیدار نے بتایا کہ دونوں کیسے ٹی ایم سی اور بی جے پی نے مغربی بنگال میں مفت ٹیکے لگانے کا وعدہ کیا تھا۔

پنجاب:

پنجاب میں وزیراعلی امریندر سنگھ (Amarinder Singh) نے کہا کہ ان کی حکومت غریبوں کے لیے ویکسین کی ضروریات کو پورا کرنے کے لئے سی ایم کووڈ ریلیف فنڈ (CM Covid Relief Fund) کو استعمال کرنے کی ہدایت کے ساتھ 18 سے 45 سال تک کے افراد کو ویکسین کے لئے 30 کروڑ کووی شیلڈ خوراکیں بھیج رہی ہے۔

تاہم انہوں نے کہا کہ مرکز سے موصولہ اطلاعات کے مطابق 15 مئی سے قبل 18 سے 45 سال کے عمر کو لوگوں کو ویکسین لگانے کی توقع پوری نہیں ہوگی۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ ’’پنجاب حکومت آسٹر زینیکا (ہندوستان) سے براہ راست ویکسین کی خریداری یا کم قیمت سے فائدہ اٹھانے پر غور کرے گی۔ عالمی برادری کے لئے 162 فی خوراک خوراک دستیاب ہے ‘‘۔

اترپردیش:

اترپردیش حکومت جو پہلے ہی سب کے لئے مفت ویکسین دینے کا اعلان کر چکی ہے۔ اس نے کہا کہ کووی شیلڈ اور کوویکسین کی ایک کروڑ خوراکوں سے متعلق احکامات جاری کردیئے ہیں۔دوسری ریاستوں میں آسام، بہار، کیرالہ، مدھیہ پردیش، گوا، چھتیس گڑھ اور جھارکھنڈ شامل ہیں۔ جنھوں نے مفت میں کورونا ویکسسین کی فراہمی کی ’’بات‘‘ کہی ہے۔

جبکہ سیرم انسٹی ٹیوٹ نے کہا ہے کہ وہ کووی شیلڈ کو ریاستی حکومتوں کو 400 روپے فی خوراک میں سپلائی کرے گی۔ بھارت بائیوٹیک نے کہا ہے کہ وہ ریاستوں کوویکسین کی ہر خوراک کے لئے 600 روپے وصول کرے گی۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: Apr 26, 2021 11:09 AM IST