ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

Cyclone Tauktae: آپ ممبئی یا اس کے آس پاس ہیں؟ تو ان 10 چیزوں کا رکھیں خاص خیال

ممبئی کے مغربی مضافاتی علاقوں میں تعینات نیشنل ڈیزاسٹر ریسپانس فورس (National Disaster Response Force) کی تین ٹیموں کو الرٹ کردیا گیا ہے۔ اتوار کی رات حکام نے بتایا کہ ہندوستانی بحریہ کی ٹیموں کو بھی اسٹینڈ بائی پر رکھا گیا ہے۔

  • Share this:
Cyclone Tauktae: آپ ممبئی یا اس کے آس پاس ہیں؟ تو ان 10 چیزوں کا رکھیں خاص خیال
کرناٹک اور کیرالہ میں تباہی مچاتے ہوئے آگے بڑھ رہا طوفان توک تائی ، الرٹ پر مہاراشٹر اور گجرات ۔ (Image: PTI)

آئی ایم ڈی (India Meteorological Department) نے ممبئی کے لئے سخت ترین صورت حال کا انتباہ جاری کیا ہے جس میں پیر کو تیز ہواؤں کے ساتھ کئی مقامات پر شدید بارش کی پیش گوئی شامل ہے۔ کیونکہ انتہائی شدید طوفان ’توک تائی’ ممبئی کے ساحل سے گجرات کی سمت قریب گزرنے کا امکان ہے۔ممبئی کے مغربی مضافاتی علاقوں میں تعینات نیشنل ڈیزاسٹر ریسپانس فورس (National Disaster Response Force) کی تین ٹیموں کو الرٹ کردیا گیا ہے۔ اتوار کی رات حکام نے بتایا کہ ہندوستانی بحریہ کی ٹیموں کو بھی اسٹینڈ بائی پر رکھا گیا ہے۔بحیرہ عرب پر ابتدائی کم دباؤ اب ایک انتہائی شدید چکرو طوفان (extremely severe cyclonic storm) کی شکل اختیار کر گیا ہے اور وہ مہاراشٹر کے ساحل کے قریب پہنچ رہا ہے۔


 




اگر آپ ممبئی یا اس کے آس پاس ہے تو ان دس چیزوں کا خاص خیال رکھیں!

۔ طوفان کی شدت میں اضافے کے ساتھ ہی باندرا - ورلی سمندری راستہ مسافروں کے لئے بند کردیا گیا ہے۔

- ممبئی ہوائی اڈے پر آپریشنس صبح 11 بجے سے شام 2 بجے تک معطل کردیئے گئے ہیں۔

۔ ماہی گیروں کو بھی مشورہ دیا گیا ہے کہ وہ صورتحال معمول پر آنے تک سمندر سے گریز کریں۔

- ریلوے نے کچھ ٹرینوں کو منسوخ یا مختصر طور پر ختم کردیا ہے اور فائر بریگیڈ اور این ڈی آر ایف ٹیموں کو الرٹ رہنے پر بتایا گیا ہے۔

- ممبئی میں عارضی پناہ گاہیں لگائی گئی ہیں۔

- ضرورت پڑنے کی صورت میں ہنگامی صورتحال کو سنبھالنے کے لئے ہندوستانی بحریہ کو اسٹینڈ بائی رکھا گیا ہے۔

- کونکون کے ساحل پر تیز ہواؤں نے درختوں کو اکھاڑ دیا، جو مڈگاؤں اور تھیویم اسٹیشنوں کے درمیان پانچ مقامات پر ریلوے پٹریوں پر گر پڑے۔

- آئی ایم ڈی نے بتایا کہ طوفانی توکتے اتوار کی شام مشرق وسطی بحیرہ عرب کے پار تھا اور 16 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے شمال شمال مغرب کی طرف بڑھ رہا تھا۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: May 17, 2021 02:16 PM IST