உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Cyber Crime on Instagram:سائبر کریمنل گھر بیٹھے خالی کردیں گے بینک اکاونٹ، ڈبل منافع کے چکر میں پھنسنے سے ایسے بچیں

     شکایت میں اُس نے بتایا تھا کہ انسٹاگرام پر اُسے ایک انجان لنک ملا تھا، جس میں کہا گیا تھا کہ اگر وہ اُس بھیجے گئے لنک کو کلک کرے گی تو اُس کے اکاونٹ میں موجود روپے کچھ ہی دیر میں ڈبل ہوجائیں گے۔ آن لائن سائبر کریمنلس متاثرہ لڑکی سے لمبی بات کرتے رہے۔ ساتھ ہی اُسے اُس کے انسٹاگرام اکاونٹ پر بھیجے گئے لنک پر جلدی سے جلدی کلک کرنے کا دباو بھی بناتے رہے۔

    شکایت میں اُس نے بتایا تھا کہ انسٹاگرام پر اُسے ایک انجان لنک ملا تھا، جس میں کہا گیا تھا کہ اگر وہ اُس بھیجے گئے لنک کو کلک کرے گی تو اُس کے اکاونٹ میں موجود روپے کچھ ہی دیر میں ڈبل ہوجائیں گے۔ آن لائن سائبر کریمنلس متاثرہ لڑکی سے لمبی بات کرتے رہے۔ ساتھ ہی اُسے اُس کے انسٹاگرام اکاونٹ پر بھیجے گئے لنک پر جلدی سے جلدی کلک کرنے کا دباو بھی بناتے رہے۔

    شکایت میں اُس نے بتایا تھا کہ انسٹاگرام پر اُسے ایک انجان لنک ملا تھا، جس میں کہا گیا تھا کہ اگر وہ اُس بھیجے گئے لنک کو کلک کرے گی تو اُس کے اکاونٹ میں موجود روپے کچھ ہی دیر میں ڈبل ہوجائیں گے۔ آن لائن سائبر کریمنلس متاثرہ لڑکی سے لمبی بات کرتے رہے۔ ساتھ ہی اُسے اُس کے انسٹاگرام اکاونٹ پر بھیجے گئے لنک پر جلدی سے جلدی کلک کرنے کا دباو بھی بناتے رہے۔

    • Share this:
      دنیا کا ان دنوں شائد ہی ایسا کوئی کونہ بچا ہوگا جہاں آن لائن سائبر ٹھگوں (Cyber Criminal) نے اپنی پہنچ نہ بنالی ہو۔ حد تو یہ ہے کہ ان سائبر کرائم کرنے والوں کے چکر میں زیادہ تر وہی لوگ پھنس رہے ہیں جو پڑھے لکھے اور انٹرنیٹ پر سرگرم ہیں۔ کم پڑھے لکھے چونکہ آن لائن دنیا سے دور ہیں اس لئے وہ سب ان سائبر کریمنلس کے نشانے پر آنے سے خود ہی بچ جاتے ہیں۔

      یہ کریمنلس آپ کے گھر میں بیٹھے بیٹھے آپ کو ہی کیسے پھنساکر آپ کے بینک اکاونٹ کی رقم اپنے حوالے کرسکتے ہیں؟ آن لائن سائبر کریمنلس (Online Fraud) کے ایک ایسے معاملے کو سہارنپور ضلع پولیس (Senior Superintendent of police Saharanpur) کے اینٹی سائبر ایکسپرٹس (Cyber Expert) نے پکڑا ہے۔

      پولیس اور پبلک کو الرٹ رہنے کی ضرورت
      سہارنپور کے سینئر سپرنٹنڈنٹ آف پولیس آئی پی ایس آکاش تومر (SSP IPS Akash Tomar) نے بات کرتے ہوئے ایسے ہی گروہ کا پردہ فاش کیا ہے۔ آن لائن سائبر مجرموں کی جانب سے انجام دیے گئے اس واقعے میں حالانکہ پولیس نے متاثرہ کی لاکھوں روپئے کی رقم ڈوبنے سے بچالی ہے۔ یہ عین وقت پر متاثر کی جانب سے پولیس کے پاس پہنچ جانے، دوسرے پولیس کی طرف سے متاثرہ کی شکایت پر فوری عمل کرلیے جانے کی وجہ سے ممکن ہوپایا ہے، ورنہ متاثرہ کے بینک اکاونٹ سے تین لاکھ 21 ہزار 500 روپے کی رقم سائبر کرائم اُڑالے جاتے تھے۔

      SSP سہارنپور آکاش تومر نے آگے کہا کہ سہارنپور ضلع سائبر کرائم ٹیم (Saharanpur Police District Cyber Crime Team) کے پاس خاتون شکایت گزار پہنچی تھی۔ شکایت میں اُس نے بتایا تھا کہ انسٹاگرام پر اُسے ایک انجان لنک ملا تھا، جس میں کہا گیا تھا کہ اگر وہ اُس بھیجے گئے لنک کو کلک کرے گی تو اُس کے اکاونٹ میں موجود روپے کچھ ہی دیر میں ڈبل ہوجائیں گے۔ آن لائن سائبر کریمنلس متاثرہ لڑکی سے لمبی بات کرتے رہے۔ ساتھ ہی اُسے اُس کے انسٹاگرام اکاونٹ پر بھیجے گئے لنک پر جلدی سے جلدی کلک کرنے کا دباو بھی بناتے رہے۔

      انجان لوگوں سے آن لائن بات چیت کرنے سے بچیں
      اسی درمیان سائبر کریمنلس اور اُن کے شاطر منصوبوں سے انجان متاثرہ سائبر کریمنلس کی طرف سے بھیجے گئے لنک پر کب کلک کردیا، اس کا پتہ ہی نہیں لا۔ جب تک متاثرہ کا انسٹاگرام پر موجود سائبر کرمنلس سے رابطہ ٹوٹ گیا تب پتہ چلا کہ اُس انجان لنک کو کلک کرتے ہی اُس کے بینک اکاونٹ سے 3 لاکھ 21 ہزار 500 روپے کی بھاری رقم نکل چکی تھی۔ متاثرہ کے گھر بیٹھے بیٹھے ہی اُس کے اکاونٹ سے لاکھوں روپے نکل جانے کی بات اُسے جب پتہ چلی تو اُس نے ضلع سائبر کرائم ٹیم سے رابطہکیا، تب اس بات کا انکشاف ہوا کہ جن انجان لوگوں نے اُسے اُس کے انسٹاگرام اکاونٹ پر لنک بھیج کر اُسے کلک کرایا تھا، اس لنک کو کلک کرتے ہی اُن لوگوں نے متاثرہ کے بینک اکاونٹ سے لاکھوں روپے نکال لیے ہیں۔

      ایک کیس سلجھانے میں لگ گئیں کئی ٹیمیں
      عین وقت پر شکایت ملتے ہی ایس ایس پی نے اے ایس پی ضلع عہدیدار (سہارنپور شہر) پریتی یادو کی ہدایت میں کئی ٹیمیں تشکیل دی تا کہ کسی بھی قیمت پر متاثرہ کے بینک اکاونٹ سے نکالے گئے روپیوں کو کسی بھی طرح سے آن لائن سائبر کریمنلس کے ہاتھوں میں پہنچنے سے بچایا جاسکے۔ ان ٹیموں میں سہارنپور ضلع سائبر کرائم تھانہ انچارج انسپکٹر پراوین کمار یادو، سب انسپکٹر صابر علی، گورو تومر، سپاہی اوم ناتھ چوہان، روہت کمار، گورو کمار، ارون کمار، ن شانت تومر اور امردیپ بھارتی کو شامل کیا گیا۔

      سائبر ایکسپرٹس پولیس نے ایسی جان لی اندر کی بات
      ایس پی یو پی پولیس سائبر کرائم ڈاکٹر تریوینی سنگھ نے کہا کہ ہماری ٹیموں کو جیسے ہی پتہ چلا کہ سہارنپور کی متاثرہ کو جھانسے میں لے کر اُس کے بینک اکاونٹ سے نکالے گئے پیسے فلاں جگہ پر آن لائن ٹرانزکشن میں ہے تو ہم نے وہیں اُس رقم کو واپس کراکر اُس پوری رقم کو متاثرہ کے اکاونٹ میں واپس کرا دیا۔

      کیا کہتے ہیں یو پی پولیس کے سائبر ایکسپرٹس
      یوپی پولیس (Uttar Pradesh Police) کے سپرنٹنڈنٹ سائبر کرائم ڈاکٹر تریوینی (IPS Triveni Singh) نے کہا کہ اگر اس طرح کی جانے انجانے کسی سے غلطی ہوجائے، تو جتنا جلدی ہو سکے فوری اس کی اطلاع پولیس یا پھر سائبر کرائم تھانہ پولیس کو دیں۔ ساتھ ہی کہا کہ سائبر کرائم آن لائن فراڈ کے متاثرین سے پولیس کو شکایت ملنے میں جتنی دیر ہوتی ہے، متاثرہ کے بینک اکاونٹ سے نکالی جاچکی رقم اُتنی ہی دیر میں کریمنلس کی پہنچ کے اور بھی زیادہ قریب ہوجاتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ سائبر پولیس کے پاس جلدی سے جلدی پہنچنے کا سب سے بڑا فائدہ یہ ہوتا ہے کہ ہم متاثرہ کے بینک اکاونٹ سے نکالی جاچکی رقم کو فوری آگے بڑھنے سے بلاک کرواپانے میں کامیاب ہوسکتے ہیں۔ بھلے ہی ایک بار کو مجرم کیوں نہ دیر سے پکڑے جائیں، مگر اُن تک کسی کی محنت کی کمائی آسانی یا بالکل نہیں پہنچنے دی جائے گی۔

      قومی، بین الاقوامی اور جموں وکشمیر کی تازہ ترین خبروں کےعلاوہ تعلیم و روزگار اور بزنس کی خبروں کے لیے نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں ۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: