ہوم » نیوز » وطن نامہ

کورونا کے B.1.617 ویرئنٹ کے خلاف کارگر ہیں کووی شیلڈ اور کوویکسین ، اسٹڈی میں انکشاف

Coronavirus Vaccination: انسٹی ٹیوٹ آف جینومکس اینڈ انٹریگیٹیو بایولاجی کے ڈائریکٹر انوراگ اگروال نے کہا کہ دستیاب ویکسین کے اثر پر کی گئی اسٹڈی سے پتہ چلتا ہے کہ کورونا وائرس کے B.1.617 ویرئنٹ کے خلاف دونوں موثر ہیں اور ٹیکہ کاری کے بعد انفیکشن کے معاملات میں علامات بہت ہلکی ہیں ۔

  • Share this:
کورونا کے B.1.617 ویرئنٹ کے خلاف کارگر ہیں کووی شیلڈ اور کوویکسین ، اسٹڈی میں انکشاف
کورونا کے B.1.617 ویرئنٹ کے خلاف کارگر ہیں کووی شیلڈ اور کوویکسین ، اسٹڈی میں انکشاف

نئی دہلی : کووی شیلڈ اور کو ویکسین یہ دو ویکسین ملک میں ٹیکہ کاری پروگرام کیلئے استعمال کی جارہی ہیں ۔ ان دونوں کو لے کر کی گئی ایک اسٹڈی میں کہا گیا ہے کہ کورونا وائرس کے ہندوستانی ویئرنٹ کے خلاف یہ دونوں ویکسین موثر ہیں اور ٹیکہ کاری کے بعد اگر کوئی شخص پازیٹیو ہوتا ہے تو اس میں انفیکشن کی انتہائی ہلکی علامتیں سامنے آتی ہیں ۔


انسٹی ٹیوٹ آف جینومکس اینڈ انٹریگیٹیو بایولاجی کے ڈائریکٹر انوراگ اگروال نے کہا کہ دستیاب ویکسین کے اثر پر کی گئی اسٹڈی سے پتہ چلتا ہے کہ کورونا وائرس کے B.1.617 ویرئنٹ کے خلاف دونوں موثر ہیں اور ٹیکہ کاری کے بعد انفیکشن کے معاملات میں علامات بہت ہلکی ہیں ۔


بتادیں کہ کووی شیلڈ ویکسین کو آکسفورڈ یونیورسٹی اور ایسٹراجینکا نے ڈیولپ کیا ہے ، جس کو ہندوستان میں سیرم انسٹی ٹیوٹ آف انڈیا بنا رہی ہے ۔ وہیں کوویکسین کو بھارت بایوٹیک نے ڈیولپ کیا ہے ۔


بتادیں کہ B.1.617 ویرئنٹ کو ڈبل میوٹینٹ یا انڈین اسٹرین بھی کہا جارہا ہے ۔ اگروال نے ٹویٹ کیا کہ کووی شیلڈ اور کوویکسین سے ٹیکہ کاری کے بعد کورونا کے B.1.617 ویریئنٹ پر اثر کو جاننے کیلئے کی گئی اسٹڈی کے شروعاتی نتائج مثبت ہیں ۔ زیادہ تر معاملات میں انفیکشن کی ہلکی علامتیں ہیں ۔ یہ ایک مثبت چیز ہے جبکہ ہمیں اعداد و شمار ملنے ابھی باقی ہیں ۔

دھیان رہے کہ آئی جی آئی بی ، کاونسل فار سائنٹیفک اینڈ انڈسٹریل ریسرچ کے تحت کام کرتی ہے ۔ اس کے علاوہ سینٹر فار سیللور اور مولیکیولر بایولاجی حیدرآباد ( سی سی ایم بی ) بھی سی ایس آئی آر کے تحت کام کرتی ہے ۔ سی سی ایم بی کے ذریعہ کی گئی ایک اسٹڈی کے شروعاتی نتائج کے مطابق اس انفیکشن بیماری متاثر ہونے سے پہلے کا سیرم لینے اور کووی شیلڈ ٹیکے کے بعد سیرم لینے سے پتہ چلا کہ ویکسین B.1.617 ویرئنٹ کے خلاف ریزیزٹیو ہے ۔ اس اسٹڈی کیلئے سائنسدانوں نے ان ویٹرو نیولائیجیشن کا استعمال کیا ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Apr 28, 2021 12:20 AM IST