ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

بنگلورو میں خطرناک سڑک حادثہ، وہیلنگ نے لی تین نوجوانوں کی جان

یلہنکا علاقے میں بنگلورو۔ بلاری شاہراہ پر صبح 6:30 بجے پیش آئے حادثہ میں تین نوجوان ہلاک ہوئے ہیں۔ 16 سالہ محمد ہادی، 17 سالہ معاذ احمد خان کی جگہ پر ہی موت ہوئی جبکہ 22 سالہ سید ریاض نے اسپتال لے جاتے وقت آخری سانس لی۔

  • Share this:
بنگلورو میں خطرناک سڑک حادثہ، وہیلنگ نے لی تین نوجوانوں کی جان
بنگلورو میں خطرناک سڑک حادثہ، وہیلنگ نے لی تین نوجوانوں کی جان

بنگلورو: ملک کے آئی ٹی شہر بنگلورو میں آج صبح سویرے موٹر سائیکل وہیلنگ سے خوفناک سڑک حادثہ پیش آیا ہے۔ یلہنکا علاقے میں بنگلورو۔ بلاری شاہراہ پر صبح 6:30 بجے پیش آئے، اس حادثہ میں تین نوجوان ہلاک ہوئے ہیں۔ 16 سالہ محمد ہادی، 17 سالہ معاذ احمد خان کی جگہ پر ہی موت ہوئی جبکہ 22 سالہ سید ریاض نے اسپتال لے جاتے وقت آخری سانس لی۔ عینی شاہدین کے مطابق نوجوانوں کا گروہ تقریباً 10 بائک پر سوار ہوکر وہیلنگ، آپس میں چیزنگ، ڈریگنگ اس طرح کے کرتب دکھا رہا تھا۔ اس گروہ کی دو تیز رفتار بائک آپس میں ایک دوسرے سے ٹکرا گئیں اور حادثہ پیش آیا۔


یلہنکا ٹرافک پولیس اسٹیشن نے مقدمہ درج کرلیا ہے۔ معاملہ کی مزید تحقیقات کو جاری رکھتے ہوئے پولیس جائےحادثہ سے فرار ہونے والے نوجوانوں کا پتہ لگا رہی ہے۔ حادثہ میں ہلاک ہونے والے دو نوجوانوں کا تعلق شہر کے ایچ بی آر لے آوٹ سے جبکہ ایک کا تعلق گووند پور سے ہے۔ وہیلنگ سے پیش آئے اس تازہ حادثہ پر سخت تشویش کا اظہارکیا جارہا ہے۔ بنگلورو میں ہبال سے یلہنکا کی سڑک چونکہ کشادہ ہے، عام طور نوجوان جالی ریڈ، وہیلنگ، چیزنگ اس طرح کی کرتب بازی میں یہاں  مصروف دکھائی دیتے رہے ہیں۔


مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ پولیس کی سخت تاکید کے باوجود نوجوان عوام کو پریشان کرتے ہوئے موج مستی میں مگن رہتے ہیں۔ ماضی میں وہیلنگ کے کئی واقعات میں گرفتار نوجوانوں کا تعلق مسلم طبقہ سے رہا ہے۔ اس تازہ واقعہ کے بعد سوشل میڈیا میں لوگ اپنے اپنے طور پر تشویش ظاہر کر رہے ہیں۔ ملت کے نوجوانوں کو نصیحت کے ساتھ زندگی بسر کرنے، سیدھے راستے پر چلنے کی تلقین کررہے ہیں۔ بنگلورو کے ماہر تعلیم اور کرناٹک مسلم متحدہ محاذ کے رکن سید تنویر احمد نے کہا کہ ملت کے کئی نوجوان اپنے ٹلینٹ، اپنی صلاحیتوں کو صحیح سمت میں نہیں ڈال پا رہے ہیں۔ تعلیم و تربیت کی کمی، والدین کی لاپرواہی ، معاشرہ میں صحیح رہنمائی نہ مل پانے کے سبب نوجوان بے راہ روی کا شکار ہو رہے ہیں، اپنی جوانی کو ضائع کررہے ہیں اور یہاں تک اپنی زندگی سے ہی  ہاتھ دھو رہے ہیں۔


تنویر احمد نے کہا کہ نوجوان اپنی صلاحیتوں، طاقت، ہمت، بہادری کا مظاہرہ ضرور کریں، لیکن سڑک پر عوام کو پریشان کرتے ہوئے نہیں، پولیس کو تکلیف دیتے ہوئے نہیں بلکہ نوجوان تعلیم کے میدان میں آگے آئیں، کھیل کود کے میدان میں قدم جمائیں۔ پولیس اور فوج میں بھرتی ہوکر اپنی ذہنی اور جسمانی صلاحیتوں کے جوہر دکھائیں۔ ملک اور ملت کے کام آئیں اور اپنے والدین اور کنبہ کا نام روشن کریں۔ واضح رہے کہ اس سے قبل بھی کئی مسلم نوجوان وہیلنگ کا شکار ہوچکے ہیں۔ کئی مرتبہ علمائے کرام مسجدوں کے ذریعہ نوجوانوں کو وہیلنگ سے باز رہنے کی اپیل کر چکے ہیں۔ سید تنویر احمد کہتے ہیں کہ بچوں کی تربیت میں کمی کا نتیجہ ہے کہ اس طرح کے واقعات بار بار پیش آرہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حالات میں ملی اور سماجی تنظیمیں اصلاح معاشرہ کی جانب خاص توجہ دیں۔ اپنے اپنے علاقوں میں نوجوانوں کی صحیح رہنمائی کیلئے لائحہ عمل بنائیں۔
First published: Jun 21, 2020 08:55 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading