تشدد کے بعد گجرات میں کئی جگہ کرفیو، اسکول، کالج بند، انٹرنیٹ سروس روکی گئی

احمد آباد۔ گجرات کی پٹیل کمیونٹی کے لئے ریزرویشن کی مانگ کی لڑائی نے تشدد کی شکل اختیار کر لی ہے۔

Aug 26, 2015 08:38 AM IST | Updated on: Aug 26, 2015 08:38 AM IST
تشدد کے بعد گجرات میں کئی جگہ کرفیو، اسکول، کالج بند، انٹرنیٹ سروس روکی گئی

احمد آباد۔ گجرات کی پٹیل کمیونٹی کے لئے ریزرویشن کی مانگ کی لڑائی نے تشدد کی شکل اختیار کر لی ہے۔ منگل کی رات ریاست کے کئی اضلاع میں آتش زنی اور پتھراؤ کے واقعہ کے بعد پوری ریاست میں اسکول کالج بند کر دیے گئے ہیں۔ کئی اضلاع میں کرفیو لگا دیا گیا ہے۔ ریزرویشن تحریک کی قیادت کر رہے ہاردک پٹیل کے بدھ کو گجرات بند کے اعلان کے بعد ریاستی حکومت انتہائی محتاط ہو گئی ہے۔

کسی بھی ناخوشگوار صورتحال سے نمٹنے کے لئے احمد آباد میں انٹرنیٹ سروس بند کر دی گئی ہے۔ بچوں کی حفاظت کے پیش نظر اسکولوں و کالجوں میں بھی چھٹی کر دی گئی ہے۔ ریاستی حکومت نے مرکز سے مزید سیکورٹی فورسز کی مانگ کی ہے۔ تشدد سے سب سے زیادہ متاثر احمد آباد میں سی آر پی ایف اور بی ایس ایف کی 9 کمپنیوں کو تعینات کر دیا گیا ہے۔ احمد آباد میں ہی مظاہرین نے کئی مقامات پر ریل کی پٹریوں کو اکھاڑ دیا ہے، جس سے ریل سروس بری طرح متاثر ہوئی ہے۔

Loading...

سورت کے دو علاقوں کے علاوہ مہسانا، اجھا اور وس نگر میں کرفیو لگا دیا گیا ہے۔ صورت میں دفعہ 144 نافذ کر دی گئی ہے۔ مہسانا کے ڈی ایم لوچن سہرا نے بتایا کہ مہسانا ضلع میں تشدد کے واقعات کے بعد مہسانا شہر اور ضلع کے اجھا اور وس نگر میں کرفیو لگا دیا گیا ہے۔ ضلع انتظامیہ نے بروقت صورتحال پر قابو پانے کے لئے نیم فوجی دستوں کو بلایا ہے۔

اس سے پہلے منگل کو دن میں ہاردک پٹیل نے ریلی کی تھی، جس میں انہوں نے گجرات کی وزیر اعلی آنندی بین پٹیل کے ریلی کے مقام پر آنے کی مانگ کی تھی۔ اس کے بعد ہاردک دھرنا کی جگہ پر بیٹھ گئے۔ دیر شام پولیس نے لاٹھی چارج کر مظاہرین کو كھدیڑ دیا اور ہاردک کو حراست میں لے لیا تھا۔ اس کے بعد ہی حالات بے قابو ہو گئے اور مشتعل ہجوم نے پورے احمد آباد شہر میں جم کر پتھراو اور آتش زنی کی۔ اس دوران مظاہرین نے پولیس چوکی کو آگ کے حوالے کرنے کے ساتھ ساتھ بہت سی بسوں کو بھی جلا دیا تھا۔

پولیس کارروائی کی جانچ کا حکم

ادھر دیر رات حالات بے قابو ہوتے دیکھ کرانتظامیہ نے ہاردک پٹیل کو رہا کر دیا۔ وہیں، گجرات کی وزیر اعلی آنندی بین پٹیل نے ریاست کے لوگوں سے امن و امان برقرار رکھنے کی اپیل کی ہے۔ ساتھ ہی انہوں نے ریلی کے مقام پر پولیس کارروائی پر افسوس ظاہر کرتے ہوئے پورے معاملہ کی تحقیقات کا حکم دے دیا۔ اس سے پہلے، ہاردک پٹیل نے بھی مظاہرین سے امن و امان برقرار رکھنے کی اپیل کی تھی۔ ہاردک پٹیل نے آج احمد آباد بند کا اعلان کیا ہے۔

Loading...