حیدرآباد : مسلم ڈیلیوری بوائے کے ہاتھوں سے کھانا لینے سے کیا انکار ، سوئیگی نے دیا یہ کرارا جواب

حیدرآباد میں ڈیلیوری بوائے سے مذہب پوچھ کر ایک کسٹمر نے آرڈر لینے سے انکار کردیا ، جس پر سوئیگی نے کافی تیکھا رد عمل ظاہر کیا ہے ۔

Oct 25, 2019 06:32 PM IST | Updated on: Oct 25, 2019 06:32 PM IST
حیدرآباد : مسلم ڈیلیوری بوائے کے ہاتھوں سے کھانا لینے سے کیا انکار ، سوئیگی نے دیا یہ کرارا جواب

مسلم ڈیلیوری بوائے کے ہاتھوں سے کھانا لینے سے کیا انکار ، سوئیگی نے دیا یہ کرارا جواب

حیدرآباد میں ڈیلیوری بوائے سے مذہب پوچھ کر ایک کسٹمر نے آرڈر لینے سے انکار کردیا ، جس پر سوئیگی نے کافی تیکھا رد عمل ظاہر کیا ہے ۔ حیدرآباد میں سوئیگی کے ڈیلیوری بوائے کے مسلم ہونے کی وجہ سے ایک کسٹمر نے اس سے کھانا نہیں لیا ، جس کی وجہ سے اس شخص کے خلاف پولیس نے شکایت درج کی ہے ۔ پولیس انسپکٹر پی شرینواس نے کہا کہ سوئیگی کے ملازم مدثر سلیمان نے بدھ کو ایک شکایت کی تھی ۔ اس کا کہنا تھا کہ ایک کسٹمر نے آرڈر کیا اور پھر جب ڈیلیوری بوائے مسلم نکلا تو اس نے آرڈر لینے سے منع کردیا ۔

ڈیلیوری بوائے نے یہ معاملہ مسلم تنظیم مجلس بچاو تحریک کے سربراہ امجد اللہ خان کے سامنے اٹھایا ، جنہوں نے اپنے ٹویٹر اکاونٹر پر اس معاملہ کو شیئر کیا ۔ انہوں نے بتایا کہ کسٹمر نے چکن 65 کا آرڈر کیا تھا اور کہا تھا کہ ہندو ڈیلیوری بوائے کو بھیجے ، لیکن سوئیگی نے ڈیلیوری پارسل مسلم لڑکے کے ہاتھ سے بھیج دیا ، جس کی وجہ سے کسٹمر نے آرڈر لینے سے انکار کردیا ۔

Loading...

علامتی تصویر علامتی تصویر

سوئیگی نے اپنا رد عمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ ہم لوگ ہر مذہب اور نظریہ کی عزت کرتے ہیں ، کوئی بھی آرڈر کسی شخص کی ترجیح کی بنیاد پر نہیں دیا جاتا ہے ، ایک تنظیم کے طور پر ہم لوگ اپنے ساتھیوں اور کسٹمر کے درمیان کسی بنیاد پر بھید بھاو نہیں کرتے ہیں ، ہر آرڈر آٹومیٹک طریقہ سے ڈیلیوری کرنے والے کے پاس جاتا ہے ، یہ اس کی لوکیشن پر منحصر کرتا ہے ۔ تاہم جس شخص نے آرڈر کیا تھا ، اس سے رابطہ نہیں ہوپارہا ہے ۔

آپ کو بتادیں کہ کسٹمر نے جس ریسٹورینٹ سے آرڈر کیا تھا ، اس کو بھی ایک مسلمان شخص ہی چلاتا ہے ۔ اس سے پہلے مدھیہ پردیش میں بھی ایک ایسا معاملہ سامنے آیا تھا ، لیکن اس وقت کھانا پہنچانے والی کمپنی زومیٹو تھی ۔ زومیٹو نے بھی اس وقت کہا تھا کہ کھانے کا کوئی مذہب نہیں ہوتا ۔ زومیٹو کے اس رد عمل کی سبھی لوگوں نے تعریف کی تھی ۔

Loading...