ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

شرائط کے ساتھ کھولی گئی درگاہ حضرت خواجہ بندہ نوازؒ، درگاہ انتظامیہ نے کیا یہ فیصلہ

لاک ڈاؤن کی وجہ سے بارگاہ بندہ نوازؒ کو بھی تین ماہ کیلئے بند کردیا گیا تھا۔ ریاستی حکومت نے 8 جون کو درگاہوں، مساجد اور مندروں کو کھولنے کی اجازت دے دی تھی۔ تاہم درگاہ انتظامیہ نے احتیاطی اقدامات کے طور پر درگاہ شریف کو زائرین کیلئے نہیں کھولا تھا۔

  • Share this:
شرائط کے ساتھ کھولی گئی درگاہ حضرت خواجہ بندہ نوازؒ، درگاہ انتظامیہ نے کیا یہ فیصلہ
شرائط کے ساتھ کھولی گئی درگاہ حضرت خواجہ بندہ نوازؒ۔ فائل فوٹو

گلبرگہ: کرناٹک کے شہرگلبرگہ کو حضرت خواجہ بندہ نوازؒ کی آخری آرام گاہ ہونے کی وجہ سے گلبرگہ شریف کہا جاتا ہے۔ آپ ؒ کو خواجہ دکن کے نام سے بھی جانا جاتا ہے۔ آپ کے بھی عقیدت مند دنیا بھر میں پھیلے ہوئے ہیں۔ حضرت خواجہ بندہ نوازؒ  کے آستانے پر بھی بلا لحاظ مذہب وملت ہر کوئی حاضری دیتا ہے۔ لاک ڈاؤن کی وجہ سے بارگاہ بندہ نوازؒ کو بھی تین ماہ کیلئے بند کر دیا گیا تھا۔ ریاستی حکومت نے 8 جون کو درگاہوں، مساجد اور مندروں کو کھولنے کی اجازت دے دی تھی۔ تاہم درگاہ انتظامیہ نے احتیاطی اقدامات کے طور پر درگاہ شریف کو زائرین کیلئے نہیں کھولا تھا۔ اب اسے زائرین کیلئے کھول دیا گیا ہے، لیکن اس کے لئے سخت رہنما خطوط بنائے گئے ہیں۔


درگاہ شریف کو بعد نماز فجر کھولا جائے گا اور پھر دوپہر دو بجے بند کر دیا جائے گا۔ پھر شام 4 بجے کھولا جائے گا اور شام ساڑھے سات بجے بند کر دیا جائے گا۔ اس دوران وقفہ میں درگاہ شریف کے پورے احاطے کو سینیٹائز کیا جائے گا۔ بارگاہ بندہ نواز میں داخلے کیلئے ماسک پہننا لازمی قرار دیا گیا ہے۔ 60 برس سے زائد کی عمر اور 10 برس سے کم عمر کے بچوں کے درگاہ میں داخلے کو ممنوع قرار دیا گیا ہے۔ ساتھ ہی سردی، کھانسی بخار اور نزلہ سے متاثرہ افراد کو بھی درگاہ شریف میں داخلے کی اجازت نہیں ہے۔ بارگاہ بندہ نوازؒ یعنی گنبد مبارک میں کسی کو وقت گزارنے یعنی تلاوت کرنے، ذکر کرنے کیلئے بیٹھنے کی اجازت نہیں ہے، صرف مختصر فاتحہ دے کر دوسرے دروازے سے نکل جانا ہے، تاکہ دوسرے زائرین کو موقع مل سکے۔ مزار مبارک کے غلاف کو چھونے اور اس پر پھول چڑھانے کی بھی اجازت نہیں ہے۔ مزار مبارک کے روبرو دوکشتیاں بنائی گئی ہیں۔ اسی میں عقیدت کو پھول ڈالنے کی ہدایت دی گئی ہے۔




اس کے علاوہ گنبد مبارک کے اندر کسی بھی جالی کو بھی چھونے کی ممانعت کی گئی ہے۔ گنبد مبارک میں بہ ایک وقت صرف تین سے چار افراد کو ہی داخلے کی اجازت ہے، گنبد مبارک میں داخلے سے قبل بھی ہاتھوں کو سینیٹائز کرنا ہوگا۔ خواتین کیلئے بھی سماع خانہ کے روبرو دروازے سے زیارت کی اجازت دی گئی ہے، جہاں پر 6-6 فٹ کے فاصلے پر چار دائرے بنائے گئے ہیں۔ بہ ایک وقت صرف چار خواتین ہی زیارت کر سکیں گی۔ درگاہ شریف کے احاطے میں کسی کو کہیں بھی بیٹھنے کی اجازت نہیں ہے، نہ ہی درگاہ شریف کے احاطے میں کسی طرح کا کھانے کا سامان لے جانے کی اجازت ہے۔ یہاں تک کہ چپل بھی باہر ایک بیگ میں پیک کرکے رکھنا ہوگا۔ کسی بھی طرح کے سامان کے بیگ کو درگاہ شریف کے اندر لے جانے کی اجازت نہیں ہے۔ سب سے اہم بات یہ ہے کہ درگاہ شریف میں وضو اور طہارت کا کوئی انتظام نہیں کیا گیا ہے۔

زائرین سے گھر سے حاجات سے فارغ ہو کر با وضو آنے کی اپیل کی گئی ہے۔ درگاہ شریف کے باب الداخلہ پر بھی سخت انتظامات کئے گئے ہیں۔ داخلے سے قبل تھرمل اسکریننگ کے ذریعے زائرین کا درجہ حرارت چیک کیا جا رہا ہے، زائرین کے ہاتھوں اور پیروں کو مکمل طور پر سینیٹائز کیا جا رہا ہے۔ گیارہ سیڑھی سے قبل 6-6 فٹ کے فاصلے پر تین دائرے بنائے گئے ہیں، جہاں پر ٹھہر کر زائرین کو اپنی باری کا انتظار کرنا ہوگا۔ مرد اور خواتین کیلئے الگ الگ دائرے بنائے گئے ہیں۔ اس کے علاوہ مرد وخواتین کو درگاہ میں داخلے اور واپسی کیلئے الگ الگ راستے بنائے گئے ہیں۔
First published: Jun 24, 2020 05:50 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading