ہوم » نیوز » وطن نامہ

فانی طوفان: 170سے 200 کلومیٹرکے اوسطاً فی گھنٹے کی رفتارسے ساحل سے ٹکرانے کا خدشہ

وزیراعظم نریندر مودی نےخلیج بنگال میں گردابی طوفان ’فانی‘ کے پیش نظر ایک اعلی سطحی میٹنگ میں طوفان سے نمٹنے کی تیاریوں کاآج جائزہ لیا اور مرکزی افسران کو متاثرہ ریاستوں کے ساتھ رابطہ قائم رکھنے کا حکم دیا۔

  • Share this:
فانی طوفان: 170سے 200 کلومیٹرکے اوسطاً فی گھنٹے کی رفتارسے ساحل سے ٹکرانے کا خدشہ
وزیراعظم نریندر مودی نےخلیج بنگال میں گردابی طوفان ’فانی‘ کے پیش نظر ایک اعلی سطحی میٹنگ میں طوفان سے نمٹنے کی تیاریوں کاآج جائزہ لیا اور مرکزی افسران کو متاثرہ ریاستوں کے ساتھ رابطہ قائم رکھنے کا حکم دیا۔

محکمہ موسمیات کے مطابق مغربی وسطی خلیج بنگال کے اوپر انتہائی شدید طوفان فانی شمال مشرق کی جانب بڑھتے ہوئے آج صبح پوری کے ساحل سے تقریبا 430 کلومیٹر کے فاصلے تک پہنچ گیا ہے۔ گزشتہ چھ گھنٹوں کے دوران سات کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے چلنے والے فانی طوفان اب آندھرا پردیش کے وشاکھاپٹنم سے جنوب اور جنوب مغرب میں 260 کلومیٹر اور مغربی بنگال کے ديگھا سے مغرب میں 700 کلومیٹر کے فاصلے پرآگیاہے۔ فانی طوفان کے جمعہ کے روز دوپہر کے بعد اڈیشہ کے گوپال پور اور چاندبل کے درمیان 170-180 سے 200 کلومیٹر کے اوسط فی گھنٹہ کی رفتار سے ساحل سے ٹکرانے کا خدشہ ہے۔


وزیراعظم نریندر مودی نےخلیج بنگال میں گردابی طوفان ’فانی‘ کے پیش نظر ایک اعلی سطحی میٹنگ میں طوفان سے نمٹنے کی تیاریوں کاآج جائزہ لیا اور مرکزی افسران کو متاثرہ ریاستوں کے ساتھ رابطہ قائم رکھنے کا حکم دیا۔مودی کی صدارت میں ہوئی میٹنگ میں کابینہ سکریٹری ، وزیراعظم کے پرنسپل مشیر، وزیراعظم کے اڈیشنل پرنسپل سکریٹری، داخلہ سکریٹری کے ساتھ ساتھ محکمہ موسمیات، نیشنل ڈیزاسٹر منیجمنٹ اور وزیراعظم دفتر کے سینئر اہلکاروں نے اس میں حصہ لیا۔افسران نے وزیراعظم کو گردابی طوفان کے ممکنہ راستوں اور اس سے نمٹنے کےلئے کئے جارہے طریقوں کی بھی جانکاری دی گئی۔ انہیں بتایا گیا کہ راحت اور بچاؤ مہم کےلئے تینوں فوجوں کے ساتھ قومی ڈیزاسٹر منیجمنٹ فورس کی ٹیمیں پوری طرح مستعد ہیں۔


اڈیشہ حکومت نے پوری کے ساحل سمندر کی طرف بڑھنے والے طوفان فانی کو دیکھتے ہوئے نشیبی علاقوں کی بستیوں کو خالی کرانے کا عمل جمعرات کو مزید تیز کر دیا۔ فانی طوفان سے خطرے کو بھانپتے ہوئے تمام حساس علاقوں میں نیشنل ڈیزاسٹر رسپونس فورس (این ڈی آر ایف) اور ریاست ڈیزاسٹرریسپونس فورس کے اہلکاروں کو فائر محکمہ کے ساتھ تعینات کر دیا گیا ہے۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ ساحلی علاقوں میں گھروں کو خالی کرنے کا کام شام تک مکمل کر لیا جائے گا۔ ساحلی علاقوں میں واقع دیہات، نشیبی علاقوں اور حساس علاقوں سے اب تک آٹھ لاکھ لوگوں کو نکال کر محفوظ مقامات پر پہنچایا جا چکا ہے۔ ان علاقوں میں حکومت نے این ڈی آر ایف کی 28 ٹیمیں، اوڈي آر ایف کی 20 ٹیمیں اور فائر بریگیڈ کی 525 ٹیمیں تعینات کی گئی ہیں۔


فانی طوفان کا پتہ چنئی، وشاکھاپٹنم اور مچھلي پتنم میں واقع ڈوپلر موسمی راڈار نے لگایا۔ مذکورہ اضلاع میں گھر خالی کرانے کی کی کارروائی تیز کر دی گئی ہے اور شام تک مختلف مقامات سے تقریبا 10 لاکھ لوگوں کو محفوظ مقامات اور 879 کیمپوں میں پہنچایا جا چکا ہے۔




First published: May 02, 2019 06:20 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading